الیکشن کمیشن آف انڈیا کے زیر اہتمام کل جماعتی میٹنگ

نئی دہلی//اپوزیشن پارٹیوں نے انتخابی کمیشن کی طلب کردہ کل پارٹی میٹنگ میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم )میں ہونے والی 'خرابی 'کامعاملہ اٹھایا۔کمیشن نے انتخابی اصلاحات پر تبادلہ خیال کے لئے یہ میٹنگ طلب کی تھی جس میں ترنمول کانگریس نے مطالبہ کیاکہ لوک سبھا سمیت مستقبل میں ہونے والے سبھی انتخابات بیلٹ پیپر سے کرائے جائیں ۔ انتخابی کمیشن نے کہاکہ وہ مختلف پارٹیوں کی سبھی تجاویزپر غورکرے گا تاکہ انتخابات کی معتبریت برقراررہے ۔ذرائع نے کہاکہ کانگریس کی قیادت میں اپوزیشن نے میٹنگ میں اس موقف کا اعادہ کیاکہ ووٹروں کو ای وی ایم پر شبہ ہے اور یہ مسئلہ حل ہونا چاہئے ۔انھوں نے ووٹنگ کے لئے استعمال ہونے والی مشینوں کو دوبارہ چیک کرنے کا مطالبہ کیا۔ ترنمول کانگریس نے لوک سبھاسمیت مستقبل میں ہونے والے سبھی انتخابات میں بیلٹ پیپر استعمال کرنے کا مطالبہ کیا۔ میٹنگ کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر اوپی راوت نے کہاکہ کچھ سیاسی پارٹیوں نے ای وی ایم اور وی وی پیٹ میں پیداہونے والی خرابی کا معاملہ اٹھایاہے ۔انھوں نے کہاکہ کمیشن نے ان چیزوں کو نوٹ کرلیاہے ۔ مسٹر رات نے یہ بھی کہاکہ انتخابات کی معتبریت کو قائم رکھنے کے لئے سبھی پارٹیوں نے مثبت اور تعمیری تجاویز پیش کیں ۔ سی ای سی نے کہاکہ ''کمیشن سبھی تجایز پر غورکریگا اور انتخابی عمل کو بہتر بنانے کے لئے جوکچھ بھی ہوسکے گا کرے گا ۔''  انتخابی کمیشن نے انتخابی نظام میں اصلاحات سے متعلق تبادلہ خیال کے لئے سات قومی اور 51ریاستی رجسٹرڈ پارٹیوں کو مدعوکیاتھا۔ ذرائع نے کہاکہ کانگریس اور ترنمول کانگریس کے ساتھ ،بائیں بازو کی پارٹیوں ، بی ایس پی ،عام آدمی پارٹی ،جنتادل ایس ،تیلگودیشم پارٹی (ٹی ڈی پی )،نشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی )،سماج وادی پارٹی (ایس پی )،راشٹریہ جنتادل (آرجے ڈی )،ڈی ایم نے بھی نے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے تعلق سے شکوک و شبہات کا اظہار کیا۔ کمیشن کے مطابق میٹنگ کے ایجنڈے میں ووٹر لسٹ کو حتمی شکل دینا ،سیاسی پارٹیوں کو پارٹی تنظیم نیز قانون ساز اداروں کے لئے الیکشن لڑنے کے لئے امیدواروں کے سلیکشن میں خواتین کی نمائندگی بڑھانے کے لئے حوصلہ افزائی کرنا ، انتخابات پر ہونے والے خرچ کی حد مقررکرنے کے معاملہ اور سیاسی پارٹیوں کے اخراجات کو محدود کرنا،بروقت سالانہ آڈٹ رپورٹ اور الیکشن پر ہونے والے اخراجات کی رپورٹ داخل کرنے کو یقینی بنا نے کے اقدامات شامل تھے ۔اگرچہ ایک ساتھ انتخابات کرانے کے معاملہ پر کچھ دنوں سے بحث و مباحثہ جاری ہے اور تنازعہ کا باعث بناہواہے ،لیکن انتخابی کمیشن نے اسے ایجنڈے میں شامل نہیں کیا۔کمیشن نے اپنے موقف کی وضاحت کی تھی کہ قانونی فریم ورک کے بغیر ایک ساتھ انتخابات نہیں کرائے جاسکتے ۔یواین آئی