الطاف بخاری کاتدریسی عمل کو سیاست سے پاک رکھنے پر زور

 سرینگر// تعلیم کے وزیر سید محمد الطاف بخاری نے تعلیم نے سیاسی سے الگ رکھنے کی ضرورت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا ہے کہ حقیر سیاسی مقاصد کے لئے تعلیم میں خلل ڈالنے سے سماج پر منفی اثرات مرتب ہونے کے ساتھ ساتھ طُلاب کا مستقبل بھی مخدوش ہوکر رہ جاتا ہے۔ ایس پی ہائیر سکینڈری سکول کے سالانہ دن کی تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے وزیر موصوف نے لیڈر شِپ پر زور دیا کہ وہ سیاسی وابستگیوں سے بالا تر ہوکر تعلیم کو سیاست سے الگ رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی سرگرمیوں میں طُلاب کو شامل کر کے اُن کے وقت کو ضائع نہیں کیا جانا چاہئے۔سیکرٹری سکولی تعلیم فاروق احمد شاہ، ناظم تعلیم ڈاکٹر جی این اتو، ایس پی ڈی آر ایم ایس اے طُفیل مٹو، سی ای و سرینگر فاروق احمد ڈار اور کئی دیگر اہم شخصیات اس موقعہ پر موجود تھیں۔وزیر نے طُلاب کی کارکردگی کو سراہا اور کہا کہ اس طرح کی تقریبات سے طُلاب کو اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے اور اپنے معاملات کو اجاگر کرنے کا موقعہ فراہم ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے طُلاب کافی ذہین ہیں جنہوں نے قومی اور بین الاقوامی سطحوں پر کارہائے نمایاں انجام دیئے ہیں۔ وزیر نے وادی میں تعلیم کے نور کو عام کرنے میں ہائیر سکینڈری سکول کے رول کی کافی تعریف کی۔طُلاب کی مانگوں کے رد عمل میں وزیر نے ایس پی ہائیر سکینڈری سکول اور گورنمنٹ گرلز ہائیر سکینڈری سکول کوٹھی باغ کے لئے بس سروس کا بھی اعلان کیا اور کہا یہ سروس تجرباتی بنیادوں پر اگلے برس مارچ سے شروع کی جائے گی۔ انہوں نے اعلان کیا کہ ایکس پی ہائیر سکینڈری سکول میں بھی سی ایمز سُپر ففٹی کوچنگ کلاسز کا انعقاد کیا جائے گااس موقعہ پر سیکرٹری تعلیم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وادی میں تعلیمی سیکٹر کو بحال کرنے کے لئے خاطر خواہ اقدامات کئے جارہے ہیں۔ دریں اثنا ناظم تعلیم نے طُلاب کی طرف سے ثقافتی پروگرام پیش کرنے والے گرؤپ کے لئے10 ہزار روپے کا بھی اعلان کیا۔