اقبال کا تصور قرآنی حکمت اور عصری دنیا

سرینگر/ اقبال انسٹی ٹیوٹ آف کلچر اینڈ فلاسفی نے اقبال کی 84ویں برسی کی مناسبت سے ’’اقبال کا تصور قرآنی حکمت اور عصری دنیا‘‘ کے موضوع پر ایک روزہ سمینار کا انعقاد کیا۔ سمینار کی صدارت ڈاکٹر نثار احمد میر لائق رجسٹرار نے کی۔سمینار کے آغاز پر حافظ شاہنواز شاہ نے قرآن پاک کی تلاوت کی جبکہ محمد حد نقیب نے نعت رسول مقبولؐکا فریضہ انجام دیا۔ اپنے خطبہ استقبالیہ میں ڈاکٹر مشتاق احمد گنائی کوآرڈی نیٹر اقبال انسٹی ٹیوٹ آف کلچر اینڈ فلاسفی نے تمام مقررین اور مہمانوں کو خوش آمدید کیا۔ انہوں نے اقبال کی شاعری کو قرآنی حکمت کے تناظر میں پڑھنے کی ضرورت پر زور دیا۔کلیدی خطبہ معروف سکالر مولانا احمد شاہ القاسمی (لولابی) نے پیش کیا، “قرآن پاک علامہ اقبال کے فلسفہ اور فکر کی بنیاد اور تحریک کا ذریعہ ہے، انہوں نے اقبال انسٹی ٹیوٹ کو درس و تدریس پر باقاعدگی سے سمینارز اور ویبینارز منعقد کرنے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا ۔ ڈاکٹر شاہنواز شاہ اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ فارسی نے اپنا مقالہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ اقبال نے قرآن سے تحریک حاصل کی اور ہمیشہ اس بات کو متاثر کیا کہ مسلمان قرآن کی تعلیمات پر قائم رہنے سے ہی اپنا ماضی دوبارہ حاصل کر سکتے ہیں۔ڈاکٹر طارق مسعودی نے ایک تحقیقی مقالہ بھی پیش کیا جس میں انہوں نے کہا کہ اقبال کا تصور علم قرآن سے ماخوذ ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج ہر ایک کے لیے ضروری ہے کہ وہ اقبال کے تعلیمی فلسفے اور قرآن مجید سے گزرے اور زندگی کے حقیقی معنی اور مقصد کو سمجھے۔اپنے خصوصی خطاب میں ڈاکٹر حمید نسیم رفیع آبادی ڈائریکٹر انٹرنیشنل سنٹر روحانی علوم، اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی، اونتی پورہ نے کہا کہ اقبال نے اپنی تمام زندگی مسلمانوں کو قرآن پاک کی تعلیمات کے مطابق علم حاصل کرنے کے لیے وقف کر دی۔ڈاکٹر نثار احمد میر، رجسٹرارکشمیریونیورسٹی نے بہت سی مثالیں پیش کیں کہ کس طرح اقبال نے قرآن پاک کی تعلیمات کے صحیح فہم سے مسلم دنیا کو بیدار کیا اور کس طرح قرآن پاک کی تشریح پر مبنی اپنی فلسفیانہ فکر میں انسانیت کو فروغ دیا۔قبل ازیں کوآرڈی نیٹر اقبال انسٹی ٹیوٹ آف کلچر اینڈ فلسفہ ڈاکٹر مشتاق احمد گنائی نے سمینار کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی اور اقبال انسٹی ٹیوٹ آف کلچر اینڈ فلسفہ میں ہونے والے کاموں اور تحقیق کا مختصر تعارف پیش کیا۔سمینار کے اختتام پر ڈاکٹر رخسانہ رحیم نے اظہار تشکر کیا جبکہ ڈاکٹر فیاض احمد وانی نے سیمینار کی نظامت کی۔