افسرشاہی عوامی حکومت کا متبادل نہیں ہوسکتی

سرینگر//اپنی پارٹی صدرالطاف احمدبخاری نے کہا ہے کہ افسرشاہی منتخب حکومت کا متبادل نہیں ہوسکتی۔جموں میں پارٹی کے صوبائی سطح کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے جموں کشمیرمیں جمہوری حقوق کی بحالی کا مطالبہ کیااورامیدظاہر کی کہ حکومت ہندبلاتاخیرجموں کشمیرمیں اسمبلی انتخابات کااعلان کرکے جمہوری نظام کوبحال کرے گی۔ایک بیان کے مطابق  انہوں نے یوم ِ جمہوریہ کے موقع پر حکومت ِ ہند کی طرف سے کسی مثبت پیش رفت کی اُمید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال کیاجائے اور جلد اسمبلی انتخابات کرائے جائیں۔صوبائی سطح پارٹی لیڈران کے اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے بخاری نے کہاکہ 26جنوری کو ملک کی دیگر ریاستوں اور مرکزی ِ زیر انتظام علاقوںکی طرح ہم بھی یوم ِ جمہوریہ منانے جارہے ہیں، ہمیں اُمید ہے کہ اپنے نمائندے چننے کے لئے ہمارے آئینی حقوق کو بحال کیاجائے گا کیونکہ آئین ِ ہند کے تحت جن حقوق کی ضمانت دی گئی ہیں، سے ہمیں محروم رکھاگیاہے۔انہوں نے کہا کہ بیوروکریسی کی وجہ سے لوگ مایوسی کاشکار ہیںاورانتظامیہ اور عوام کے درمیان ایک وسیع خلیج ہے۔اجلاس میںانہوں نے پارٹی کی مختلف ونگوں کے لیڈران کے کام کاج پر اطمینان کا اظہار کیا جوکہ جموں صوبہ کے سبھی اضلاع میں سرگرم ہیں البتہ انہوں نے لیڈران سے کہاکہ پارٹی کی پالیسیوں اور پروگراموں متعلق عوام کو آگاہ کر کے لئے عوامی رابطہ پروگرام منعقد کریں۔انہوں نے لوگوں کی مشکلات ومسائل کو اُجاگر کرنے پر پارٹی لیڈران کے رول کی ستائش کی۔ انہوں نے پارٹی لیڈران سے کہاکہ وہ کندھے سے کندھا ملا کر سبھی اضلاع خاص کر صوبہ کے دور افتادہ اور دیہی علاقہ جات میں کام کریں اور اُن کے ترقی سے متعلق مسائل کو اُجاگر کر کے ازالہ کو یقینی بنائیں۔