اعلیٰ سطحی میٹنگ میں زراعت و باغبانی محکموں کی کارکردگی کا جائیزہ | زرعی اور باغبانی شعبوں کی ترقی کیلئے جدیدٹیکنالوجی لازمی:فاروق خان

جموں//لیفٹنٹ گورنر کے مشیر فاروق خان نے یہاں سول سیکرٹریٹ میں زراعت  و بہبودِ کسان اور باغبانی محکموں کی کارکردگی کا جائیزہ لینے کیلئے منعقدہ اعلیٰ سطحی میٹنگ کی صدارت کی ۔ اس موقعہ پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے مشیر نے کہا کہ جموں اور کشمیر میں باغبانی اور زرعی سرگرمیوں کیلئے وسیع صلاحیت موجود ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو زراعت اور اس سے منسلک سرگرمیوں سے پائیدار آمدن کے حصول کیلئے ہر ممکن مدد فراہم کی جانی چاہئیے ۔ مشیر نے افسروں کو کسان دوست سکیمیں مرتب کرنے ، جموں اور کشمیر کے موافق علاقوں میں کثیر الفصل نظام اختیار کرنے کیلئے کہا تا کہ پیداوار میں اضافہ ہو سکے  جس سے کاشتکاروں کی معاشی حالتِ زندگی بہتر ہو گی ۔ مشیر خان نے افسروں کو دور دراز علاقوں میں رہنے والوں کو زرعی اور باغبانی شعبوں کی ترقی سے متعلق جدید ٹیکنالوجی سے روشناس کرانے کی بھی ہدایات دیں ۔ انہوں نے پنچائتی نمائندوں کے ذریعے مربوط کاشتکاری اور کلسٹر رحجان کو ترقی دینے پر بھی زور دیا ۔ انہوں نے دیہی معثیت کے فروغ کیلئے اختراعی پروجیکٹوں کو مرتب کرنے اور دستیاب وسائل کا بھر پور استعمال کرنے پر بھی زور دیا ۔   مشیر نے دونوں زرعی یونیورسٹیوں کے وائس چانسلروں کو اپنے علاقوں میں فارمرز  سٹریٹجی کلینڈر مرتب کرنے کیلئے کہا تا کہ زرعی سرگرمیوں سے متعلق جانکاری کسانوں تک بھر برقت پہنچائی جا سکے ۔ انہوں نے اس مقصد کیلئے پنچائتی راج اداروں کی خدمات حاصل کرنے کیلئے کہا ۔ انہوں نے افسروں کو فیلڈ دوروں کیلئے ایک منظم لائحہ عمل مرتب کرنے کیلئے کہا تا کہ زرعی اور باغبانی شعبوں کی ترقی سے متعلق جانکاری بنیادی سطح پر حاصل کی جا سکے ۔ مشیر خان نے افسروں کو کالج اور یونیورسٹی طلاب میں جانکاری عام کرنے کیلئے ورکشاپوں کا انعقاد کرنے کیلئے کہا تا کہ وہ زرعی اور باغبانی شعبوں میں ممکنہ صنعتکاری کی جانب راغب ہو سکیں ۔ اس موقعہ پر پرنسپل سیکرٹری زراعت اور باغبانی نے کہا کہ مربوط زرعی تکنیک ، کاشتکاری میں مشینوں کا استعمال اور اعلیٰ اقسام کے بیجوں کے استعمال اور دیگر تکنیکوں سے جموں کشمیر یو ٹی میں زراعت اور باغبانی شعبوں میں کافی ترقی دیکھنے میں آ رہی ہے ۔