اشفاق مجید وانی کو28برسی پر مزاحمتی خیمہ کا خراج عقیدت

 سرینگر//لبریشن فرنٹ (آر ) ، محاذ آزادی کے ایک دھڑے نے اشفاق مجید وانی کو 28ویں برسی پر خراج عقیدت ادا کیا ہے۔ ادھر اشفاق مجید وانی ،ڈاکٹر عبدالاحد گورو، ایڈوکیٹ جلیل اندرابی،سید شبیر صدیقی اور درگاہ حضرتبل میں جاں بحق ہوئے افرادکی یاد میںلبریشن فرنٹ پاکستانی زیر انتظام آزاد کشمیر / پاکستان کے باب نے برہان چوک کے پریس کلب کے قریب پرامن دھرنا دیا ۔لبریشن فرنٹ (آر) کے زیر اہتمام مزار شہداء عیدگاہ میں اشفاق مجید وانی کی برسی پر فاتحہ خوانی کی گئی اور ان کے مشن برائے آزادی کو حتمی انجام تک پہنچانے کا عہد دہرایا گیا ۔اس موقعہ پر جن دیگر تنظیموں کے قائدین نے شرکت کی ،ان میں لبریشن فرنٹ (حقیقی) چیئرمین جاوید احمد میر ،جے کے ایل ایف رئوف کشمیری،ڈی پی ایم کے ایک دھڑے کے ذمہ دار خواجہ فردوس ، سالویشن مومنٹ کے غازی جاوید بابا اور دیگر سینئر لیڈران بشمول اعجاز میر ،غلام مصطفیٰ بٹ،ظہیر عباس ،نصراللہ ریشی،جاوید احمد اور دیگر قائدین و اراکین نے شرکت کی ۔اس موقعہ پر جاوید احمد میر اور وجاہت بشیر قریشی نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  1988میںاشفاق مجید وانی کی قیادت میں ایک مکمل عسکری ، سیاسی و سفارتی تحریک کا آغاز کیا گیا جو حق آزادی اور حق خود ارادیت کے حصول کے لئے تا ایں دم محو جدوجہد ہے ۔انھوں نے کہا کہ کشمیری عوام کی قربانیوں کے ساتھ کسی کو بھی کھلواڑ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور لبریشن فرنٹ بانی محمد مقبول بٹ اور اشفاق مجید وانی کے مشن کو پورا کرنے کیلئے اورعوامی خواہشات کو مدنظر رکھتے ہوئے قربانیوں اور جذبہ ایثار کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔ادھر فرنٹ (آر) کے بیان کے مطابق اسی سلسلے کی کڑی کے طور اور اشفاق مجید وانی اور شہدائے کشمیر کو خراج عقیدت ادا کرنے کے لئے لیوٹن برطانیہ میں پارٹی کے سرپرست اعلیٰ بیرسٹر عبدالمجید ترمبو ،ایڈوکیٹ ایوب راٹھور اور ممتاز راٹھور کی قیادت میں ایک مجلس منعقد کی جائے گی ،جس میں رواں جدوجہد کے حوالے سے ان کردار پر روشنی ڈالنے کے علاوہ انہیں خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔اس دوران محاذآزادی کے ایک دھڑے کے صدر محمد اقبال نے اشفاق مجید وانی کہا کہ بھارتی حکومت نے  فورسز کے ذریعے مزاحمتی تحریک کو کچلنے کے لئے گائو کدل ،ہندوارہ ،کپوارہ اور دوسری جگہوں میں جلیاں والا باغ جیسے قتل عام کرنے کے علاوہ  یہاں کے دانشور ،وکلا اور ڈاکٹر وں ،ادیبوں کومار دیا لیکن اس کے باوجود مزاحمتی تحریک کو ختم نہ کر سکا بلکہ یہ روز بروزپھیلتی جارہی ہے ۔درایں اثناء لبریشن فرنٹ آزاد کشمیر / پاکستان کے باب نے مظفرآباد کے برہان چوک میں منعقدہ پرامن احتجاج میں قائدین عبد الحمید بٹ، محمدسلیم ہارون، ڈاکٹر توقیر، منظور چستی اور ساجد صدیقی کے ساتھ ساتھ سیکڑوں کارکنان نے شرکت کی۔ شرکاء نے عظیم شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا اور ان کیلئے اعلیٰ درجات کی دعا کی۔ پرامن احتجاجیوں نے سیز فائر لائن پر فائرنگ، جموں وکشمیر سے افواج کی واپسی اور مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے اقوام متحدہ سے اپیل کی کہ وہ اس ضمن میں اپنی ذمہ داریوں کو نبھائیں۔اس کے ساتھ ساتھ اسلام آباد پاکستان میں اقوام متحدہ کے مبصر دفتر کے باہر بھی ایک احتجاجی دھرنا دیا گیا جس میں قائدین رفیق احمد ڈار، سردار انور،منظور احمد خان اور کاشف عباسی نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے نام ایک یادداشت بھی پیش کی گئی جس میں ان پر سیز فائر لائین پر گولہ باری بند کرانے اور معصوموں کی زندگیوں کو بچانے اور جنوبی ایشیائی خطے کی استحکام اور امن کو یقینی بنانے کے لئے کشمیر کے تنازعہ کو حل کرنے میں اپنے کردار ادا کرنے پر زور دیا گیا تھا۔