اسیروں کی حالت زار پر یاسین ملک کوتشویش

سرینگر//لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمدیاسین ملک نے فرنٹ کے مقید قائدین شیخ نذیراحمد(عمرقید)،اسداللہ شیخ کولگام اور غلام نبی کشمیری کولگام کی جیل میں بگڑتی ہوئی صحت کی صورتحال پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے نظر بندوں پر مظالم ڈھانے کی حکومت کی پالیسی کی سخت مذمت کی۔یاسین ملک نے ایک بیان میں کہا کہ شیخ نذیر احمد جوعمر قیدکی سزاکاٹ رہے ہیں،کو گزشتہ سال سینٹرل جیل سرینگر سے کورٹ بلوال منتقل کیاگیا اور تب سے اس کے گھروالوں کو ان سے ملنے سے روکا جارہا ہے۔اسی طرح اسداللہ شیخ جو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت کورٹ بلوال جیل میں بند ہیں ،کواس کی والدہ کی وفات پر جنازے اورتدفین میں شرکت سے روکاگیا۔ایک اورعلیل غلام نبی کشمیر ی جوذیابیطس کے مریض ہیں کو بھی عدالتی احکامات کے باوجود پولیس عدالت میں پیش کرنے سے لیت ولعل کررہی ہے ۔ملک نے نظربندوں کے ساتھ روارکھے گئے اس سلوک کو غیرجمہوری قراردیتے ہوئے انسانی حقوق کی عالمی اداروں سے اپیل کی کہ وہ کشمیری اسیروں پر ڈھائے جارہے مظالم کانوٹس لیں۔  ادھرڈیموکریٹک پولٹیکل مومنٹ کے ضلع صدرسرینگر محمدعمران بٹ نے لبریشن فرنٹ کے رہنمابشیراحمدکشمیری کو پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت جیل منتقل کرنے اور ریاست اور بیرون ریاست جیلوں میںمقید کشمیری نظر بندوں کی حالت پرتشویش کااظہار کرتے ہوئے انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے فوری مداخلت کی اپیل کی ۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ بشیرکشمیری کو پی ایس اے کے تحت جیل منتقل کرناانسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے ۔  محمد عمران بٹ نے مسرت عالم بٹ، خان سوپوری، فاروق توحید ی، عمرعادل ڈار اور دیگر نظر بندوں کی مسلسل نظر بند ی کی مذ مت کرتے ہوئے کہا کہ ان قائدین کو انتہائی کسمپرسی کی حالت میں نظر بند رکھا گیاہے جو ایک مذموم عمل ہونے کے علاوہ  انسانی اورآزادی کے بنیادی حق کی صریح پامالی ہے۔