اسکولی بچوں کو پیچ سڑک پر بسوں میں بٹھانے سے حادثات کا خطرہ

پونچھ//قصبہ پونچھ میں اسکولی بچوں کو لانے لیجانے والی گاڑیاں بیچ سڑک میں کھڑی کر کے ان میں بچوں کو بٹھایا جاتا ہے جو کسی بھی وقت بڑے حادثہ کا باعث بن سکتا ہے لیکن اس جانب انتظامیہ کی کوئی توجہ نہیں۔ بار ایسوسی ایشن پونچھ کے صدر ایڈووکیٹ محمد زمان اور سابق جنرل سکریٹری افتخار علی بزمی نے اس سلسلہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پونچھ قصبہ میں اسکولی بچوں کو پیچ سڑک پر بسوں میں بٹھانے کا سلسلہ کسی بڑے حادثے کو دعوت دینا ہے۔انہوں نے کہاکہ اگر جلد اس سلسلے پر قدغن نہ لگائی گئی تو کوئی بڑا حادثہ پیش آسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ والدین اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کی خواہش میں سرکاری اسکولوں کے بجائے نجی تعلیمی اداروں میں اپنے بچوں کو داخل کرواتے ہیں لیکن یہ نجی ادارے موٹی موٹی رقومات حاصل کرنے کے بعد ان بچوں کی زندگیوں کو خطرے میںڈال دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ناخاں والی سڑک پر ہر روز اسکولی بسوں کو کھڑا کر کے سینکڑوں بچوں کوگاڑیوں سے اتارا اور سوار کیا جاتا ہے جہاں سے ہزاروں دیگرگاڑیا گزرتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بچے آخر بچے ہیں اوروہ مستی میں ادھر ادھر دوڑتے رہتے ہیں جو کسی حادثے کاشکار ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اسکول انتظامیہ کا فرض بنتا ہے کہ وہ ان بچوں کی پوری حفاظت اور دیکھ بھال کریں ۔انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کا فرض ہے کہ بسوں کو محفوظ مقام پر کھڑا کر کے با حفاظت ان میں بچوں کو بٹھایا جائے ۔ انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر سے اپیل کی کہ وہ اس سلسلے میں کڑے اقدامات اٹھا ئیں اور اسکول انتظامیہ کو راستوں میں اور سڑکوں پر گاڑیاں کھڑی کرنے سے باز رکھا جائے۔