اسپتالوں میں آکسیجن کی نامناسب سپلائی باعث تشویش

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے جموں وکشمیر میں کووِڈ19معاملات کے اضافہ کے بیچ اسپتالوں میں آکسیجن کی مناسب سپلائی نہ ہونے پر گہری تشویش ظاہر کی ہے۔  ایک بیان میں بخاری نے کہاکہ ملک کے مختلف شہروں میں کورونا کی دوسری لہر کی وجہ سے صورتحال انتہائی تشویش کن ہے جہاں شہریوں کے لئے مناسب طبی سہولیات دستیاب رکھی جانی مطلوب تھیں لیکن صورتحال انتہائی تشویش کن ہے۔ انہوں نے کہا’’اگر ایسی صورتحال جموں وکشمیر میں پید ا ہوگئی تو مجھے ڈر ہے کہ یہاں پر زیادہ اموات ہوں گی کیونکہ دہلی یا ملک کی دیگر ریاستوں کے مقابلے یہاں پر طبی سہولیات کم ہیں‘‘۔ بخاری نے کہاکہ اِس صورتحال سے نپٹنے کے لئے فوری طو قبل از وقت اقدامات کرناناگزیر ہے اور انتظامیہ کو چاہئے کہ مختلف اسپتالوں میں صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے طبی ٹیمیں روانہ کی جائیں۔ انہوں نے کہا’’کسی بھی مشکل گھڑی کا سامنا کرنے کے لئے انتظامیہ کو جلد سے جلد تیاریاں کرنی چاہئے، آج کسی بھی سطح پر غفلت لاپرواہی کے ،کل سنگین نتائج برآمدہوسکتے ہیں۔طبی سہولیات خاص کر آکسیجن سلنڈرز، وینٹی لیٹرز، کویڈ19خصوصی ایمبولینس اور ادویات جیسے Remdesivirکی بلاتاخیر جموں وکشمیر کے سبھی اسپتالوںدستیابی یقینی بنائی جائے۔بخاری نے کہاکہ حکومت اِس بات کو یقینی بنائے کہ کووِڈ19سے متعلق سبھی ایس او پیز پر من وعن عمل آوری ہوتاکہ مہلک وائرس کے تیزی سے پھیلاؤ پر روک لگائی جاسکے۔ انہوں نے کہاکہ انتظامیہ یہ دیکھے کہ سبھی کووِڈ19گائیڈلائنز پر سختی سے عمل آوری ہے نیز ٹیکہ کاری مہم تیزی سے کی جائے۔وقت کی اہم ضرورت ہے کہ پرنٹ والیکٹرانک میڈیا کے ذریعے بیداری مہم چلائی جائے تاکہ لوگوں کی کونسلنگ ہو اور اُن کے خدشات دور کئے جائیں۔ انہوں نے مزید کہاکہ حکومت دیگر سبھی احتیاطی اقدامات بھی اُٹھائے تاکہ دیگر موذی امراض کا شکار مریض متاثر نہ ہوں اور اُن کے لئے علیحدہ سے خصوصی سہولیات رکھی جائیں۔