اداکارہ سے سیاستدان بنی ارمیلا جموں میں بھارت جوڑو یاترا میں شامل

نیوز ڈیسک
جموں//اداکارہ سے سیاستدان بنی ارمیلا متونڈکر منگل کو جموں میں کانگریس لیڈر راہل گاندھی کی بھارت جوڑو یاترا میں شامل ہوئیں۔متونڈکر نے سخت حفاظتی انتظامات کے درمیان صبح تقریباً 8بجے یاترا شروع ہونے کے فوراً بعد اس میں شمولیت اختیار کی، کانگریس کارکنان اور حامی ان کے استقبال کے لیے راستے میں قطار میں کھڑے دکھائی دئے۔48سالہ ارمیلا متونڈکر نے ستمبر 2019میں کانگریس سے استعفیٰ دے دیا تھا اور 2020میں شیوسینا میں شمولیت اختیار کر لی تھی۔کریم رنگ کے روایتی کشمیر فیرن اور بینی کیپ میں ملبوس،متونڈکر یاترا کے دوران راہول گاندھی کے ساتھ بات چیت کر رہی تھیں۔نامور مصنف پیرومل مروگن اور جے اینڈ کے پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر وقار رسول وانی، ان کے پیشرو جی اے میر اور سابق وزیر طارق حمید قرہ بھی ان کے ساتھ سینکڑوں دیگر افراد کے ساتھ ہاتھ میں ترنگا لے کر شامل ہوئے ۔یاترا میں شامل ہونے سے پہلے صبح کے وقت جموں سے ارمیلا ماتونڈکر نے ایک ویڈیو شیئر کرتے ہوئے کہا کہ ان کے لیے یہ یاترا سیاست سے زیادہ سماجی اہمیت رکھتی ہے اور وہ سماجی اقدار پر مبنی اس یاترا میں شامل ہو رہی ہیں۔ انہوں نے کہا ’’اس یاترا میں بہت سارا پیار، یقین اور ہندوستانیت ہے اور ہندوستانیت کا یہ چراغ ہر ایک کے ذہن میں اسی طرح جلتا رہنا چاہئے‘‘۔