اخروٹ اور بادام کی برآمدات پر ڈیوٹی میں اضافہ

 سرینگر //وزیر برائے باغبانی، قانون ، انصاف اور پارلیمانی امور سید بشارت احمد بخاری نے، پانچ اشیاء بشمول بادام اور اخروٹ جو کہ امریکہ و دیگر ممالک سے برآمد ہوتے تھے، پر صد فیصد برآمدات ڈیوٹی بڑھانے کے لئے مرکزی حکومت کے فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے ۔ وزیر موصوف نے کہا کہ یہ عمل مقامی معیاری میوہ پیدا کرنے والوں کے تحفظ اور بیرونِ ملک سے سستی برآمدات پر قابو  پانے پر سود مند ثابت ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے مقامی میوہ پیداوار کی مارکیٹنگ میں اضافہ ہو گا ۔یہ امر قابلِ ذکر ہے کہ ریاست کے وزیر خزانہ نے کسٹم ایکٹ کے سیکشن 8-A کے تحت اخروٹ پر کسٹم ڈیوٹی  30 فیصد سے بڑھا کر سو فیصد بڑھا دی ہے ۔ بادام پر 65 روپے فی کلو سے بڑھا کر 100 روپے فی کلو اور گندم پر 20 فیصد سے بڑھا کر 30 فیصد کر دی ہے ۔ پروٹین کنسنٹریٹ کی برآمد پر اب دس فیصد کے بجائے 40 فیصد ڈیوٹی عائد ہو گی تا ہم پروٹین کنسنٹریٹ اور ٹیکسچرڈ پروٹین پر سنٹرل بورڈ آف انڈاریکٹ ٹیکسز اینڈ کسٹمز کی نوٹیفکیشن کے مطابق ڈیوٹی کی شرح 30 فیصد سے بڑھا کر 40 فیصد کر دی گئی ہے ۔