آکسیجن کی سطح گرنے کے بعد ٹرمپ کوڈیکسامیتھاسون کا ڈوزدیا گیا

واشنگٹن// جان لیوا کورونا وائرس سے متاثر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کی ٹیم نے کہا ہے کہ ٹرمپ کے خون میں آکسیجن کی سطح کم ہونے کے بعد انہیں آکسیجن دی گئی۔ ڈاکٹروں کے مطابق ٹرمپ کو ڈیکسامیتھاسون کی دوائیں بھی دی گئیں ، جس سے ان کی حالت مستحکم ہے اور وہ جلد صحت یاب ہو کر وائٹ ہاو¿س واپس آجائیں گے۔
والٹرریڈ نیشنل ملٹری میڈیکل سینٹر کے ڈاکٹروں کی ٹیم نے پریس کانفرنس میں صحافیوں کو یہ اطلاع دی۔
 ٹرمپ کو کورونا سے متاثر پائے جانے کے بعد جمعہ کے روزعلاج کے لئے اسپتال داخل کرایا گیا تھا۔
امریکی صدر کا علاج کرنے والے ڈاکٹر برائن گیری بالڈی ی نے کہا”آکسیجن کی سطح کم ہونے کے بعد ہفتہ کے روز 74 سالہ صدر کو ڈیکسامیتھاسن کا ڈوز دیا گیاتھا۔ ٹرمپ کے خون میں آکسیجن کی سطح فی الحال معمول پر ہے۔
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق ڈیکسامیتھاسن کی دوا کوروناوائرس کے ان مریضوں کو دی جانی چاہئے جن کی حالت تشویشناک ہے۔
ڈاکٹروں کے بیان کے فورا بعد ہی صدر کے چیف آف اسٹاف مارک میڈو نے کہا” گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صدر کی حالت انتہائی تشویشناک تھی اور اگلے 48 گھنٹے ان کی صحت کے لحاظ سے بہت اہم ہوں گے۔ ہم اب بھی واضح طور پر نہیں کہہ سکتے کہ وہ کب تک صحت یاب ہوسکیں گے“۔
یاد رہے کہ گذشتہ جمعرات کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹویٹ کیا کہ وہ اور ان کی اہلیہ میلانیا ٹرمپ کورونا سے متاثر ہو چکے ہیں۔
 ٹرمپ ایک ایسے وقت میں کورونا میں مبتلا ہوئے ہیں جب صدارتی انتخابات میں اب صرف ایک ماہ باقی ہے۔