ؔ’پنچایتی راج نظام ترقیاتی کاموں کو فروغ دے گا ‘ | مرکزی وزیر دیہی ترقی وپنچایتی راج کا کٹھوعہ کا دورہ

بِلاور//مرکزی وزیر دیہی ترقی اور پنچایتی راج گری راج سنگھ نے کہا کہ جموں و کشمیر میں سہ درجہ پنچایتی راج نظام ترقیاتی کاموں کو فروغ دے گا جو کہ ان کے منتخب کردہ پی آر آئی نمائندوں کے ذریعے لوگوں کی عوامی خواہش کے مطابق ہے۔وزیر موصوف نے اِن باتوں کا اِظہار مرکزی حکومت کے جاری عوامی رسائی پروگرام کے تحت کٹھوعہ ضلع کے جی ڈی سی بلاور کے دورے کے دوران کیا۔اُنہوںنے مختلف شعبوں بشمول زراعت ، باغبانی ، آئی سی ڈی ایس ، بینک وغیرہ کے لگائے گئے سٹالوں کا معائینہ کیا۔وزیر موصوف نے زراعت اور باغبانی شعبوں کی مختلف حکومت معاونت والی سکیموں کے فائدہ اُٹھانے والوں  میں سولہ ٹریکٹر اور ایک ٹلر بھی دیا۔اُنہوںنے 12.74 کروڑ روپے مالیت کے نئے تعمیر شدہ اثاثوں کا اِفتتاح کیا جس میں دو پی ایم جی ایس وائی سڑکیں ، ایک اے این ایم ٹی سکول بلاور ، چار پنچایت گھر کی عمارتین شامل ہیںاورایک ہزار پی ایم اے وائی مکانات مستحقین کے لئے وقف کئے گئے ہیں۔اُنہوں نے ڈنگا امب، بلاور اور برنوٹی بلاکوں میں تعمیر ہونے والی ڈسٹرکٹ ڈیولپمنٹ کونسل ، کٹھوعہ بلڈنگ اورا تین بلاک ڈیولپمنٹ کونسل کی عمارتوں کا عملی طور پر اِی ۔ سنگ بنیاد بھی رکھا۔اِس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر نے کہا کہ جموںوکشمیر میں پہلی بار فعال ضلعی اور بلاک ترقیاتی کونسلیں ہیں اور ترقی کی ذمہ داری بنیادی پر ان پر پی آر آئیز پر ہے ۔ اُنہوں نے منتخب پی آر ائی سے اپیل کی کہ وہ اَپنے اَپنے علاقوں کی ترجیح کے مطابق ترقیاتی کاموں کے لئے بجٹ منصوبہ بندی اور مختص کریں۔انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے سیلف ہیلپ گروپوں کو مزید مستحکم کرنے کی کوشش کی جائے گی جس کے لئے جموں و کشمیر میں خواتین کو بااختیار بنانے کی کوششوں کو مضبوط بنانے کی خاطر بہتر مارکیٹنگ چینلز استعمال کئے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر میں زراعت اور باغبانی کے شعبوں میںہائی ڈینسٹی پودے لگانے کا فائدہ اب چھوٹے کسانوں کے لئے بڑھایا گیا ہے جو چھوٹے کسانوںکی خاطر آمدنی کے راستے کھولیں گے۔وزیر نے ڈی ڈی سی ، بی ڈی سی ، یو ایل بی ، پی آر آئی اور سول سوسائٹی کے نمائندوں سے ملاقات کی اور ان کے مسائل اور مطالبات سنے۔ انہوں نے یقین دلایا کہ ان کے مسائل کا حل مناسب فورموںپر اٹھایا جائے گا۔