GK Communications Pvt. Ltd
Edition :
  صفحہ اوّل
حراستی تفتیش نہیں مشترکہ پوچھ تاچھ


سرینگر//جنگجوئوں کیساتھ رابطوں کی پاداش میں گرفتار4پولیس اہلکاروں کومرکزی تفتیشی ایجنسیوںکے حوالے کرنے سے پولیس نے انکار کر دیا ہے۔تاہم پولیس کی خصوصی تحقیقاتی ٹیم نے مذکورہ ایجنسیوں کے اہلکاروںکوشامل تفتیش کر لیا ہے۔ باوثوق ذرائع سے کشمیر عظمیٰ کو معلوم ہوا ہے کہ دو روز قبل مرکزی تفتیشی ایجنسی این آئی اے اور انٹیلی جنس بیورو کی جو ٹیمیں سرینگر پہنچ گئی تھیں، اُنہیں شامل تفتیش کر لیا گیا ہے۔تاہم بتایا جاتا ہے کہ انٹیلی جنس ایجنسیاں ان چاروں اہلکاروں کاکسٹوڈیل انٹروگیشن کرنا چاہتی ہیں اور اس سلسلے میں اُنہوں نے ریاستی پولیس کے اعلیٰ حکام سے رابطہ قائم کیا ہے۔ البتہ پولیس نے اُنہیں اگرچہ شامل تفتیش کر لیا ہے اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کے ساتھ مشترکہ طور پر پولیس اہلکاروں سے پوچھ تاچھ کی جارہی ہے تاہم چاروں اہلکاروں کو ایجنسیوں کی تحویل میں دینے سے انکار کیا گیا ہے۔ ایک پولیس آفیسر نے اپنا مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ ابھی پولیس کی خصوصی ٹیم کی اس کیس کے سلسلے میں ابتدائی تحقیقات ہی کی جارہی ہے اور یہ ممکن ہی نہیں کہ چار اہلکاروں کو کسی سیکورٹی ایجنسی کے حوالے کیا جائے۔ مذکورہ آفیسر کا کہنا تھا کہ پولیس کی جانب سے جب تفتیشی عمل مکمل ہوگا حالانکہ یہ عمل مشترکہ طور پر کیا جارہا ہے، تو اس کے بعد ہی اگر انٹیلی جنس ایجنسیاں ان سے مزید پوچھ تاچھ کرنا چاہتی ہوں، تو اس کے لئے باضابطہ طور پر قواعد و ضوابط موجود ہیں جن پر عمل پیراہو کر ہی اُنہیں ان کی تحویل میں دیا جاسکتا ہے۔شامل تفتیش ایک سیکورٹی ایجنسی کے آفیسر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اُن کے کئی اہلکار دن میں باری باری تفتیشی عمل میں شامل ہورہے ہیں اور پولیس کیساتھ مشترکہ طور پر اہلکاروں سے تفتیش کی جارہی ہے اور غالب امکان ہے کہ مزید گرفتاریاں عمل میں لائی جائیں۔

 

یہ صفحہ ای میل کیجئے پرنٹ کریں












سابقہ شمارے
  DD     MM     YY    


 


© 2003-2014 KashmirUzma.net
طابع وناشر:رشید مخدومی  |  برائے جی کے کمیونی کیشنزپرائیوٹ لمیٹڈ  |  ایڈیٹر :فیاض احمد کلو
ایگزیکٹو ایڈیٹر:جاوید آذر  | مقام اشاعت : 6 پرتاپ پارک ریذیڈنسی روڑسرینگرکشمیر
RSS Feed

GK Communications Pvt. Ltd
Designed Developed and Maintaned By