تازہ ترین

معمولی بارش ہو تو وادی میں سیلاب کی گھنٹی کیوں بجتی ہے؟ ، ندی نالوں میں صفائی اور ڈریجنگ نہ کرنا،آبی پناہ گاہوں پر رہائشی کالنیوں کی تعمیر

سرینگر //  ندی نالوں میں صفائی اور ڈریجنگ نہ کرنے ،آبی پناہ گاہوں پر رہائشی کالونیوں کی تعمیر اور درختوںکے بے تحاشہ کٹائو و سرکار ی سطح پر ناقص منصوبہ بندی کے نتیجے میں معمولی سی بارش پر بھی وادی میں سیلاب کا خطرہ منڈلانے لگتاہے ۔موسمی ماہرین کا کہنا ہے کہ وادی کی جغرافیائی پوزیشن ایسی ہے کہ یہاں متواتر بارشیں بھی ہوسکتی ہیں اور سیلاب آنے کا خطرہ بھی برقرار رہتا ہے لیکن اس کیلئے سرکار کو جنگلات کے کٹائو ،آبی ذخائر پر ناجائز تعمیرات اور ندی نالوں میں فضلہ پھینکنے پر روک لگانی چاہیے تاکہ اس کی شدت کو کم کیا جاسکے۔ ماہرین کے مطابق ندی نالوں اور آبی ذخائر کے اندر پانی کی سطح اس لئے بڑھ رہی ہے کیونکہ اس میں پانی سے آنے والی مٹی اور کیچڑ جاتا ہے ۔ کشمیر یونیورسٹی میں ماہر اقتصادیات شکیل رامشو نے پہلے ہی ایک رپورٹ میں یہ تشویش ظاہر کی تھی کہ ریاست جموں وکشمیر میں 22کے قریب پرندوں کی

کانگریس اوراین سی لیڈران کے گھروں پر پتھرائو

اننت ناگ //جنوبی کشمیر کے کوکرناگ علاقے میںاتوار کو کانگریس لیڈر وسابق وزیر پیرزادہ محمد سعید کی رہائش گاہ پرمامور محافظوں نے پتھرائو کے واقعات کے بعد ہوا میں فائرنگ کی ہے ۔تفصیلات کے مطابق دمحال خوشی پورہ میں اتوار کو سابق وزیر پیر زادہ محمد سعید کے مکان پر پتھرائو ہوا جس کے بعد اُن کی رہائش گاہ پر مامور محافظوں نے فائرنگ کی ۔ایسا ہی ایک واقع اننت ناگ کے بلبل باغ نوگام میں پیش آیا جہاں سابق نیشنل کانفرنس لیڈر عبدالرشید کے مکان پر کچھ مشتعل نوجوانوں نے پتھرائو کیا ۔معلوم رہے کہ وادی میں برہان وانی کی دوسری برسی کے سلسلے میں مکمل ہڑتال رہی جس کے نتیجے میں معمولات درہم برہم ہو کر رہ گئے ۔    

۔5برس کے طویل وقفے کے بعد فائر اینڈ ایمرجنسی محکمہ میں نئی بھرتی سرگرمیوں کاآغاز

سرینگر //محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز میں پچھلے 5سال سے بند پڑا بھرتی عمل پھر سے شروع ہونے والا ہے اور محکمہ آئندہ ایک ماہ کے اندر ان ایک ہزار اسامیوں کی بھرتی کا عمل شروع کرنے جا رہا ہے جس کیلئے اُمید واروں نے سال 2013میں فارم جمع کئے ہیں۔محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز نے 142خالی پڑی مائگرینٹ اسامیوں کیلئے بھی بھرتی عمل شروع کیا ہے۔ کشمیر میں بڑھتی خشک سالی اور آگ بجھانے والے عملی کی کمی کے نتیجے میں جہاں آگ کی وارداتوں میں نجی و سرکاری املاک کو بھاری نقصان سے دو چار ہونا پڑ رہا ہے ،اسی کے مد نظر محکمہ فائر ایند ایمرجنسی سروسز نے 5سال تک بند رہنے والے بھرتی عمل کو پھر سے شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ کشمیرعظمیٰ کو محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ائے ڈی پی پرزن دلباغ سنگھ نے محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی کا اضافی چارج سنبھالتے ہی محکمہ میں عملے کی کمی کو پورا کرنے

اسمبلی کو معطل رکھنا چہ معنیٰ دارد؟

سری نگر//کانگریس پارٹی نے بھاجپا کے قومی جنرل سیکریٹری رام مادھو کے اُس بیان جس میں اُنہوں کہا تھا کہ بھاجپا ریاست میں نئی سرکار کی تشکیل میں کوئی دلچسپی نہیں بلکہ وہ گور نر راج سے مطمئن ہے ،پر ردِ عمل ظاہر کرتے ہوئے سوالیہ انداز میں کہا کہ قانون ساز اسمبلی کو معطل رکھنا کے کیا معنی یا منطق ہے ۔ کانگریس کے ریاستی ترجمان کی جانب سے بھیجے گئے بیانمیں کہا گیا ہے کہ ریاستی گور نر کو اقتدار کے بھوکے سیاستدانوں کی جانب سے ’ہارس ٹریڈنگ ‘کی کوششوں پر کڑی نگاہ رکھنی چاہئے ۔ان کا کہناتھا کہ جموں وکشمیر میں حکومت سازی کے حوالے سے کئی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں جبکہ یہ بھی کہا جاتا ہے کہ عنقریب حکومت تشکیل دی جائیگی ،جوکہ ممکن نہیں ،لہٰذا موجودہ صورتحال میں قانون ساز اسمبلی کو تحلیل کرنے سے ہی قیاس آرائیوں کو ختم کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے گور نر این این ووہرا سے اپیل کی کہ وہ قانون ساز

فورسز کا پلوامہ میں آئی ای ڈی ناکارہ بنانے کا دعویٰ

سری نگر//  فورسز نے اتوار کو جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے نوپورہ میں جنگجوؤں کی طرف سے نصب کردہ ایک دیسی ساختہ بم (آئی ای ڈی) کا پتہ لگاکر اسے بروقت ناکام بنانے کا دعویٰ کیا۔ سرکاری ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ فورسز کی گشتی پارٹی نے اتوار کو پلوامہ کے نوپورہ میں سڑک کے کنارے ایک آئی ای ڈی نصب کیا ہوا پایا۔ انہوں نے بتایا ’آئی ای ڈی کا پتہ لگانے کے ساتھ ہی سڑک کو بند کیا گیا اور بم کو ناکارہ بنانے کے لئے بم ڈسپوزل اسکواڈ کو طلب کرلیا گیا‘۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے بم کو بغیر کسی نقصان پہنچائے ناکارہ بنادیا۔ 28 مئی کو جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کے سوگن ترکہ وانگام میں فوج کی 44 راشٹریہ رائفلز (آر آر) کی گاڑی کو نشانہ بناکر آئی ای ڈی دھماکہ کیا تھا جس کے نتیجے میں فوج کے تین اہلکار زخمی ہوئے تھے۔ دھماکہ میں فوج کی کیسپر گاڑی کو نقصان پہنچا ت

ہردشیوازینہ گیر سڑک کی حالت ناگفتہ بہ

سوپور//ہردشیواہ زینہ گیر سے سوپور سڑک کی خستہ حالت سے لوگوں کومشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ اس سڑک کی ناگفتہ بہ حالت سے ہردشیواہ،ڈانگرپورہ اورزینہ گیر سمیت دیگر علاقوں کو میوہ صنعت میں ایک ممتاز حیثیت رکھتے ہیںلیکن سڑکوں کے سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے انہیں سخت دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ زینہ گیر کی بیشتر سڑکیں جن میںوٹلب ،بومئی شیواہ سڑک ابترحالت میں ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق ٹرانسپورٹر اس سڑک سے مال بردار گاڑیاں چلانے میں خوف محسوس کررہے ہیں ۔یہ سڑک علاقہ زینہ گیر کے کئی دیہات کو سوپور سے ملاتی ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ کئی بار متعلقہ حکام اور عوامی نمائندوں کو اس مسئلہ سے آگاہ کیا گیا لیکن کوئی خاطر خواہ اقدام نہیں کیا گیا۔انہوں نے ایم ایل اے سوپور حاجی عبدالرشید ڈار،محکمہ آر اینڈ بی اور اے ڈی سی سوپور سے مطالبہ کیا کہ لوگوں کے مشکلات کا ازالہ کرنے اور م

برہان وانی کو خراج عقیدت، ہندوارہ میں دعائیہ مجلس

سرینگر// مسلم کانفرنس نے برہان مظفر وانی اور2016کے دوران جاں بحق ہوئے افرادکو اُنکی دوسری برسی پر خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے ہندواڑہ میں ایک دعائیہ مجلس کا اہتمام کیا جس کی صدارت چیئرمین شبیر احمد ڈار نے کی۔انہوں نے اس موقع پر کہا کہ برہان وانی نے تحریک آزادی کو اِس مقام پر پہنچانے کیلئے جس با لغ نظری اور عزم و استقلال کا مظاہرہ کیا وہ ناقابل فراموش ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کشمیری عوام اپنے اس عظیم کمانڈر کے ساتھ ساتھ ایجی ٹیشن 2016میں جاں بحق ہوئے دیگر افراد کو عقیدت و احترام سے یا د کر تی ہے ۔ ادھر نیشنل فرنٹ نے برہان وانی کو اُن کی دوسری برسی کے موقع پر خراج عقیدت پیش کیا ہے۔ پارٹی نے 2016کے دوران جاں بحق کئے گئے دیگر افراد کو بھی یاد کیا۔تنظیم کے ایک ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ برہان ایک معروف عسکری کمانڈر تھے جنہوں نے بہت ہی کم عمر میں اپنی سیاسی بصیرت کا لوہا منوایا۔ ترجمان کے م

چدمبرم کی سربراہی میں کانگریس گروپ کا دورئہ لداخ

سرینگر//کانگریس پالیسی پلاننگ گروپ نے اپنی سرگرمیاں دوبارہ شروع کی ہیں۔ گروپ کے ممبران نے سابق مرکزی وزیر داخلہ پی چدمبر م کی سربراہی میں خطہ لداخ کا اپنا تین روزہ دورہ اتوار سے شروع کیا ۔پارٹی ترجمان نے کے این این کو بتایا کہ کانگریس پالیسی پلاننگ گروپ اتوار کو نئی دہلی سے سیدھے خطہ لداخ کے تین روزہ دورہ پر اتوار کو کرگل پہنچ گیا ۔انہوں نے کہا کہ اس گروپ کی سربراہی سابق مرکزی وزیر داخلہ پی چدمبرم کررہے ہیں جبکہ یہ گروپ سماج کے مختلف طبقہ ہائی فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے ملاقات کرے گا جبکہ اتوار کو اس گروپ نے کئی عوامی وفود سے کرگل میں ملاقاتیں کیں ۔ انہوں نے کہا کہ گروپ دورے کے دوران خطہ لداخ کے لوگوں سے جموں وکشمیر کی موجودہ سیاسی وسیکورٹی اوردیگر امو ر سے متعلق عوامی رائے حاصل کرے گا ۔اس گروپ میں پی چدمبرم کے علاوہ راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد ،پردیش کانگریس صدر غل

۔13برس قبل زلزلے میں تباہ ہوئی عمارت تعمیر کی جائے

سرینگر // 13برس قبل زلزلے میں تباہ ہوئی سیل اینڈ سروس سوسائٹی ٹنگڈار کی عمارت پر تعمیری کام ہنوز شروع نہیں کیا گیا ہے جس کے نتیجے میں سوسائٹی میں کام کرنے والے ملازمین کو عمارت کی عدم دستیابی کے نتیجے میں شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔معلوم رہے کہ 2005کے تباہ کن زلزلے میں یہ عمارت بھی دیگر سرکاری عمارات کے ساتھ زمین بوس ہو گئی تھی ۔اگرچہ اس دوران دیگر عمارات کو تعمیرکیا گیا تاہم سیل اینڈ سروس سوسائٹی ٹنگڈار کی عمارت ہنوزتعمیر نہیں ہوسکی ۔اس سلسلے میں کئی مرتبہ لوگوں نے انتظامیہ کو آگاہ کیا لیکن یقین دہانیوں کے باوجود اُس عمارت کی طرف کوئی دھیان نہیں دیا گیا جس کی وجہ سے سوسائٹی کے ملازمین آج بھی کھوڑپارہ گائوں میں زلزلے میں تباہ ہوئی بوسیدہ عمارت میں اپنا کام انجام دے رہے ہیں ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ کئی برس قبل سیل اینڈ سروس سوسائٹی ٹنگڈارکی عمارات لونٹھا گائوں میں تعمیر کی گئی تھی تاہ

اُردو یونیورسٹی میں ریگولر کورسز ۔ آخری تاریخ آج

حیدرآباد//مولانا آزاد نیشنل اُردو یونیورسٹی میں میرٹ کی اساس پر داخلوں کا عمل 9؍ جولائی کو اختتام کو پہنچے گا۔ شعبۂ اردو میں دو سالہ ایم اے اور تین سالہ بی اے کورس دستیاب ہے۔ شعبے سے فارغ ہونے والے طلبہ کو ملٹی نیشنل کمپنیوں جیسے فیس بک وغیرہ میں ملازمت مل چکی ہے۔ ان کے علاوہ بعض فارغین سرکاری و خانگی ڈگری اور جونئر کالجس میں بحیثیت لکچرار برسرکار ہیں۔ نظم و نسق عامہ یعنی پبلک ایڈمنسٹریشن میں دو سالہ ایم اے کورس دستیاب ہے۔ یہ کورس حصول ملازمت کے علاوہ مسابقتی امتحانات میں کامیابی کا ضامن تصور کیا جاتا ہے۔ سماجی خدمت کے سلسلے میں تربیت کے لیے ماسٹر آف سوشل ورک جس کی غیر سرکاری فلاحی تنظیموں میں کافی مانگ ہے اور دیگر سماجی علوم کے شعبوں جیسے سیاسیات، مطالعاتِ نسواں (ویمن اسٹڈیز) میں بی اے، ایم اے اور ڈپلوما کورسز دستیاب ہیں۔ مطالعاتِ ترجمہ اور فارسی کے ایم کورس میں بھی داخلے حاصل کیے