تازہ ترین

قطعات

 پہلا رشتہ جان کر بھی بنتے ہو انجان کیوں دور یہ موبائل و ٹی وی کا ہے   آدم و حوا سے کیا ثابت نہیں سب سے پہلا رشتہ بس بیوی کا ہے   صدقہ یہ سمجھ میں کسی کے آتا نہیں مولوی ٹھیک سے بتاتا نہیں   ہر بلا سے بچاتا ہے صدقہ کیوں یہ بیوی سے پھر بچاتا نہیں   ڈنڈا ہمارے دیش میں ہر پارٹی کا جھنڈا ہے ہر ایک نیتا کا اپنا الگ ایجینڈا ہے   سوال ایک یہی پوچھتا ہوں تم سب سے تمھیں خبر ہے یہ جھنڈے میں کس کا ڈندا ہے   جنت کل رات میں نے دیکھا ہے یارو عجیب خواب سونا بھی جس نے چین سے دشوار کر دیا   بیوی کو اپنی دیکھ کے حوروں کی بھیڑ میں جنت میں میں نے جانے سے انکار کر دیا    بانی علامہ قیصر اکیڈمی،علی گڑھ آباد مارکیٹ دودھ پور علی گڑھ موبائل:9897

نظمیں

قطعات اُڑی ہیں دھجیاں شرم و حیا کی نئی تہذیب کی جلوہ گری سے   یہ روشن دور مغرب کو مبارک ہم اندھے ہوگئے اس روشنی سے   خودنمائی کی عام دعوت ہے ہر بُرائی کی عام دعوت ہے   منہ چھپانے لگی ہے شرم و حیاء بے حیائی کی عام دعوت ہے   مغربی تہذیب سب پر چھا گئی حق پرستوں کو بھی اب یہ بھا گئی   آہ! اب یہ خوش نُما رنگین بَلا رقص کرکے سب گھروں میں آگئی   ہم ترقی کرکے ننگے ہوگئے بچے بالے گھر کے ننگے ہوگئے   جیتے جی مرتے رہے مغرب پہ ہم اور آخر مرکے ننگے ہوگئے   ماسٹر عبدالجبار گنائی موبائل نمبر؛ 8082669144   منحرف ہو جاؤں گی دل حزیں نالہ فضا میں دیکھئے گونجا کہیں غالباً پھِر سے کوئی ماں ہے کہیں محوِ فُغاں دور اُس سے اُس کا شاید ہو گی