تازہ ترین

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 سوال:۱-میں ایک کالج اسٹوڈنٹ ہوں اور ماڈرن ہوں ۔ پچھلے کچھ عرصہ سے نماز پڑھنا شروع کردی ہے۔میں چونکہ تنگ وچست جینز پہنتاہوں اس لئے نماز کے وقت ٹخنوں سے موڑ دیتاہوں ۔ ایک صاحب نے مجھ سے یوں کہا : رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کپڑا سمیٹنے اور موڑنے سے منع کیا ہے اور حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حکم دیا کہ نہ کپڑوں کو سمیٹوں اور نہ بالوں کو۔(بخاری) مسائل کی کتابوں میں لکھاہے کہ کپڑا موڑنا مکروہ ہے اس لئے پائجامہ اور پینٹ موڑ کرنماز پڑھنا مکروہ ہے اور ایسی حالتوں میں پڑھی ہوئی نماز دوبارہ پڑھنا ضروری ہے کیونکہ مکروہ تحریمی واجب الاعادہ ہوتی ہے۔اب میرا سوال یہ ہے کہ ٹخنوں سے موڑنا کیاہے؟ محمد محسن شیخ  پائجامہ اور پینٹ موڑ کرنماز پڑھنا مکروہ نہیں    جواب:-ٹخنوں سے نیچے کپڑا پہننے کے متعلق احادیث میں سخت ممانعت ہے ۔ یہ احادیث بخاری، مسلم، ترم

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔۔قسط87

   گزشتہ شمارے میں برسبیل تذکرہ پہلے عمرے کا ایک واقعہ یاد آیا تھا جسے سپردِ قرطاس کیا تاکہ داستانِ حرم کا یہ پہلو یاداشت کی تختی سے محو نہ ہو ۔ یہاں یہ بتا تا چلوں کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے چار عمرے کئے اور ہر بار ماہ ِ ذی قعد میں یہ فریضہ انجام دیا مگر حج بیت اللہ صرف ایک ہی مرتبہ ادا کیا، رخت ِسفر مدینہ منورہ سے ماہ ذی قعد میں باندھا ۔ اس موقع پر تمام ازواج مطہرات ؓ آپ ؐ کے ہمراہ تھیں ۔ تاریخ ِاسلام میں یہ حجۃالوداع سے موسوم ہے۔ شاہِ مدینہ ؐ نے طوافِ کعبہ اپنی اونٹنی پر کیا اور چاہِ زمرم کے پاس پہنچ کر اس میں ڈھول ڈالا، زمرم نکالا ، کچھ نوش فرمایا ، بچے ہوئے زمزم میں لعاب ِ دہن ملا اسے کر کنوئیں میں ڈال دیا ۔ اس لعابِ دہن کا اثر ِخوش تر ابدالآباد تک ہمارے روحانی امراض کے لئے تریاق ہے ۔        بہرصورت ہمارا سفر مدینہ شدو مد سے جاری ت

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 سوال: ۔ طلاق کیا ہے اور کیوں ہے ؟ یہ کب دینے کا حق ہے؟ اس کا طریقہ کیا ہے؟ اس کےنتائج کیا ہیں؟ برائے مہربانی کرکے قرآن و حدیث کی روشنی میں جواب دیکر رہنمائی فرمائیں؟     محمد عرفان شاہ ........سرینگر طلاق کی مختلف صورتیں اور انکی توضیح    جواب:۔ طلاق رشتہ نکاح ختم کرنے کا نام ہے۔ اسلام کی نظر میں طلاق سخت ناپسندیدہ ہے۔ حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اللہ کی نظر میں تمام حلال کاموں میں سب سے زیادہ قابل نفرت طلا ق ہے۔ اسلئے کہ نکاح کا رشتہ کوئی وقتی یا عارضی رشتہ نہیں ہے۔ قرآن کریم نے اس کو مضبوط اور پائیدار بندھن قرار دیا ہے۔ نکاح کے نتیجے میں مردوعورت زندگی بھر کے رفیق و شفیق بن جاتے ہیں۔ اسی کے ذریعہ حلال اولاد کی نعمت ملتی ہے اسی کی وجہ سے دونوں کی جنسی ضرورت پوری ہوتی ہے ۔ اسی کی نتیجے میں خاندان وجود میں آتے ہیں۔ یہ بے شمار

!نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں

گزشتہ قسط میں عرض کیا تھا کہ پہلے عمرہ کے موقع پر ہماری گاڑی کا ٹائر پنکچر ہونے سے کچھ دیر ہمارے سفر مدینہ کا تسلسل یکایک منقطع ہوا۔ انسان پر مشین کی غیر یقینی آقائیت کا کیا بھروسہ کب کیا گل کھلائے۔ یہ کبھی جھکی گردن سے انسان کا بوجھ اٹھائے اُ سے چاند تارے چھونے میں مددگار ثابت ہو اور کبھی معمولی نقص کے باعث خود انسان کے سر پرسوار ہو جائے۔ غرض ہماری گاڑی اب سڑک کنارے بے حس و حرکت پڑی تھی اور ہم نئی گاڑی کے انتظار میں کھڑے تھے ۔ ظاہر ہے قافلہ ٔ شوق سرراہ درماندہ ہو نے سے تھوڑی بہت بدمزگی محسوس ہونا فطری تھا۔ ٹو ر آپریٹر نے ہمارا موڈ ٹھیک رکھنے کے لئے اعلان کیا گھبرایئے نہیں، ابھی کچھ دیر میں نیا انتظام ہونے والا ہے۔ آپ گاڑی میں بیٹھیں رہیں تو بہتر ، نیچے آئیں تو مہربانی کرکے تھوڑی ہوشیاری برتیں کیونکہ شاہراہ پر برق رفتار گاڑیاں آجا رہی ہیں، حادثے کا خطرہ لاحق ہو سکتا ہے ۔  

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

  سوال:۔ ہمارےمعاشرے میں رشوت کا جوظالمانہ ماحول ہے اُس کااندازہ ہر اس شخص کو ہے جس کو یہاں کے کسی بھی دفتر سے کوئی سابقہ پڑتا ہے۔ بعض دفعہ ایسا لگتا کہ امیروں ،وزیروںاور افسران سے لے کر چپراسیوں تک مشکل سے ہی کوئی شخصہے جو اس وباء سےمحفوظ ہو۔ اب تو اس کو حرام سمجھنے کا تصور بھی ختم ہو چکا ہے۔ براہ کرم اس کے لئے متعلق ایک واضح جواب عنایت فرمائیں ۔ خاص کر اُس شخص ،جو یہ رشوت دینے پر مجبو رہے ۔کیونکہ اگر نہ دے تو اس کا جائز کام نہیں ہو پائے، کےلئے کیا حکم ہے؟ عبدالرشید  خان  غلام مصطفیٰ خان ...سرینگر رشوت کا لین دین......توضیح اور شرعی حکم جواب:۔رشوت حرام آمدنی کی بدترین اقسام میں ہے۔ قرآن کریم کا ارشاد ہے :۔ ترجمہ اے ایمان والو آپس میں ایک دوسرے کا مال باطل طریقے سے مت کھائو۔ النساء ۔رشوت اس میں داخل ہے۔ حضرت نبی کریم ﷺ نے ارشاد فرمایا رشوت لینے والوں

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔۔۔ قسط 84

 مکہ معظمہ سے مدینہ طیبہ کا سفر جاری تھا کہ بہشت ِمدینہ کی ہوائیں ہمارے دیدہ ٔ شوق کا اضطراب بڑھا تی ر ہیں ، مدنی خوشبوئیں زنان ِ مصر کی طرح ہمارے دل و جگر کاٹتی رہیں، گنبد خضریٰ کی تابانیاںسینکڑوں میل دوری سے ہماری بے تابیوں کو مہمیز دیتی رہیں۔ ایسے میں ہوش وحواس کی پگڈنڈی پر قدم پھسلے بغیرچلنا صرف دل گردہ کا کام ہی ہوسکتا ہے ۔ حالانکہ علامہ اقبالؒ اس نازک موقع پر اللہ سے یہ دعا مانگتے    ع  مرے مولا !مجھے صاحب ِجنوں کر    یہ دُعا مانگنااقبال جیسی اونچی ہستی کے لئے ہی شا یانِ شان ہے ،ہم ٹھہرے مدینہ منورہ کے ادنیٰ مسافر ، نہ صاحب ِ جنون نہ راہِ عشق ومستی کے پیادے، بلکہ گزرگاہِ رسول اکرم صلی ا للہ علیہ و سلم سے دیار ِ حبیب ؐکی جانب مشتاقانہ بڑھنے والے  تھے۔ ہم جیسے عامی اس شاہراہِ ہجرت کی اہمیت پر کیا سوچیں، اس کی مسافت پر کیا غور کریں، اس کے ن

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 سوال:۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ تین طلاق اور اُس کے ساتھ جڑے ہوئے چند مسائل کے متعلق ایک مہم چلا رہا ہے۔ اس سلسلے میں چند اہم سوالات ہیں۔ (۱) مسلم پرنسل لاء کیا ہے اس کے دائرے میں کیا مسائل ہیں؟ (۲) اسلام میں اُ س کی حیثیت اور اہمیت کیا ہے؟ (۳) اس کا تحفظ اور بقاء کیسے ممکن ہے؟ (۴) خود مسلمانوں کا طرز عمل کیا ہے اور خود اپنی اصلاح کےلئے کن امور کی ضرورت ہے؟ (۵) مسلم پرسنل لاء بورڈ نام کا فورم کن افراد اور طبقات پر مشتمل ہے اور اس کی اعتباریت کیا ہے؟ محمد ادریس الرحمٰن متعلم علوم عالیہ دارالعلوم رحیمیہ بانڈی پورہ کشمیر مسلم پرسنل لاء......ہلال و حرام میں امتیاز کا نظام     جواب:۔ انسان کی عائلی زندگی(Family Life) کی بنیاد نکاح پر ہے پھر جب ایک مرد اور عورت کا نکاح ہوتا ہے تو دونوںپر ایک دوسرےکے حقوق اور فرائض لازم ہوتے ہیں۔ اس رشت

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔۔ قسط 83

   ٹور آپرویٹر نے ہمیں رات کو ہی فرداً فرداً اطلاع دی تھی کہ کل نماز ظہر ادا کرنے کے فوراً بعد مدینہ منورہ بذریعہ گاڑی روانہ ہونے کا پروگرام طے ہے، اس لئے اپنا سامان وغیرہ باندھ کے تیاری کی حالت میں رہیے ، براہ کرم کوئی تاخیر نہ کریں۔ میں نے محسو س کیا کہ کعبے سے فراق وجدائی کے اعلان سے سب غم زدہ ہوگئے، مسکراہٹیں دھیمی پڑ گئیں ، اتنے دن سے ہنسی مذاق کی جو بے تکلفی ایک دوسرے سے ہوئی تھی ، وہ ماند پڑ گئی، البتہ دعاؤں میں رقت پیدا ہوئی، نمازوں میںخشوع وخضوع کی کیفیت درآئی، آنکھیں آنسوؤں سے ڈبڈبائیں، حزن وملال سے چہروں کی رنگت زرد مائل ہوگئی کیونکہ کعبے کو الوداع کہنا کوئی معمولی بات نہ تھی۔       قیامِ مکہ کے آخری دن ہمارے قافلے کے اکثر ساتھی تہجد کی اذان سے پہلے ہی مطاف میںاللہ کے حضور دھرنا مارے بیٹھے تھے ۔ کہیوں کے بارے میں سنا وہ رات عشاء کے بعد ہوٹ

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 خودکشی، انسان کا اپنا عمل سوال: احادیث میں آیا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے قیامت تک آنے والے ہر انسان کی مقدر طے کر رکھی ہے۔ انسان کب پیدا ہوگا، کہاں پیدا ہوگا، کیسے پیدا ہوگا، کب شادی ہوگی، کہاں ہوگی، کس کے ساتھ ہوگی، کب وفات ہوگی اور موت کیسے ہوگی، سب کچھ طے ہے، تو آپ بتا دیجئے کہ اگر کسی انسان کی موت اللہ نے خودکشی کرنے کی وجہ سے لکھی ہوگی، جبکہ خودکشی کو حرام قرار دیا گیا ہے، تو اس میں خودکشی کرنے والے کا کیا قصور ہے؟ بلال احمد ڈار  مانو حیدرآباد   جواب: خودکشی کرنا سخت ترین حرام کام ہے۔ حضرت نبی کریم ؐ کا مبارک ارشاد ہے کہ خودکشی کرنے والا قیامت تک اُسی عذاب میں مبتلا رہے گا جس آلے سے اُس نے خودکشی کی ہو۔ حضرت خباب بن الارث ایک سخت ترین جسمانی تکلیف میں مبتلا تھے اور اس سخت ترین اذیت کی وجہ سے بار بار دربارِ رسالت (ﷺ) سے انہوں نے استدعا کی کہ خودک

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!قسط 82

   میں نے اوپر کی سطور میں کہیں مکہ میوزئم کی سر سری بات چھیڑی تھی۔اس پر اپنے ایک مکرم و  مشفق دوست نے مکہ میوزئم کے بارے میں مزید معلومات قارئین کو دینے کی قابل قدر تجویز لکھ بھیجی۔ ہمیںاس میوزئم کی مختصر سی سیر مکہ معظمہ میں کپوارہ کشمیر کے ایک مدرس جناب معراج الدین صاحب نے کرائی۔ انہوں نے ایک دن طے شدہ پروگرام کے مطابق بعدازحج ہم چند ساتھیوں کو اپنی گاڑی میں بٹھا یا اور از راہِ کرم یہ میوزیم دکھایا۔ میوزئم میں تاریخی نوعیت کے بہت سارے نوادرات نمائش کے لئے رکھے گئے ہیں، جن میں خصوصی طور دو اہم یادگاریں آنکھوں کو تراوت بخشتی ہیں : اول جامع قرآن حضرت عثمان غنی ذی النورین رضی اللہ تعالیٰ وجہہ کا تیار کردہ نسخہ  ٔ قرآن ( جس کی فوٹو اسٹیٹ کاپی میوزئم میں ہے ) جسے آپ ؓ نے اپنے دورِ خلافت میں تیارکروایا تھا ، دوم ۶۵؍ ہجری میں حضرت عبداللہ بن زبیر رضی اللہ تعالیٰ عنہ

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

مصنوعی بال لگانا حرام    سوال:آج کل بہت سارے لوگ ، جن کے سر سے بال گر گئے ہوں، نقلی بال سر پر لگاتے ہیں ۔ س کی ایک صورت "WIG" ہے۔ یہ بالوںکی ایک ٹوپی نما کیپ ہوتی ہے ۔ اب سوال یہ ہے کہ یہ مصنوعی بال لگانا جائز ہے یا نہیں ؟ اور اگر لگائے گئے ہوں تو ان پر مسح کرنا صحیح ہوگا یا نہیں؟ اور اسی طرح غسل میں اگر اس ٹوپی یا مصنوعی بالوں کو ہٹائے بغیر غسل کیا جائے تو وہ غسل ادا ہوگا یا نہیں ؟ شوکت احمد …پٹن  جواب:-مصنوعی بال چاہے انسان کے بال ہوں یا جانوروں کے بال ہوں ۔ یہ ہر قسم کے بال لگانا سخت منع ہے ۔حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بال جوڑنے والے اور بال لگوانے والوں پر لعنت فرمائی ہے ۔ (بخاری ومسلم)۔ ایک خاتون دربارِ رسالتؐ میں غرص کیا کہ میری بیٹی کے سر کے بال جھڑ گئے ہیں ۔ اگر اُس کو نقلی بال نہ لگائوں تو ہوسکتاہے کہ اُس کا ہونے والا شوہر

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔قسط 81

 مکہ معظمہ کی رحمتوں اور سعادتوں سے وداع لے کر مدینہ منورہ کی  راحتوں اور فرحتوں میں منتقل ہونے کی گھڑیاں جوں جوں نزدیک آگئیں ،شادی اور غمی کا ایک عجیب سا احساس دل کی ہر دھڑکن اور دماغ کی ہر جنبش پر یکایک چھا گیا۔ یہ احساس ِدروں کبھی آنسو بن کر آنکھوں سے پگھلتا اور کبھی دل میں خوشی کی تاریں چھیڑ کر نغمۂ حیات بنتا ۔ کعبہ مشرفہ سے بچھڑنے کاغم روضۂ پاک سے گلے ملنے کی شادمانی ۔۔۔ میں سمجھتا ہوں یہ ہردو کیفیات ویسی ہی ہوتی ہیں جیسے ایک بچے کو اس کے دادیہال اور نانیہال کا لاڈ پیار بیک وقت اپنی جانب کھینچتا رہتاہے یا جیسے ایک دُلہن مائکے سے رخصت لیتے ہوئے جہاںاپنے پیاروں سے جدا ہونے کے رنج میں آنسوؤں اور ہچکیوں میں ڈوب جاتی ہے ، وہاں سسرال جانے کی خوشیاں اُس کے دل کے لئے تسلیت اورجگر کو فرحت کا سامان بنتی ہیں۔ بہ نظر غائر دیکھاجائے تو مومن کی زندگی کا سارا سفر ہی شیطان سے بچھ

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:۔ عام طور پر مسجدوں میں اقامت کہنے پر جھگڑا ہوتا ہے اور کہا جاتا ہے کہ جو اذان کہے وہ تکبیر بھی کہئے گا کیا ایسا کرنا درست ہے؟ سوال:۔ بیک وقت کئی اذانوں کا جواب کس طرح دیاجائے اگر کسی نماز کے وقت کئی مسجدوں سے ایک ساتھ اذان کی آواز آنے لگے تو ایسی صورت میں کس مسجد کی اذان کا جواب دیا جائیگا؟ سوال: اگر کوئی شخص اکیلے نماز پڑھے تو کیا ایسے شخص کیلئے اذان اور اقامت کہنا درست ہے یا نہیں؟ سوال: اگر وقت سے پہلے اذان دی جائے تو کیا اذان کا اعادہ کرنا دست ہے یا نہیں کیونکہ اکثر جگہ میں نے ایسا ہی پایا ہے کہ وقت سے پہلے اذان دے دیتے ہیں۔ کیا ایسا کرنا صحیح ہے ؟ سوال: کیا بغیر وضو کے اذان دے سکتے ہیں۔ اگر دی جائے تو درست ہے یا نہیں؟ سوال:۔ ایک موذن کا دومسجدوں میں الگ الگ اذان پڑھنا کیسا ہے؟ برائے کرم ان تمام سوالات کا مفصل جواب دیا جائے کیونکہ اکثر لوگوں میں یہ تمام چ

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!..قسب ۔۔78

  مقاماتِ حج کی زیارت سے فارغ ہوکر ہماری گاڑی واپس حرمِ کعبہ کی جانب رواں دواں ہوئی۔ اپنی اپنی ایمانی بساط اور روحانی احوال کے مطابق تمام زائرین مقاماتِ حج کے نقش ونگار دل کے تہ خانے میں اُتارکر اور ان کی ابدی رعنائیاں آنکھوں میں بساکراس دنیائے بسیط کے بارے میں زیادہ سے زیادہ ملتانی گائیڈ سے معلومات کا ذخیرہ مستعار لیتے رہے،مگر شوق کا پنچھی زیارات و مقدسا ت کے روح پرورفضاؤں میں پر کشاںرہا، ان کی جاذبیت و علویت پر واری ہوتارہا، اس کی رَگ رَگ میں ایک ہی تمنا جوش مارتی رہی اے کاش زمانے کی گردش آنکھ جھپکنے کی دیر میں بابرکت و نورانی موسم ِحج لائے کہ میںان مقدسات کی وسعتوں میں اُڑانیں بھروں ، ان میں کھوجاؤں، چہکوں پھدکوں ، ان کی بلائیاں لوں، ان کے فیضان سے اپنے کاشانۂ قلب میںایمان واَمان سے بھردوں ، ان سے روح کی کمائیاں کر کے دل و نگہ کی دنیا کے بازارمیں لٹا دوں۔   م

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال: آج کل شہر و دیہات میں شادیوں کا سیزن جاری ہے۔ ہماری شادی بیاہ کی تقاریب میں جہاں درجنوں بلکہ سینکڑوں خرافات سے کام لیا جاتا ہے وہاں ایک انتہائی سنگین بدعت پٹاخوں کا استعمال ہے۔ شام کو جب دولہا برات لے کر اپنے گھر سے روانہ ہو جاتا ہے تو وہاں پر اور پھر سسرال پہنچ کر پٹاخوں کی ایسی شدید بارش کی جاتی ہے کہ سارا محلہ ہی نہیں بلکہ پورا علاقہ لرز اُٹھتاہے اور اکثر لوگ اسے فائرنگ اور دھماکے سمجھ کر سہم جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ بچوں، بزرگوں اور عام لوگوں کو پٹاخے سر کرنے سے جو انتہائی شدید کوفت اور پریشانی لاحق ہوجاتی ہے وہ ناقابل بیان ہے۔شرعی طور براہ کرم اس معاملے پر روشنی ڈالیں۔ خورشید احمد راتھر شادی بیاہ پرپٹاخوں کا استعمال غیرشرعی جواب:شادیوں میں پٹاخے  سر کرنا اُن غیر شرعی اور حرام کاموں میں سے ایک سنگین و مجرمانہ کام ہے جو طرح طرح کی خرابیوں کا مجموعہ ہے اورشادیوں

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!..قسط۔۔77

  ہماری گاڑی کا رُخ مزدلفہ کی جانب تھامگر شوق کا پنچھی ابھی عرفات کے دلآویز مناظر میں کھو یا سا تھا ۔ یہ جاذب ِ نظر مناظر ہوتے ہی ایسے ہیں کہ ان سے ایک ہاتھ میدانِ عرفات کی شان دوبالا ہوتی ہے اور دوسرے ہاتھ ذرا گہرائی سے دیکھئے تو یہ اجتماع میدان ِ محشر کا مثیل لگے گا ۔ شوق کا پنچھی گزرے زمانوں کے اُن ایام کے ادھیڑبُن میں بھی تھا جب عرفات میں دورِ حاضر کی طرح جدید ترین سہولیات کا وہم وگمان میں بھی تصور نہیں کیا جاسکتا تھا۔ یہاں کی ریتلی زمین دوپہر کی چلچلاتی دھوپ میں گرم تانبے کی طرح تپ جاتی اور بر ہنہ سر و احرام پوش ضیوف الرحمن ( اللہ کے مہمان یعنی حاجی صاحبان) لُو کی ناقابل برداشت حدت و تپش سے بے نیاز اللہ سے کسی چشمہ شاہی کا آب ِ زُلال نہیں مانگتے بلکہ اپنے کپکپاتے ہاتھوں، لرزتے ہونٹوں اور بر ستی آنکھوں سے اپنی بخشش ومغفرت اور جہنم کی آگ سے نجات کی دعائیں کرتے، اللہ سے منت

بعداز عید

گزشتہ دنوں مسلمانان عالم عید الاضحی اس بے چارگی کے عالم منارہے ہیں کہ چاردانگ عالم میںان پر ظلم کے پہاڑ توڑ ے جارہے ہیںاوران کاخون بے دریغ بہایاجارہاہے۔ کشمیرمیں افسپا کے حمایت یافتہ وردی پوش ، فلسطین میںصیہونی فوجیں اوربرماکی سفاک فوج روہنگیائی مسلمانوں کوذبح کررہی ہیں۔یہ بات الم نشرح ہے کہ امریکہ اوراس کاابلیسی اتحاد اوراس کی پرودہ جنونی حکومتوں کی قاتل اورسفاک فوجیںمقبوضہ مسلمان ریاستوں میںعرصہ سے قتل عام جاری رکھی ہوئی ہیں ۔اسی کا شاخسانہ ہے کہ کشمیرمیں ننگی بربریت، فلسطین میںیہودیوں کے ظلم و ستم اوربرمامیںبرمائی حکومت کی کھلی سفاکیت پر دنیائے کفران کادرپردہ ساتھ دے رہاہے ۔ کشمیر میں ظلم کی انتہا کر دی گئی ہے۔ برما میں مسلمانوں کے خون سے ہولی کھیلی جا رہی ہے۔ہندوستان بھر میں آج پہلے سے زیادہ مسلمان زیرعتاب ہیں ۔ عراق کے اندر امریکا کی لگائی آگ ٹھنڈاہونے کانام نہیں لے رہی اوراقتدا

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:۱-قربانی کس پر لازم ہے اور جس پر قربانی لازم نہ ہو اگر وہ قربانی کرے گا تو کتنا ثواب ہوگا او رجس پرقربانی لازم ہو وہ نہ کرے تو اس کے لئے شریعت کا کیا حکم ہے ؟ سوال :۲-آج کل بہت سے دینی ادارے بھی اور فلاحی امدادی یتیم خانے قربانی کا اجتماعی نظام کے لئے اپیلیں کرتے ہیں ۔کیا اس طرح قربانی ادا ہوجاتی ہے ؟ اگر کسی کو اس طرح کے ادارے سے قربانی کرنے کی ضرورت ہوتو اس بارے میں کیا حکم ہے اور اگرکوئی بلاضرورت صرف رقم کم خرچ کرنے کے لئے ایسا کرے تو کیا حکم ہے ؟ عبدالعزیز خان قربانی کن پر واجب ؟ جواب: جس شخص کے پاس مقدارِ نصاب مال موجود ہو اُس پر قربانی واجب ہے ۔ نصاب 612گرام چاندی یا اُس کی قیمت ہے۔ اس کی قیمت آج کل کشمیر میں ساڑھے پینتیس ہزار روپے ہے ۔اب جس شخص کے پاس عیدالاضحی کے دن صبح کو اتنی رقم موجود ہو تو اُس شخص کو شریعت اسلامیہ میں صاحبِ نصاب قرار دیا گیا ہے ۔ ایسے

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔۔ قسط 76

  حدودِ حرم سے باہر واقع جبل الرحمۃ کے قرب وجوارمیں داخل ہوتے ہی زائرین کی دیدہ ٔ شوق مسجد نمرہ سے ٹکراتی ہے ۔ نمرہ اصل میں ایک پہاڑی کانام ہے جس کی مناسبت سے اس تاریخی مسجد کانام مسجد نمرہ ہے۔ تاریخ اسلام بتلاتی ہے کہ حج الوداع کے موقع پر یومِ عرفہ کو محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یہی پرخیمہ زن ہوئے تھے۔ زوال بعد آپ ؐ قریب ہی وادیٔ عرنہ نامی نشیب میں تشریف لے گئے اور اونٹنی پر سوار ہوکر اپنا مشہور خطبہ ٔ حج دیا ، بعدازاںجمع بین الصلوٰتین کی امامت وپیشوائی فرماکر ظہر وعصر یہیںادا کیں۔ نما ز سے فراغت کے بعد آپ ؐ جبل الرحمۃ کی چٹانوں کے قریب ہوکر قبلہ رو ہوئے اور غروبِ آفتاب تک دربار الہٰیہ میں اشک باردعاؤںمیں مشغول رہے۔ جس مقدس مقام پر آپ ؐ نے خطبہ ٔ حج دیا اور نمازیں اد افرمائیں ، وہاں آج ایک خانۂ خدا ہے جو مسجد ابراہیم ، مسجد عرفہ اورمسجد نمرہ کے مختلف ناموںسے موسوم ہے

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:۔ وتر کی نماز کے بعد دو رکعت بیٹھ کر پڑھنے کا ثبوت حدیث میں ہے یا نہیں ، اگر ثبوت موجود ہے تو اُس کو حوالہ ضرور دیں؟ محمد یوسف خان وتر کے بعد دو رکعت نماز پڑھنا ثابت جواب:۔ وتر کی نماز کے بعد دو رکعت نما زپڑھنا احادیث سے ثابت ہے اور یہ دو رکعت بیٹھ کر پڑھنا بھی ثابت ہے اور کھڑے ہو کر پڑھنا بھی ثابت ہے۔ مسند احمد کے حوالے سے مشکوٰۃ شریف میں حدیث ہے ، حضرت ابو امامہ ؓسے روایت ہے کہ حضر ت نبی کریم ﷺ وتر کے بعد دو رکعت بیٹھ کر پڑھتے تھے اور اُن دو رکعت میں سے پہلی رکعت میں سور زلزال اور دوسری رکعت میں سورہ کافرون پڑھا کرتے تھے۔ مسلم شریف میں حضرت عائشہ ؓ سے مروی ہے کہ اُن سے پوچھا گیا کہ حضرت نبی کریم ﷺ رات کو کتنی رکعات پڑھا کرتے تھے۔ تو حضرت عائشہ ؓ نے فرمایا کہ آپ ﷺ تیرہ رکعات پڑھتے تھے۔ پہلے آٹھ رکعات پڑھتے تھے۔ پھر تین وتر پڑھتے تھے پھر دو رکعت بیٹھ کر ادا فرمات