تازہ ترین

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

(۱) صدقہ فطر کیاہے؟ (۲) اس کی کیا مقدارہے؟ (۳) اور اس کی ادائیگی کا کیا وقت ہے؟ (۴) جواور گندم میںکیا فرق ہے؟                        شوکت احمد   صدقہ فطر،مقداراور وقت ِ ادائیگی   جواب: ایک مسلمان جب شوق و جذبہ سے روزہ رکھتا ہے تو وہ محض اللہ کی رضا کے لئے دن بھر کی بھوک و پیاس برداشت کرتا ہے۔ ممکن ہے اس عظیم عمل میں کوئی کمی رہی ہو تو اس کی تلافی ضروری ہے تاکہ روزہ کا عظیم عمل بہتر سے بہتر بن سکے۔ اسی غرض کیلئے صدقہ فطر لازم کیا گیا چنانچہ حدیث میں صدقہ فطر کے متعلق ارشاد ہوا ہے کہ یہ غرباء کیلئے کھانے پینے کا انتظام اور روزے داروں کے لئے روزوں کی نقائص کی تلافی ہے۔ صدقہ فطر کی ادائیگی میں کشمش، کھجور، جو کا آٹا یا اس کا ستو پنیر کی مقدار ایک صاع اور گندم یا اس کے آٹے کے مقدا

عالمی یوم القُدس

 سرزمین فلسطین لہولہاں ہے،ظالم و جابر صہیونی طاقتیں اسرائیل کے زیر قیادت اس وقت غزہ پرآتش وآہن برسارہی ہیں ۔ تادم تحریر چھ سو سے زائد فلسطینی جاں بحق ہوئے ہیں، شہداء میں سو کے قریب بچے بھی شامل ہیں ۔ تمام مسلم حکومتیں جمود کی لحاف اوڑھے تماشہ بینی کا کردار ادا کر رہی ہیں ۔ شیطان بزرگ ا مریکہ اور اس کے دم چھلے اور اتحادی کھلم کھلا اسرائیل کی پیٹھ ٹھونک رہے ہیں۔ ظلم وجبر کے ان اندھیاروں میںمسلمان قبلہ ٔاول کی بازیابی اور اہل فلسطین کی مبنی بر حق جدوجہد کی حمایت اور مظلومین کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور ہر سال دنیا بھرمیں’’یومِ قدس‘‘ مناتے ہیں۔ یوںقبلہ اوّل کی بازیابی اور آزادیٔ فلسطین کے لئے سرگرم حق پرست سرفروشوںا ور اسلامی مجاہدوں کے لئے ’’یوم قدس‘‘ حقیقت میںاس عزم ِمحکم کا اعادہ ہے کہ جب تک اسرائیل کو نیست و نابود کرکے بیت المقدس ک

صدقۃ الفطر۔۔۔

صدقۃ الفطر (افطار کا صدقہ) فقہ کی ایک اصطلاح ہے ، شریعت میں اس سے مرادوہ مال ہے جورمضان  کے مبارک موقع پر صائم کی جانب سے کسی مستحق فرد کو صلہ رحمی کے طور پر دیا جاتاہے۔اس کے مختلف نام احادیث اور فقہ کی کتابوں میں ذکر کئے گئے ہیں۔چنانچہ صدقۃ الفطر،زکواۃ الفطر، زکواۃ الصوم ، زکاۃ الأبدا ن ،صدقۃ رمضان ،صدقۃ الرئووس وغیرہ وغیرہ۔ جس طرح نماز میں فرائض کی تکمیل کے لئے سنتیں مقرر کی گئی ہیں، اسی طرح روزہ کی تکمیل کے لئے شریعت اسلامیہ میں صدقۃ الفطر کا تعین کیا گیا ہے ۔روزہ  کے دوران جو کوتاہیاں ہم سے ہوتی ہیں یا ہماری بدنی عبادت(روزہ) کی جو کمیاں روہ جاتی ہیں ، اُن کی تلافی اس مالی عبادت (صدقۃ الفطر) سے بہت حد تک ہوجاتی ہے ۔  صدقہ ٔ فطر کس پر واجب ہے :۔ صدقہ فطر ہر عاقل بالغ مرد عورت ،بچہ و جوان مسلمان پر واجب ہے  ۔گھر کے مستطیع افراد اپنے اپنے صدقات الفطر خو دادا کر

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

اعتکاف کے اہم مسائل    اْجرت پر اعتکاف کرانا س:بعض جگہوں پر کسی اجنبی مسافر کو بستی والے اْجرت پر اعتکاف میں بٹھاتے ہیں کیا اس طرح سے یہ مبارک سنت ادا ہوتی ہے؟ ج:         کسی بھی اعتکاف کرنے والے شخص کو اعتکاف کی اْجرت لینا، اور اْسے اعتکاف کی اجرت دینا دونوں حرام ہیں۔ اس سے نہ تو خود اْس شخص کا اعتکاف ادا ہوگا۔ اور نہ اْس محلہ یا بستی کے لوگوں سے اعتکاف کا حکم ساقط ہوگا۔ اعتکاف سنت کفاریہ ہے۔ جس کے معنیٰ یہ ہیں کہ کوئی ایک شخص بھی اگر اخلاص سے ، بلاکسی دنیوی لالچ کے محض اللہ کی رضا کیلئے اعتکاف کرے گا تو یہ سنت سب کی طرف سے ادا ہوجائے گی۔ لیکن جب اْجرت لینے دینے کا معاملہ ہوگا تو اس سے اعتکاف کی سنت ، ادا ہونا توکئی گناہ ہونا بھی یقینی ہے اور اس محلہ پر ترک اعتکاف کا وبال بھی لازمی ہے۔ س: فرصت والے بوڑھے بھی خود اعتکاف میں بیٹھنے کو عار مح

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔۔۔قسط 66

   غار ِحرا میں محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے روبرو غیر متوقع طور جبرئیل علیہ السلام کی جلوہ نما ئی اور اللہ کی جانب سے سورہ  ٔ علق کی پانچ آیاتِ قرآنی کا عطیہ تاریخ ایک انقلاب آفرین باب رقم کر گیا ۔ قبل ازیں آپؐ کو روح الامین ؑسے کوئی شناسائی تھی نہ منصب ِنبوت سے آشنا ئی، نہ اپنے اوپر خدائے مہربان کی خصوصی عنایات والتفات کے مطالب و معانی جانتے تھے ۔ گوشہ ٔ تنہائی میں معزز فرشتے کی جانب سے پانچ آیاتِ قرآنی از دل ریزد بر دل خیزد کے مصداق آپ ؐ کے لوحِ قلب پر مرتسم ہوئیں ۔ اقراء کا خدائی فرمان جاہلیت و لاعلمیت ، تشکیک و لاادریت کے خلاف اعلان ِ بغاوت تھا، یہ ہمہ گیر انقلاب اسلامی کا دستورالعمل تھا، یہ علم وفہم کی شاہ کلید تھی، یہ آگہی وعرفان کی سدابہار قندیل تھی، یہ افراد واقوام کی جملہ صلاحیتوں کو تعمیروترقی کی طرف موڑنے کا اشارہ تھا ،یہ شیطانی شکنجوںسے انسا

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:۔ ہمارے یہاں لوگ رمضان المبارک میں زکوٰۃ ،صدقات ادا کرتے ہیں اور اس سب کی بناء پروہ اپنے آپ کو اجر کا مستحق سمجھتے ہیں۔ اس سلسلے میں چند ضروری اور اہم مسائل کا حل فرما دیں تاکہ امت مسلمہ کی یہ مالی امداد انکے اوپر لازم زکوٰۃ و صدقات ان کیلئے ذریعہ نجات بن سکے۔ (۱) زکوٰۃ کے لازم ہونے کیلئے سونے کا کیا نصاب ہے؟ (۲) زکوٰۃ کے لازم ہونے کیلئے چاندی کا کیا نصاب ہے؟ (۳) سونے اور چاندی کے علاوہ دیگر اموال کا نصاب کیا ہے اور ان پر زکوٰۃ کے لازم ہونے کیلئے کیا کیا شرائط ہیں؟ (۴) زکوٰۃ کا مصرف کیا ہے( یعنی زکوٰۃ کن مدوں پر خرچ کی جائے)؟ (۵) کیا زکوٰۃ تعمیرات( چاہئے مسجد کی تعمیر ہو یا درسگاہ کی تعمیر ہو یا کسی فلاحی ادارے کی تعمیر ہو یا سڑک وغیرہ کی) میں خرچ کرنا جائز ہے ؟ فیاض احمد گنائی ساکن درد پورہ لولاب متعلم دارالعلوم رحیمیہ بانڈی پورہ ، درجہ ہفتم عربی

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!قسط 65

  سید المرسلین صلی اللہ علیہ وسلم حیاتِ طیبہ کے اُس پڑاؤ پر ہیں جہاں سے بالخصوص انبیائی شخصیات کا سن ِکمال شروع ہوتا ۔ ا ن میں اوصافِ ِحمیدہ مہ نیم روز کی طرح جلوتیںدکھانا شروع کرتے ہیں اور ظاہری حسن، باطنی وجاہت، فہم وفراست ،بالغ نظری، اخلاقِ فاضلہ، جذبات پر قابو ، خوب وناخوب کی پہچان ، دنیا کی بے ثباتی کا احساس ، اللہ سے لو لگانا ان کی فطرت ثانیہ بنتی ہے ۔انہی اوصاف کی تاثیرسے وہ ایک ہمہ گیر انقلاب بپاکر تے ہیں کہ تاریخ کا رُخ بدل جاتا، انسا نی زندگیوں کی کایا پلٹ ہوجاتی ہیں، بگڑی تقدیریں سنور جاتی ہیں ، زمانے کے رنگ ڈھنگ اُلٹ جاتے ہیں ، تہذیبوں کا بگاڑ کافور ہوجاتاہے،انسانیت کو حیاتِ نو مل جاتی ہے۔ ان کے دم قدم سے معاشرت ومعیشت،سیاست واخلاقیات، شجاعت و عدالت کا د ستور آسمانی ہدایت کے زیر سایہ ترتیب پائے تو ایک نیا انسان اور ایک نئی دنیا ظہور پذیر ہوتے ہیں ۔ سنت ِالہٰیہ کے مطا

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:۱-ماہ مبارک کا نزول ہوتے ہی مسلمان مرد وزن نوافل نمازوں کا بھرپور اہتمام کرتے ہیں۔کیا ہم نوافل نمازوں کے بجائے قضاء￿  شدہ نمازیں نہیں پڑھ سکتے ؟ اور جب دیکھا جائے تو ہزار میں سے ایک فرد ایسا ہوگا جس نے واقعی دس سال کی عمر سے نماز پنجگانہ پابندی کے ادا کی ہو۔ سوال:۲-اکثر مشاہدے میں آیاہے کہ اس بابرکت مہینے میں لوگ اذان فجر سے پہلے نوافل کے علاوہ نماز تہجد بھی پابندی کے ساتھ ادا کرتے ہیں جب کہ ان میں سے اکثریت ایسے حضرات کی ہوتی ہے جو غیر رمضان میں نماز فجر کیا نماز عشاء  کے لئے بھی مسجد میں نہیں آتے۔  برائے کرم آپ بتائیں کہ مسلسل نماز تہجد اداکرنے سے یا کوئی بھی نفلی کام مسلسل کرنے سے ہم پر فرض تو نہیں بنتا۔ اگر بنتاہے تو کتنے دنوں تک کوئی بھی نفلی امر اپنانے سے وہ عمل ہم پر فرص بن جاتاہے ؟ سوال :۳-کیا روزے داروں کی وہ شخص ،جو خود روزہ دار نہ ہو، امامت

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!۔۔ قسط 64

 ش   م   احمد  غارِحرا کتنا خوش نصیب ہے کہ شاہ ِ کون ومکان صلی اللہ علیہ و سلم کی نشست گاہ بنا ، رمضان المبارک کی سعادتیں، رحمتیں، خوشبوئیں، عنایتیں یکجاہوکر اسے بقعہ ٔ نور بنارہی ہیں جب کہ نور گہۂ محبت میں ہادی اکرم ؐ اللہ سے لو لگائے اور عرفان ِ نفس و طہارتِ فکر کی جملہ قوتیں مجتمع کر کے عالم ِانسانیت کی ہمہ جہت تاریکیاں مٹانے کاعزم بالجزم کئے ہوئے ہیں ۔ اس مقامِ حسن ونور اور فضائے طہور تک آپ ؐ کواللہ کی جوش ِ رحمت کھینچ لائی کیونکہ اللہ کوبگڑی دنیا کے گم گشتہ انسانوں کو سرور کائناتؐ کی وساطت سے ہدایت اسلام دینی ہے ۔ اللہ کو اپنے شاہ کار مخلوق سے اُس ماں سے کھربوںگنا زیادہ محبت ہے جو اپنی اولاد کی بھلائی اور خیرخواہی میں دن کاچین رات کاآرام خوشی خوشی گنوا دیتی ہے۔ اللہ نہیں چاہتا کہ یہ گار گاہ ہ ہست وبود اس کی رحمت ورافت سے تہی دامن رہے ، پاکی وطہارت سے محر

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 روزوں کے متفرق مسائل سوالات (۱) گردوں میں پتھری ہو تو کیا روزہ رکھ سکتے ہیں؟ (۲) روزوں کے بدلے فدیہ کس فرد پر لاگو ہوتا ہے؟ (۳) معدے میں تیزابیت(Acidity)ہو جس کی وجہ سے دل میں جلن محسوس ہوتی ہے( Heart Burn) کیا اس صورتحال میں روزہ رکھ سکتے ہیں؟ (۴) جسم کے اندرونی حصہ میں السر (ulser)ہے، جس کی وجہ سے(Black Motion)ہوتی ہے ، کیا روزہ رکھ سکتے ہیں؟ (۵) جو ماں بچے کو دودھپلاتی ہو روزوں کے متعلق ان کو شریعت کیا حکم اور کیا گنجائش دیتی ہے؟ (۶) کیا ہم روزوں کے درمیان اندام نہانی میں وہ دوائی رکھ سکتے ہیں جس کا مقصد لیکویریا کا علاج ہوسکتا۔ (۷) استھما کی بیماری میں Inhaler کا استعمال کرنے سے روزہ متاثر ہوتا ہے؟ (۸) کیا روزوں میں دریا میں تیرنے کی اجازت ہے؟ (۹) حاملہ عورت روزہ رکھ سکتی ہے یا نہیں؟ (۱۰) تمباکو نوشی ختم کرنے کے لئے رمضان بہترین موق

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں! قسط63

    کعبہ مقدسہ سے چند فرلانگ دور منیٰ اورعرفات سے گزرتے ہوئے بائیں جانب غار ِحرا( بائبل کا فاران ) اپنی فلک بوس چٹانوں سے ہمارا استقبال کر رہاتھا ۔صدیوں سے سرد وگرم موسموںکا مقابلہ کرنے والے اس سنگ و ریگ کے گلشن ِنوبہار کا دیدار کر کرکے بھی شو ق کا پنچھی سیر نہیں ہورہاتھا ۔ میں سوچ سمندر میں مسلسل ڈوب کر تعظیم ،تحیر اور تجسس سے خود کلامی میں لگا: تو یہی ہے وہ مقامِ اقدس جہاں محمد بن عبداللہ کا تعارف پہلی بارمحمد الرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ہو ا۔ قربا ن جایئے کہ اللہ خودبوساطت حضرت جبرئیل علیہ السلام یہ تعارف کراتا ہے۔ خالق ِارض وسماء اولوالعزم فرشتے کو ذمہ داری سونپ دیتا ہے کہ حرا میں اُترکر مقصودِ کائنات ،نبی ٔ آخر الزماں، متلاشی ٔ حق ویزداں ؐ  کو میرا سندیسہ پہنچاؤ کہ انفس وآفاق کی جن ابدی صداقتوں کی تلاش ہے، جن گتھیوں اور سوالات کا جواب چاہیے ، جن مسائل ِ حیا

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

اولاد اور زوجہ کاخرچہ کی تمام ذمہ داری شوہرپر س:- کیا عورت کی خودکمائی ہوئی جائداد شوہر کے نام پر رکھنی جائز ہے کہ نہیں ۔ اگر دونوں میاں بیوی کماتے ہوں تو بچوں کے بنیادی ضروریات پوراکرنا کس کا فرض بنتاہے ؟ ارجمند اقبال…سرینگر جواب:-اولاد کے تمام خرچے باپ پرلازم ہوتے ہیں چاہے زوجہ یعنی بچوں کی ماں کے پاس کافی جائیداد اور رقم ہو ۔ اورچاہے وہ خود بھی کماتی ہولیکن بچوں کانفقہ شریعت اسلامیہ نے بھی اور قانون میں بچو ں کے باپ پر ہی لازم ہے ۔اگریہ باپ مالی وسعت کے باوجود ادائیگی میں کوتاہی کرے تو یہ اولاد کی حق تلفی کرنے والا قرارپائے گا اور اگر باپ اپنی مالی وسعت کے بقدر خرچ کررہاہے مگر آج کے بہت سارے خرچے وہ ہیں جو صرف مقابلہ آرائی اور تنافس (Competition)کی وجہ سے برداشت کرنے پڑتے ہیں ۔ وہ خرچے اگرباپ نہ کرے تو وہ نہ گنہگارہوگا اور نہ ہی حقوق العباد کے ضائع کرنے والا قرا

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!

  نورو نکہت میں ڈھلے کاشانۂ نبوتؐ میں چند خوش نصیب ساعتیں گزارکر اور مسجدالحرام کے کتب خانےمیں کچھ لطف و سرود بھرے لمحات بِتا نے کے بعد شوق کا پنچھی اس آرزوئے ناتمام سے تڑپ اُٹھا اے کاش خوشبوؤں میں ڈوبے اُن گلی کوچوں کے بوسے لوںجن پر بنی  ٔ محترم صلی ا للہ علیہ وسلم کے پائے مبارک پڑے اور جن کی آغوش میں ولادت با سعادت سے لے کر بعداز رضاعت تک آپ  ؐ کا معصومانہ ویتیمانہ بچپن گزرا، حلف الفضول کے معاہدے میں ذوق وشوق سے شرکت ہوئی ، محنتانہ کے عوض اہل ِمکہ کے چوپایوں کا چرواہا بنے ، اُم المومنین حضرت خدیجہؓ کے ساتھ رشتۂ تزویج میں بندھ کردنیا کا پہلا اور آخری خوب صورت ترین دولہا بنے، حجر اسود کو کعبہ شریف میں نصب کر نے کا امن پرور انہ کام کیا ، غارِ حرا میں خلوت نشین ہوکر اللہ سے مدتوں راز ونیاز میں مشغول رہے ، بعثت کے بعد آپؐ کی جلوتیں اور خلوتیں وحی ٔ الہٰی کاپرتو ہوئی

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

شب برات کی فضیلت اور اہمیت سوال :-آج شعبان کا مہینہ چل رہاہے۔ شعبان میں شب برات ایک اہم دن ہے۔ اس شب کے بارے میں کیا فضیلت ہے۔ اس بارے میں حدیثوں میں کیا بتایا گیا ہے۔ یہ احادیث کس درجہ کی ہیں۔ اس شب میں کیا کیا عمل کرنا چاہئے ؟ امت مسلمہ کاطریقہ عمل اس بارے میں کیا ہے ؟ ماسٹر محمدیعقوب میر…سرینگر جواب:-شب برات کو احادث میں لیلہ من نصف شعبان یعنی ماہِ شعبان کی درمیانی شب کہاجاتاہے۔اس کی فضیلت کے متعلق بہت ساری احادیث ہیں۔جن میں سے چند یہ ہیں۔ حضرت معاذ بن جبل ؓبیان کرتے ہیں کہ حضرت نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اللہ جل شانہ شعبان کی پندرھویں رات میں اپنی مخلوق کی طرف خصوصی توجہ فرماتے ہیں۔ پھر اپنی تمام مخلوق (انسانوں)کی مغفرت فرماتے ہیں سوائے مشرک اور کینہ رکھنے والے شخص کے۔ یہ حدیث صحیح ہے۔ یہ حدیث کتاب السن ، صحیح ابن حیان ، مواردالظمٰان، شعب الای

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!قسط61

    آج کی تاریخ میںسائنسی علوم مغرب کی شہ رَگ بنے ہیں ،اہل مغرب کی صبح سائنس کی پرستش سےطلوع ہوتی ہے، دن ٹیکنالوجی کی پوجا میںغروب ہوتا ہے ، رات نئی ایجادات کی بانہوں میںگزر جاتی ہے ۔ بلاشبہ ان کی یہ ساری عرق ریزیاں انسانی دنیا کو جہاں نئی نئی دریافتوں اور سہولیات سے زیر بارِ احسان کر رہی ہیں ، وہیں دجالیت کا روپ دھارن کر کے یہ بم باردو،توپ اور تفنگ کی شکل میں ملکوںاور قوموں کوکچا چبا رہی ہیں ، قبائے ا نسانیت کو تارتار کر رہی ہیں ، پوری دنیا کو مغرب کے علمی تفوق ، غنڈہ گردی اور ہم ہستی کے صنم خانے میں اوندھے منہ جھکارہی ہیں ، مگر کیا فائدہ اس سائنسی ترقی اور ٹیکنالوجی کے عروج کا جو اپنے ساتھ انسانیت کے لئے تنزل اور بحران کی سونامی بھی لایا ہے۔ تاریخ کا آئینہ صاف دکھاتاہے کہ مغرب صدیوںتک سائنس سے خداواسطے بیر رکھنے کے سبب مغرب جاہلیت، علم بیزاری اور پسماندگی کامجموعہ تھا۔ اب

تعمیر سیرت اصلاحِ باطن

زمانہ جتنا بھی آگے بڑھتا جائے گا نوجوانوں کی اہمیت، رول اور حیثیت بھی بڑھتی جائے گی۔ہر زندہ قوم،تحریک اور نظریہ نوجوانوں پر خصوصی تو جہ دیتا ہے کیونکہ یہ سب کو معلوم ہے کہ اقوام وملل کو چلانے ،تحریکوں کو متحرک رکھنے اور نظریات کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کے لئے ہمیشہ نو جواں ہی نمایا ںرول کیا ہے۔نوجواں بلند عزائم کے مالک ہو تے ہیں، جہدمسلسل اور جفا کشی ان کا امتیاز ہو تا ہے ،بے پناہ صلاحیتیں ان میں پنہاں ہو تی ہیں، بلند پرواز ان کا اصل ہد ف ہو تا ہے ، چلینجز کا مقابلہ کر نا ان کا مشغلہ ہو تا ہے۔ شاہینی صفات سے وہ متصف ہو تے ہیں، ایک بڑے ہدف کو حاصل کر نے کے لئے ساحل پہ کشتیاں جلانا کو تیارہوجاتے ہیں،وہ ہوا ئوں کا رُخ موڑنے کی صلا حیت رکھتے ہیں،باطل دوئی پسندہے اور حق لا شر یک ،جیسا عظیم اعلان کر نے سے بھی نہیں کتراتے ۔ میدان کا رزار میں شکست کو فتح میں تبدیل کر نے کی قوت ان میں موجود ہو

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

 سوال: گذارش یہ ہے کہ قرآن کریم بغیر وضو چھونے کی حدیث نقل فرمایئے۔ یہ حدیث کون کون سی کتاب میں ہے اور یہ بتائیے کہ چاروں اماموں میں سے کس امام نے اس کو جائز کہا ہے کہ قرآن بغیر وضو کے چھونے کی اجازت ہے۔ میں ایک کالج میں لیکچرار ہوں، کبھی کوئی آیت لکھنے کی ضرورت پڑتی ہے تو اس ضمن میں یہ سوال پیدا ہوا ہے۔ امید ہے کہ آپ تفصیلی و تحقیقی جواب سے فیضیاب فرمائیں گے ۔ فاروق احمد …لیکچرار گورنرنٹ ڈگری کالج جموں جواب: بغیر وضو قرآن کریم ہاتھ میںلینا، چھونا،مَس کرنا یقینا ناجائز ہے۔ اس سلسلے میں حدیث ہے۔ حضرت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا قرآن کریم صرف باوضو انسان ہی چھوئے۔ یہ حدیث نسائی، دارمی، دارقطنی، موطا مالک صحیح ابن حبان،مستدرک حاکم اور مصنف عبد الرزاق اور مصنف ابن ابی شمبہ میں موجو د ہے نیز بیہقی اور معرفتہ السنن میں بھی ہے۔ شیخ الاسلام حض

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں! قسط60

  مسجد حرام کے اس شاندار کتب خانے میںیہ سوچ کر دل رنجیدہ اور جگر پاش پاش ہوتا ہے کہ مغرب کے کینہ ور اور مشرق میں ان کے پیادے اور دُم چھلے آج اسلام کو دقیانوسیت سے تعبیر کر رہے ہیں اور ہمیں من حیث الامت علم کے دشمن ، عقل ودانش کے حریف ، آگہی کے رقیب، ناخواندگی کے دلدادے ، فرسودگی کے پتلے، ذوقِ تحقیق سے خالی، شوقِ جستجو سے تہی دامن، سائنس میں پسماندہ، ٹیکنالوجی میںصدیوں پیچھے قرار دے رہے ہیں۔ یہ ہمارے حال کی تصویر کشی ہے یا نہیں، اس بحث سے صرف نظر  کر تے ہوئے یہ کہے بغیر چارہ نہیں کہ امر واقع یہ ہے کہ جدید سائنس اور ٹیکنالوجی میں اُمت مسلمہ بہت پیچھے ہے مگر ہمار ادرخشندہ ماضی کینہ وران ِمغرب کی ان دشنام طرازیوں پر ماتھا پیٹتے ہوئے چیختا چلّاتاہے کہ یہی وہ اُ مت ہے جس نے اقراء کی ندائے رُبانی سن کر علم کی کدال اور عمل کا پھاوڑا ہاتھ میں لئے جہل و لاعلمیت کے کوہ وجبل پاش پاش کئ

نزول گاہِ وحی کی مہمانی میں!قسط:59

  مکتبۂ مکہ کے صدر روازے کے بائیں جانب ایک چھوٹے سے بُک سٹال پر مختلف زبانوں میں اسلامی موضوعات پرکتابچے اور سی ڈیززائرین میں مفت تقسیم کی جاتی ہیں ۔ میں نے بھی یہاں سے بعض کتابچے بلا معاوضہ حاصل کئے۔ ’’ا دارہ ٔ امر بالمعروف نہی عن المنکر‘‘کی ان مطبوعات میں ایک فولڈر’’کتب خانہ مکۂ مکر مہ ‘‘ کے زیر عنوان ہے جس میںاس مقدس جگہ کے بارے میں بالاختصار بعض اہم معلومات درج ہیں ۔ لکھا ہے: یہ کتب خانہ شعب ابی طالب کے آغاز میں مسعیٰ(صفا ومروہ کے مابین سعی کی جگہ ) کے مشرق کی جانب واقع ہے۔ اسے شیخ عباس قحطان نے سن ۱۹۵۰ء (بمطابق۱۳۷۰ھ ) میں بنایا تھا۔اس کی سرپرستی وزارتِ شئون اسلامیہ کے ذمے ہے۔ا س میں بہت سی کتب، مخطوطات اور تاریخی نوادرات ہیں۔ یہ دومنزلہ عمارت ہے جس کی کھڑکیاں لکڑی اور رنگ کلیجی ہے جو آغاز ہی سے مکہ کی عمارات کا معروف رنگ رہا

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

نزاعات سے بچنے کیلئے مشترکہ خاندان میں آمدنی اوراخراجات کے معاملات پہلے طے کرنے کی ضرورت  سوال:-ہم دوبھائی ہیں ۔ ایک گھر کا کام اور ٹھیکیداری کرتاہے ۔چھوٹا ملازم ہے ۔ بڑے بھائی نے اپنی بیوی کے ساتھ حج کیا ۔ دوسال پہلے ہم نے علیحدہ ہونے کا مشورہ کیا۔ تقسیم کے وقت چھوٹے بھائی نے حج کا خرچہ دولاکھ روپے بڑے بھائی کے نا م ڈال دیئے۔جورقم اس کے پاس موجود ہے وہ اس سے انکار کرتاہے ۔  اب سوال یہ ہے کہ تقسیم کرتے وقت بڑے بھائی کوحج کا خرچہ الگ سے وضع کیا جائے گایا نہیں اور چھوٹے بھائی کے پاس جو رقم موجود ہے ، و ہ دونوں کا حق ہے یا صرف ایک کا ؟ حبیب اللہ …پٹن جواب:-ایک سے زائد برادران جب ایک ساتھ ایک ہی چولہے سے جڑے ہوئے ہوں تو ضروری ہے کہ وہ اپنی آمدنی اور خرچ کے تمام تمام ضروری اصول پہلے ہی طے کرلیں ورنہ آئندہ قسم قسم کے نزاع اور ظلم وحق تلفی کا اندیشہ یقینی ہ