تازہ ترین

ماہ شعبان اور شب برات کی فضیلت

سرینگر//ماہ شعبان اور لیلۃ البرات کی فضیلت کے سلسلے میں خانقاہِ معلی سرینگر میں میر واعظ کشمیر مولانا ہمدانی آج یعنی سنیچرکو نمازِ مغرب تا نمازِ عشاء وعظ و تبلیغ فرمائیں گے۔ نمازِ عشاء ساڑھے 10بجے ادا کی جائیگی۔رات بھر شب خوانی خطمات المعظمات، دورد و ازکار اور اوراد خوانی کی مجلس آراستہ ہوگی۔  

بلوں کی عدم ادائیگی پر تعمیراتی ٹھیکیداروں کی ہڑتال میں لچک

سرینگر//تعمیراتی ٹھیکیداروں نے ٹینڈروں اور تعمیراتی کاموں کے بائیکاٹ کے بیچ سڑکوں کی مرمت کوبائیکاٹ سے مستثنیٰ رکھتے ہوئے کہا ہے کہ تجارتی و سماجی انجمنوں کی اپیل کے بعد انہوں نے یہ فیصلہ لیاہے۔ٹھیکیداروں نے20اپریل کو گورنر ہاوس چلو کال کو بھی موخر کرنے کا اعلان کیاہے۔ واجب الادا رقومات کی عدم ادائیگی کے خلاف ایک ماہ سے ہڑتال پر بیٹھے تعمیراتی ٹھیکداروں نے جمعہ کو اس وقت اپنے موقف میں لچک لائی،جب انہوں نے سڑکوں کی مرمت کوبائیکاٹ سے مستثنیٰ رکھنے کا اعلان کیا۔ چیف انجینئرنگ کمپلکس راجباغ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے جوائنٹ کانٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی کے لیڈر فاروق احمد ڈار نے کہا کہ تجارتی پلیٹ فارم کشمیر اکنامک الائنس اور سوشو اکنامک کارڈی نیشن کمیٹی کے علاوہ محمد صادق بقال کی سربراہی والی کے ٹی ایم ایف کی اپیل کے بعد انہوں نے یہ فیصلہ لیا۔تاہم انہوں نے کہا کہ ٹھیکدار تعمیراتی کا

بادامی باغ کے متصل علاقوں میں کوڑے کرکٹ کے ڈھیر

سرینگر//بادامی باغ کنٹونمنٹ کے متصل علاقوںمیںگندگی کے ڈھیر سعام شہریوں کیلئے پریشانیوں کا باعث بنی ہوئی ہیں،جبکہ مقامی لوگوں کو خدشہ ہے کہ گرمیوں کے ساتھ کئی یہ بیماریوں کا موجب نہ بنے۔بادامی باغ کنٹونمنٹ کے بٹوارہ،شیوپورہ،سونہ وار اور دیگر علاقوں میں گزشتہ کئی دنوں سے گندگی کے ڈھیر کو کنٹونمنٹ کا متعلقہ عملہ ٹھکانے لگانے میں ناکام ہوچکا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ گزشتہ ایک ہفتہ سے یہ کوڈا کرکٹ سڑک کے کناروں پر موجود کوڈہ دانوں میں ایسا ہی پڑا ہے اور اب یہ کوڈا باہر نکل رہا ہے،جس کے نتیجے میں سڑکیں بھی گندی ہو رہی ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ با قاعدگی کے ساتھ کنٹونمنٹ بورڈ ہر ماہ فی کنبے سے کوڈا کرکٹ کو ٹھکانے لگانے کیلئے50 روپے فیس بھی وصول کرتا ہے،تاہم گزشتہ کئی دنوں سے اگر چہ عملہ نے گھروں سے کوڈا کرکٹ اٹھالیا لیا،تاہم اس کو کوڈہ دانوں میں ڈالنے کے بعد ٹھکانے نہیں لگایا گیا۔بٹوارہ

ڈاکٹر فاروق کی درگاہ حضرتبل میں حاضری

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے آثار شریف درگاہ حضرتبل میں حاضری دی اور نماز جمعہ ادا کی۔ڈاکٹر فاروق نے اس موقعہ پر جموں وکشمیر میں مکمل امن و امان، عالم اسلام کی سربلندی، عالم انسانیت کی بقا، ریاست کے لوگوں کی خوشحالی و ترقی کے علاوہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان مضبوط دوستی ، دونوں پڑوسی ممالک کے لوگوں کی خوشحالی و فارغ البالی اور مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے دعا کی۔اس سے قبل ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے چرار شریف جاکر وہاں درگاہِ حضرت علمدار کشمیر شیخ نور الدین نورانیؒ پر حاضری دی۔ اُن کے ہمراہ پارٹی کے سینئر لیڈرعبدالرحیم راتھر تھے۔  

کشمیر یونیورسٹی لاء سکول کا تعزیتی اجلاس

سرینگر//کشمیر یونیورسٹی کے سکول آف لاء میں ایک تعزیتی اجلاس منعقد ہوا جس میں سابق سربراہ اور ڈین آف لاء ڈیپارٹمنٹ کشمیر یونیورسٹی پروفیسر اکرم میر کو خراج عقیدت پیش کیا گیا ،جو منگل کوانتقال کرگئے تھے۔  تعزیتی اجلاس میں ڈین سکول آف لاء پروفیسر محمد حسین ، صدر KUTA ڈاکٹر محیط ، ڈائریکٹر CCAS، پروفیسر جی این کھاکی، جنرل سیکریٹری KUTA ، سینئر فیکلٹی ممبران کے علاوہ سکول آف لاء کے فیکلٹی ممبران نے شرکت کی۔  

موسم بدلا پر رنگہ مسجد حول میں ناقص بجلی سپلائی جوں کی توں

سرینگر//موسم میں بھلے ہی تبدیلی آئی ہے لیکن رنگہ مسجد حول کے لوگوں کیلئے بجلی سپلائی میں کوئی بہتری نہیں آئی ہے جس کا خمیازہ صارفین کو بھگتنا پڑرہا ہے۔ رنگہ مسجد حول اور جڈی بل کے شہریوں نے کشمیرعظمیٰ کوبتایا کہ مذکورہ علاقوں کو مغل مسجد حول رسیونگ سٹیشن کے فیڈر نمبر3سے برقی رو فراہم کی جاتی ہے اور کئی ہفتوں سے تکنیکی خرابی ہونے سے بجلی سپلائی آدھے گھنٹے کے بعد کئی گھنٹوں تک منقطع رہتی ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ بجلی سپلائی کی آنکھ مچولی سے وہ تنگ آگئے ہیں اور اس پر طرہ یہ کہ کبھی کبھار وولٹیج اس قدر کم ہوتا ہے کہ موم بتی روشن کرکے بلب کو ڈھونڈنا پڑتا ہے۔ سماجی کارکن فرہان کتاب نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ’رنگہ مسجد حول اور اس سے ملحقہ علاقہ جڈی بل کو ناقص اور کم ولٹیج بجلی سپلائی فراہم کی جاتی ہے جو سردیوں کے ایام سے لیکر اب تک مسلسل جاری ہے‘۔ مذکورہ شہری نے کہاکہ متعدد بار

صورہ سے پاندچھ تک سڑک کھنڈرات میں تبدیل

سرینگر //ارشاد احمد//صورہ سے گاندربل تک 12 کلومیٹر پرانی شاہراہ کھنڈرات میں تبدیل ہونے سے ہزاروں افراد پر مشتمل آبادی میں شدید غم و غصہ اور ناراضگی پائی جارہی ہے۔صورہ ،بژھ پورہ ،عمر ہیر،احمد نگر ،پاندچھ اورگاندربل سڑک کھنڈرات میں تبدیل ہوگئی ہے۔ 2008 تک اس شاہراہ کو سرینگر لیہہ شاہراہ کا درجہ حاصل تھا کیونکہ اس شاہراہ سے گاندربل، کنگن، صفاپورہ، تولہ مولہ، سونہ مرگ سمیت کرگل لداخ کی جانب روزانہ سینکڑوں گاڑیاں چلتی تھیں۔اس وقت صورہ سے پاندچھ تک اس سڑک کی حالت انتہائی خستہ اور ناکارہ ہوچکی ہے ،بڑے بڑے کھڈے سڑک پر موجود ہے۔ تکیہ پاندچھ کے مقام پر سڑک کے کنارے پر ہزاروں کنال اراضی کو سیراب کرنے والی کنال کے بنڈ میں دراڑیں پڑگئی ہیں جس کا سارا پانی سڑک پر دریا کی صورت میں بہنے سے شاہراہ پر سفر کرنا وبال جان بنا ہوا ہے۔کشمیر عظمی کو پاندچھ کے شہریوں نے بتایا کہ صورہ سے پاندچھ تک اس سڑک پر ہز