کنٹونمنٹ بورڑ کی حدود میں ہاوس ٹیکس کا نفاذ

سرینگر//کنٹونمنٹ بورڑ کے حدود میں آنے والے علاقوں کے شہریوں پر ہاوس ٹیکس کا نفاذ عمل میں لانے کے خلاف مقامی لوگوں نے دو ٹوک الفاظ میں ہاوس ٹیکس کا بائیکاٹ کرنے اور بورڑ انتظامیہ سے یہ فرمان واپس لینے کا مطالبہ کیا ۔ سرینگر کے بٹوارہ،شوپورہ،سونہ وار،اقبال کالونی اور یتو محلہ کے علاقوں میں کنٹونمنٹ بورڑ نے ہاوس ٹیکس کا نفاذ عمل میں لایا ہے اور اس سلسلے میں تازہ نوٹسیں بھی ا جراء کی گئی ہیں۔ مقامی لوگوں نے کنٹونمنٹ بورڑ کے اس فیصلے کو تانا شاہی قرار دیتے ہوئے کہا کہ 2014میں آئے تباہ کن سیلاب کی وجہ سے پہلے ہی لوگوں کی کمر ٹوٹ گئی ہے اور اس پر کنٹونمنٹ بورڑ انتظامیہ کی طرف سے ہاوس ٹیکس لاگو کرنا سراسر نا انصافی ہے۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ ان علاقوں میں بیشتر مزدور اور محنت کش طبقہ رہائش پذیر ہیں اور وہ ہاوس ٹیکس کی ادائیگی نہیں کرسکتے۔ انہوں نے بتایا کہ جموں کشمیر میں پراپرٹی ٹیکس عائد نہ

وادی کے واحد نفسیاتی امراض کے اسپتال میں گنجائش نہ ہونے کی وجہ سے مریض پریشان

 سرینگر//کشمیر وادی کے واحد نفسیاتی بیماریوں کے اسپتال میں گنجائش نہ ہونے کی وجہ سے سینکڑوں کی تعداد میں ایسے ذہنی مریض سڑکوں ، بازاروں ، گلی کوچوں ، قبرستانوں ، زیارت گاہوں اور خانقاہوں میں رہ کر ایڑھیاں رگڑ رگڑ کر زندگی کی جنگ ہار جا تے ہیں اور ایسے بیماروں کو علاج ومعالجہ کیلئے نہ تو کوئی رضا کار تنظیم آگے آر ہی ہے اور نہ ہی انتظامیہ اس سلسلے میں سنجیدگی کے ساتھ غور و فکر کر رہی ہے۔ دماغی مریضوں کی ایک بڑی تعداد وادی کے اطراف واکناف میں دن اور رات سڑکوں ، بازاروں ، گلی کوچوں ، قبرستانوںمیں گھوم پھر رہی ہے اور ایسے افراد کو جنگلی جانور ، پاگل کتے اپنے حملوں کا نشانہ بنا رہے ہیں۔  کشمیر وادی میں قائم کئے گئے مینٹل اسپتال میں جگہ دستیاب نہ ہونے کے باعث سینکڑوں نفسیاتی بیماروں کا علاج ومعالجہ نہیں ہو پا رہا ہے اور انہیں انتظامیہ کی جانب سے نئی زندگی فراہم کرنے کیلئے سنجیدگی

ملک صاحب صفاکدل اور دری بل خانیار میں

سرینگر//شہر سرینگر کے بیشتر علاقوں میں بجلی کی ناقص اور ابتر صورتحال پر مقامی آبادی نے محکمہ بجلی کے خلاف غم و غصہ اور برہمی کا اظہار کیاہے۔ملک صاحب صفاکدل کے شہریوں نے علاقے کو فراہم کی جانے والے برقی رو کی ابتر صورتحال پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ انہیںشیڈول کے مطابق بجلی فراہم نہیں کی جاتی ۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ جب بھی بجلی فراہم کی جاتی ہے اس وقت بہت کم وولٹیج ہوتا ہے ۔ملک صاحب صفاکدل کو رسیوینگ اسٹیشن گندر پورہ سے بجلی سپلائی فراہم ہوتی ہے جہاں اکثر بیشتر فیڈر خراب رہتا ہے۔ادھر دری بل خانیار میں بھی ناقص بجلی سپلائی کے باعث مقامی آبادی محکمہ بجلی کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔مقامی آبادی نے مانگ کی ہے کہ بجلی سپلائی شیڈول کے مطابق فراہم کی جائے ۔  

ناجائز منافع خوری کی روکتھام ،حکام کا بازاروں کا معائنہ

سرینگر//  گزشتہ دنوں کی برف باری کے بعد سرینگر جموں شاہراہ کے بند رہنے کے نتیجے میں اشیائے ضروریہ کے نرخوں میں اضافہ کو روکنے کیلئے  حکام نے اتوار کو شہر کے بازاروں کا معائنہ کیا۔ایک سرکاری بیان کے مطابق ضلع سرینگر کے تمام7 تحصیلوں میں حکام نے بازاروں کا معائنہ کرکے سرکار کی طرف سے مقرر کئے گئے نرخوں پراشیائے ضروریہ کی فروخت اور معیار کاجائزہ لیاتاکہ ناجائز منافع خوری اور کالا بازاری کوروکا جائے۔اس دوران کئی تجارتی اداروں کو  گاہکوں سے زیادہ دام وصول کرنے اور دیگر ضوابط کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں مقفل کیاگیا ۔ تجارتی اداروں اور دکانداروں کو متنبہ کیاگیا کہ وہ ضروری اشیاء کو مقررہ داموں پر ہی فروخت کریں اور ناجائز طور منافع کمانے سے گریز کریں۔ڈپٹی کمشنر سرینگر سید عابد رشید شاہ نے بھی شہر کے کئی بازاروں کا معائنہ کیا۔انہوں نے حکام کو تاکید کی کہ وہ اشیاء ضروریہ کی مقر

چند انچ برف نے انتظامیہ کے تمام دعوئوں کی پول کھول دی

سرینگر /وادی کشمیر میں بھاری برفباری سے پیدہ شدہ صورتحال سے نمٹنے میں انتظامیہ کی ناکامی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کشمیر اکنامک الائینس کے شریکِ چیرمین فاروق احمد ڈار نے کہا کہ برفباری شروع ہونے کے ساتھ ہی جس طرح سے انتظامیہ بے بس نظر آئی اْس سے صاف عیاں ہوا کہ انتظامیہ اس سے نمٹنے کیلئے مکمل طور پر تیار نہیں تھی اور وہ تمام دعوئے غلط ثابت ہوئے جن میں کہا گیا تھا کہ انتظامیہ کشمیر میں کسی بھی ناگہانی آفت سے نمٹنے کیلئے تیار ی کی حالت میں ہے ۔ پریس کانفرنس سے کشمیر اکناملک الائنس کے چیف ترجمان حاجی محمد صدیق رونگا نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ برفباری کے باعث سرینگر جموں شاہراہ کے مختلف مقامات پر سینکڑوں کی تعداد میں ٹرکیں پھنسی ہوئی ہے اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے جس کے باعث وہ فاقہ کشی پرف مجبور ہو رہے ہیں ،جبکہ جموں میں بھی ہزاروں کی تعداد میں کشمیری مسافر درماندہ ہے جس کا بھی

ریذیڈنسی روڈ پر پھسلن سے راہگیر وں کو مشکلات

سرینگر//برف باری کے تین دن کے بعد بھی حکام شہر کے قلب ریذیڈنسی  روڈ سے برف ہٹانے اور پانی کی نکاسی کا کام ہاتھ میں لینے میں ناکام ہوئے ہیں ۔ فٹ پاتھوں پر سے برف نہ ہٹائے جانے کی وجہ سے اتوار کو سنڈے مارکیٹ میں دکانداروں اور خریداروں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔متعدد دکانداروں اور چھاپڑی فروشوں نے بتایا کہ انہیں دکانوں تک پہنچنے اور اپنے اسٹال لگانے کیلئے برف کو ہٹانا پڑا۔الطاف احمد نامی ایک چھاپڑی فروش نے بتایا کہ بجائے اس کے کہ وہ خریداروں کی طرف توجہ دیتے ،انہیں خریداروں کے اسٹال تک پہنچنے کیلئے برف کو صاف کرکے پہلے راستہ بنانا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ اتوار کو مارکیٹ میں خریداروں کی بھیڑ ہونے کے مدنظر حکام کو کم سے کم فٹ پاتھوں سے برف ہٹانا چاہیے تھا جہاں چھاپڑی فروش اسٹال لگاتے ہیں ۔خریداروں نے بتایا کہ فٹ پاتھوں پر پھسلن کی وجہ سے ان کے پھسل کرزخمی ہو جانے کا خطرہ تھا۔ انہ

برفباری کے تین روز بعد بھی فٹ پاتھوں سے برف نہیں ہٹائی گئی

سرینگر// سرینگر میں برفباری کے تین روز گزرنے کے باوجود شہر میں متعلقہ حکام فٹ پاتھوں اور گلی کوچوں سے برف صاف کرنے اور پانی کی نکاسی میں ناکام ہوچکے ہیں۔ فٹ پاتھوں پر برف کو صاف نہ کرنے کی وجہ سے شہر کے مصروف بازار ریذڈنسی روڑ پر عبور و مرور مشکل ہوگیا ہے ۔اتوار کو اس سڑک پر خریدار قطار در قطار موجود تھے،تاہم انہیں عبور و مرور میں کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑا۔اتوار کو پٹریوں پر خوانچہ فروشوں نے ریڈیاں بھی لگائی تھی تاہم انہوں نے کہا کہ انہوں نے از خود برف کو صاف کرنے کے بعد ہی ریڑھیاں لگائیں۔ایک خوانچہ فروش نے کہا کہ خریداروں کو مال فروخت کرنے کے بجائے وہ دن بھر برف صاف کرنے میں لگا۔ان کا کہنا تھا کہ انتظامیہ کو معلوم ہے کہ اتوار کو سنڈے مارکیٹ بھی لگتا ہیں اور شہر میں خریداروں اور لوگوں کی گہما گہمی بھی ہوتی ہیں،جس کے پس منظر میں انہیں فٹ پاتھوں پر برف صاف کرنا چاہے تھا،تاہم حکام اور

اقبال آباد بمنہ میں سڑکوں کی حالت بد سے بدتر

سرینگر//اقبال آباد بمنہ میں سڑکوں کی حالت انتہائی ناگفتہ بہہ حالت ہونے سے لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہاہے۔ اقبال آباد بمنہ لین 4کے لوگوں کاکہنا ہے کہ سڑکوں پر جگہ جگہ گہرے اور بڑے کھڈ ہونے کے باعث راہگیروں کو گوناں گوں مسائل سے دوچار ہونا پڑرہا ہے۔ مقامی آبادی کاکہنا ہے کہ کئی سال قبل سڑکوں پر میگڈم بچھایا گیا جس کے سبب لوگوں نے راحت کی سانس لی لیکن پانی کی پائپ بچھانے کیلئے سڑک کی کھدائی کی گئی اور سڑکیں دوبارہ کھنڈرات میں تبدیل ہوگئیں۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ اگر پانی کی پائپ کو بچھانا ہی تھا تو میگڈم کیوں ڈالا گیا۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ حالیہ برفباری کے بعد سڑکوں کی حالت اب بد سے بدتر ہوگئی ہے اور سڑکیں جھیلوں میں تبدیل ہوگئی ہیں۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ سڑکوں پرگہرے کھڈ بن گئے ہیں جس میں برف سے پگھل رہا پانی جمع ہوگیا ہے اور گاڑیوں کی آمدورفت سے گندے پانی کی چھینٹے راہگیروں کو

فردوس کالونی عیدگاہ میں گندہ پانی جمع

سرینگر// فردوس کالونی عیدگاہ میں پانی جمع ہونے سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ علاقہ میں اکثر و بیشتر پانی جمع رہتا ہے جس کے سبب مکینوں کو مشکلات درپیش ہیں۔ لوگوںنے متعلقہ محکمہ سے مطالبہ کیا ہے کہ گندے پانی کوٹھکانے لگانے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ ڈرینوں میں کوڑا کرکٹ جمع ہوگیا ہے جس کے سبب گندے پانی کی صحیح طریقہ سے نکاسی نہیں ہورہی ہے۔ لوگوں کاکہنا ہے کہ گندے پانی سے بیماریاں پھوڑ پڑنے کا خطرہ ہے۔    

جوان سال نوحہ خواں منیرعباس کاانتقال

سرینگر//جموں کشمیرلداخ شعیہ ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری عابد حسین انصاری نے کاٹھ باغ جڈی بل کے نوجوان نوحہ خوان منیر عباس گنائی کے انتقال پر زبردست افسوس کااظہار کیا ہے۔ایک بیان میں انصاری نے منیرعباس کے انتقال کو ناقابل تلافی نقصان قراردیتے ہوئے لواحقین کے ساتھ تعزیت کااظہار کیا۔انہوں نے مرحوم کے روح کے ابدی سکون کیلئے بھی دعا کی ۔  

تازہ ترین