تازہ ترین

لل دیدہسپتال کے باہر سڑک کی حالت ناگفتہ بہہ

سرینگر// لل دید ہسپتال کے مین گیٹ کے باہر سڑک پر گہرے کھڈ ہونے کی وجہ سے جہاں ٹریفک کی آوجاہی میں خلل پڑ رہا ہے وہیں یہاں دور دراز علاقوں سے مریضوں کو لانے والی گاڑیوں کو ہسپتال احاطے میں داخل ہونے میں پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ہسپتال کے باہر سڑک کی حالت ایسی ہے کہ یہاں حادثات پیش آنے کا بھی احتمال ہے ۔کئی ڈرائیوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ مریضوں کو لانے کے دوران ہسپتال گیٹ پر پہنچتے ہی انہیں یہاں کئی منٹوں تک رکنا پڑتا ہے کیونکہ سڑک کے بیچوں بیچ گہرے کھڈ موجود ہونے کی وجہ سے یہاں گاڑیاں رک جاتی ہیں اور پھر کبھی کبھی ٹریفک جام بھی لگ جاتا ہے ۔اس کے ساتھ ساتھ ہسپتال گیٹ کے سامنے ہی گاڑیوں کیلئے یو ٹرن ( U Turn) ہے ۔اور جب یہاں نجی اور پبلک ٹرانسپورٹ گاڑیاں جن میں سومو ،تویرا اور دیگرمیٹا ڈار شامل ہیں ،سڑک کی دوسری اور گھوم جاتی ہیں تو چند سکینڈوں کے ساتھ ہی یہاں ٹریفک جام ہو

خنزیری بخار: 4ماہ میں 16اموات، سکمز میں12مریض ابھی بھی زیر علاج

سرینگر //سرینگر// شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں اکتوبر2018 سے اب تک NIHIسوائن فلو نامی بیماری کی لپیٹ میں آکر 16افراد کی موت واقع ہوئی ہے۔ ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ رواں سردیوں میں اگرچہ ہسپتال میں تشخص کرانے والے مریضوں کی تعداد زیادہ درج کی گئی تاہم اموات کم ہوئی ۔ہسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ اکتوابر سے اب تک ہسپتال میں 993مریضوں کی تشخص کی گئی جس میں سے 740مریضوں کے ٹیسٹ منفی آئے اور 253مریضوں کے ٹیسٹ مثبت آئے ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ اس سال اس بیماری میں مبتلا 96مریضوں کو علاج ومعالجہ کیلئے ہسپتال میں بھی داخل کرنا پڑاجبکہ 12مریض ابھی بھی ہسپتال میں زیر علاج ہیں ۔ذرائع کے مطابق اس عرصے کے دوران 16افراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔ہسپتال حکام کے مطابق جن مریضوں کی موت واقع ہوئی وہ دیگر کئی مہلک بیماریوں میں بھی مبتلا تھے ۔اسپتال حکام کے مطابق اس سال اگرچہ ہسپتال میں ٹ

بجلی کی آنکھ مچولی اور یخ بستہ ہوائیں

سرینگر// امسال سردیوں میں بجلی بحران نے شہریوںکو مشکلات میں اضافہ کردیا اور سردی سے بچنے کیلئے روایتی کانگڑی کی مانگ میں اضافہ ہوا ہے ۔شہر کے بیشتر علاقوں میں لوگ شکایت کررہے ہیں کہ بجلی کی عدم دستیابی کی وجہ سے سردی کے ان ایام میں انہیں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔اس بار سر دی کا مو سم شروع ہوتے ہی حکومت نے بجلی سپلائی میں غیر معمولی کٹوتی شروع کر دی ہے۔من مانی طریقے سے شہر سرینگر میں صبح اور شام کے اوقات بجلی غائب رہنے اور سردی کی شدت میں اضافہ کے بعد لوگوں نے سردی سے بچنے کیلئے کانگڑی کا ستعمال کرنا شروع کیا۔برقی رو کی عدم دستیابی سے گرمی پہنچانے والے الیکٹرانک آلات بے کارپڑے ہیں اور کانگری کا ستعمال بڑھ گیا ہے ۔عوامی حلقوں کاکہنا ہے کہ امسال بجلی کی ایسی ابتر صورتحال انہوں نے کبھی نہیں دیکھی ہے۔سردی سے بچنے کیلئے کشمیر میں صدیوں پرانی روایت جسے عرف عام میں کانگڑی کہا جاتا

ابتر موسمی صورتحال کا تقاضا، این ایچ ایم ملازمین کا کچھ ساتھیوں کو عارضی طور پر ہڑتال سے مستثنیٰ رکھنے کا فیصلہ

سرینگر//ابتر موسمی صورتحال کے پیش نظر ملازم، تاجرو طبی تنظیموں اور سیول سوسائٹی کی طرف سے ایمرجنسی خدمات انجام دینے کی اپیل کو مد نظر رکھتے ہوئے کئی ہفتوں سے اپنے مطالبات کے حق میں نیشنل ہیلتھ مشن کے ہڑتالی ملازمین نے کچھ ملازمین کو عارضی طور پر ہڑتال سے مستثنیٰ رکھنے کا فیصلہ لیا۔مرکزی صحت اسکیم این ایچ ایم کے تحت کام کرنے والے ملازمین بشمول طبی ونیم طبی عملہ گزشتہ کئی ہفتوں سے اپنے مطالبات کے حق میں ہڑتال پر ہیں۔اس دوران اس مرکزی اسکیم کے تحت تعینات ملازمین کی انجمن’’آل جموں کشمیر نیشنل ہیلتھ مشن ایمپلائز ایسو سی ایشن‘‘ نے ایمرجنسی خدمات کو پورا کرنے کیلئے کچھ ملازمین کو عارضی طور پر ہڑتال سے مستثنیٰ رکھنے کا فیصلہ لیا۔ایسو سی ایشن کے کشمیر صدر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ایمپلائز جوائنٹ ایکشن کمیٹی،کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز،کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینو فی

رینگر طیرانگاہ پریکے بعد دیگرے39 جہازاترے

سرینگر// شہر میں ہڑتال اور بندشوں کے بیچ ائر پورٹ روڑ پر دن بھر گاڑیوں کا کافی رش رہاجبکہ حیدپورہ سے ہمہامہ کے بیچ ٹریفک جام کے مناظر بھی دیکھنے کو ملے۔ نامسائد موسمی صورتحال کے نتیجے میں سرینگر جموں شاہرہ بند ہونے اور وادی کا فضائی رابطہ منقطع ہونے کی وجہ سے دہلی اور جموںمیں مسافر درماندہ ہوکر رہ گئے تھے۔سنیچر کو موسم میں بہتری آنے کے ساتھ ہی فضائی رابطہ پھر بحال ہوا اور دن بھر39 طیارے  سرینگر ائرپورٹ پراترے۔ اضافی طیاروں کے آنے سے مسافروں کی ایک بڑی تعداد وارد کشمیر ہوئی اور اس دوران مزاحمتی جماعتوں کی طرف سے دی گئی کال کے بیچ سرینگر ائرپورٹ روڑ پر گاڑیوں کے قافلے نظر آئے۔ عینی شاہدین کے مطابق یکے بعد دیگرے طیاروں کے آنے سے مسافروں کی ایک بڑی تعداد وارد کشمیر ہوئی اور ائرپورٹ روڑ پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں نظر آئیں،جس کے پیش نظر ہمہامہ میں ٹریفک جام بھی ہوا۔ ایس ایس پی ائرپور

سرینگر ضلع کے بکسنگ کھلاڑیوں کا پریس کالونی میں احتجاج

سرینگر// سرینگر ضلع کے بکسنگ کھلاڑیوں نے سنیچر کو پریس کالونی میں احتجاج کرتے ہوئے بکسنگ چمپین شپ کو فی الحال منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ۔انہوں نے بتایا کہ ریاستی سطح پر جموں میںبکسنگ چمپین شپ منعقد ہورہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ چونکہ سرینگر جموں شاہراہ بند ہے لہذا وہ جموں نہیں پہنچ سکتے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ یہ ملکی یا غیر ملکی سطح کی چمپین شپ نہیں ہے بلکہ ریاستی سطح کی ہے ،لہذا سرکار کو چاہئے کہ بکسنگ چمپین شپ کو فی الحال منسوخ کیا جائے۔  

عرس ختلان: منگل کو خانقاہ معلی میں مجلس آراستہ ہوگی

سرینگر//محسن کشمیر وبانی اسلام حضرت میر سید علی ہمدانیؒ کا عرس ختلان کی۶۴۹ ویں تقریب منگل یعنی ۶؍ ماہ جمادی الثانی مطابق 12فروری پوری وسط ایشیا ، برصغیر اور ریاست کے تینوں خطوں میں نہایت عقیدت واحترام کے ساتھ منایا جارہی ہے۔ اس سلسلے میں سب سے بڑی تقریب تاریخی خانقاہ معلی سرینگر میں منعقد ہوگی۔ جہاں وادی کے اطراف واکناف سے بڑی تعداد میں عقیدت مند شرکت کررہے ہیں۔ نمازِ ظہر سے قبل مولانا ریاض احمد ہمدانی حسب قدیم وعظ و تبلیغ اور عرس ختلان کی فضیلت بیان کریںگے۔نماز ظہر بعد ختمات المعظمات، درود ازکار اور اوراد خوانی کی مجلس آراستہ ہوگی۔ یاد رہے عرس ختلان کی تقریب اُس سلسلے میں منائی جاتی ہے، جب بانی اسلام حضرت میر سید علی ہمدانیؒ کی جسد خاکی (تابوت شریف) کشمیر سے کولاب تاجسکتان6ماہ کے مسلسل سفر کے بعد پہنچی۔  

لال بازار میں پولیس پبلک میٹنگ منعقد

سرینگر//پولیس اور عوام کے مابین بہتر تال میل قائم رکھنے کیلئے لال بازار میں پولیس پبلک میٹنگ کا انعقاد کیا گیا ۔پولیس کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پولیس کے جانب سے لوگوں کے ساتھ بہتر تال میل قائم رکھنے کی غرض سے پولیس سٹیشن لال بازار میںعوامی دربار منعقد ہوا جس میں عمر کالونی Bلال بازار کے ذی عزت شہریوں نے شرکت کر کے اپنے علاقے کے مسائل اُجاگر کئے ۔ایس ایچ او جی پی سنگھ نے  لوگوں کے  مسائل کافی دلچسپی سے  سُنے اور انہیں یقین دلایا گیا کہ انکے مسائل جو کو پولیس  سے وابستہ ہیںکو  ترجیحی بنیادوں پر حل کیاجائے گا اور باقی ماندہ مسائل کومتعلقہ محکموں تک  پہنچایا جائے گا۔ میٹنگ میں منشیات و دیگر جرائم کے بارے میں بات چیت ہوئی ۔لوگوں نے پولیس کی جانب سے منشیات و دیگر جرائم کے خاتمے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کی سراہنا کی ۔