نومبر2018تک شہر میں 351سڑک حادثات

سرینگر //شہر میں ٹریفک کے بڑھتے حادثات کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ نومبر2018 تک 351سڑک حادثات رونما ہوئے جس کے نتیجہ میں 42افراد ہلاک او ر 360زخمی ہوئے ہیں ۔محکمہ ٹریفک میں موجود ذرائع نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وادی کے دیگر اضلاع کے ساتھ ساتھ شہر سرینگر میں 2018میں سڑک کے 351سڑک حادثات رونما ہوئے ہیں ۔ذرائع نے اعدادوشمار پیش کرتے ہوئے بتایا کہ جنوری میں مختلف نوعیت کے کل 26حادثات رونما ہوئے ہیں جس کے دوران 4افراد کی موت اور 24زخمی ہوئے ہیں۔  فروی میں 30سڑک حادثات کے دوران 2ہلاک 23زخمی ہوئے۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ مارچ میں 26حادثات کے دوران 3ہلاک 45افراد زخمی ہوئے ہیں ،اسی طرح اپریل میں 23حادثات کے دوران 3ہلاک 31زخمی ہوئے۔مئی کے اعدادوشمار پیش کرتے ہوئے ذرائع نے بتایا کہ اس ماہ کے دوران 41 سڑک حادثات کے دوران 5 افراد ہلاک 52زخمی ہوئے ہیں ۔ جون میں 35سڑک حادثات کے دوران

آوارہ کتوں کی آبادی میں بے تحاشااضافہ

سرینگر//شہر سرینگر میں کتوں کی آبادی میں بے پناہ اضافہ عوام کیلئے دردِ سر اور مصیبت بن گئی ہے۔ آوارہ کتوں کے حملوںسے شہریوں میں خوف وہراس کی لہر پائی جارہی ہے۔ شہر میں آوارہ کتوں کی بڑھتی تعداد سے لوگوں خاص کر بچوں اور خواتین کا گھروں سے باہر نکلنا مشکل ہوگیا ہے۔ آوارہ کتوں کے غولوں کے غول گلی، کوچوں، نکڑ اور چوراہوں پر دھندناتے پھر رہے ہیں جس کے سبب راہگیروں میں ڈر پایاجارہاہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ آوارہ کتوں کی آباد ی میں بے تحاشا اضافہ سے عوام گوناگوں مسائل سے دوچار ہیں۔لوگوں کاکہنا ہے کہ آئے روز کتوں کے حملوں میںشہریوں کے زخمی ہونے کی خبریں اب جیسے معمول بن گئی ہیں اور ایسا کوئی دن نہیں ہوتا جب کتوں کی جارحیت سے کوئی شہری زخمی نہیں ہوتا۔ لوگوںکاکہنا ہے کہ کتوں کی وجہ سے گھر کے کسی بڑے فرد کو ضروری کام چھوڑ کر بچوں کو ٹیوشن پر بھیجا جاتا ہے اور واپسی کیلئے بھی کسی نہ کسی فرد ک

لال منڈی میں محکمہ زراعت کی جائزہ میٹنگ

 سرینگر//محکمہ زراعت کے ناظم سید الطاف اعجاز اندرابی نے کہاہے کہ تعلیم یافتہ نوجوانوں کو زراعت کے شعبہ کی طرف راغب کرنا اور کسانوں کو بااختیار بنانا محکمہ کی اعلیٰ ترجیحات میں شامل ہے۔ ڈائریکٹر ایگریکلچر کشمیر سید الطاف اعجاز اندرابی نے لال منڈی سرینگر میں منعقدہ اعلیٰ سطحی جائزہ میٹنگ سے خطاب کر تے ہوئے فارمر پروڈوسر آرگنائزیشنس (FPOs) کے ذریعے انٹرپرینیور ڈیولپمنٹ پروگراموں کے فروغ پر زور دیا جس میں 10-20 افراد اپنے لئے روزگار کما سکیں گے۔انہوں نے کہا کہ ایک (FPO) کو ایک بزنس سنٹر ، ریفریجیریٹر وین ، ٹریکٹر اور دوسرے زراعت میں استعمال ہونے والے آلات سے لیس رکھا جائیگاجوبے روزگار نوجوانوں کیلئے روزگار مہیا کرنے کیلئے ایک مکمل پیکیج ہوگا۔انہوں نے مختلف پروجیکٹوں کی موثر عمل آوری کیلئے اقدامات کی فہرست جاری کی۔ ڈائریکٹر نے افسروں کوہدایات دیں کہ وہ محکمہ کی سکیموں کی نگرانی کریں

متعدد علاقوں میںبوسیدہ کھمبے، ڈھیلی ترسیلی لائنیں لٹکتی تلوار کی مانند

سرینگر // شہر میں عارضی کھمبوں کے ساتھ لٹکتی بجلی تاریں مکینوں اور راہگیروں کیلئے وبال جان بن چکی ہیں ۔مکینوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے متعدد بار ترسیلی لائنوں اور کھمبوں کو بدلنے کیلئے متعلقہ محکمہ سے رابطہ قائم کیا تاہم اس جانب کوئی دھیان ہی نہیں دیا جاتا ہے ۔شہر کے گرین کالونی لاوے پورہ کے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہاں بجلی کی تاریں ڈھیلی ہوگئی ہیں اور خدانخواستہ حادثہ ہو سکتا ہے ۔مقامی لوگوں کے ایک وفد نے بتایا کہ کئی بار انہوں نے محکمہ کے متعلقہ حکام سے رجو ع کیا جبکہ محکمہ کے چیف انجینئر نے متعلقہ افسر کو بھی اس حوالے سے اقدامات کرنے کو کہا مگر اس کے باوجود بھی علاقے میں بجلی کا ترسیلی نظام بد سے بدتر ہے ۔ادھر ہمدانیہ کالونی بمنہ اور شہر حاص کے اکثر علاقوں میں بھی بجلی کی ترسیلی لائنیں بوسیدہ کھمبوں کے ساتھ بندھی ہوئی ہیں اور اُن کو بدلنے کا کام بھی امسال مکمل نہیں ہو سکا ہے

سونہ وار میں نمدوں کی پھیری کرنے والا سڑک پر غش کھاکر فوت

سرینگر//سونہ وار میں ایک پھیری والا غش کھاکر فوت ہوا۔ حمزہ کالونی سونہ وار میں سنیچر کو نمدے فروخت کرنے والا گلی میں گرا ہوا پڑاتھا اور مقامی لوگوںنے فوری طور پر معاملہ کی اطلاع پولیس کو دی۔ پولیس نے مذکورہ شہری کی شناخت محمد یعقوب ساکن نہرو پارک ڈل کے بطور کی جس کی موقعہ پر ہی موت واقع ہوگئی تھی۔اس دوران پولیس نے مذکورہ شہری کے لواحقین کو مطلع کیا اور قانونی لوازمات پورا کرنے کے بعد میت ان کے سپرد کی۔ رام منشی باغ پولیس تھانے کے افسر نے اس بات کی تصدیق کہ سونہ وار میں ایک شخص غش کھا کر گر گیا تھا اور لقمہ اجل بن گیا۔جونہی مذکورہ شہری کی میت علاقے میں پہنچائی گئی تو وہاں صف ماتم بچھ گئی۔ علاقہ میں لوگوں کی آنکھیں نم تھیں اور لواحقین کی ڈھارس بندھانے اور تعزیت پرسی کرنے کا سلسلہ شروع ہوا۔

حضرتبل اور سونہ وار حلقوں کی پسماندگی کیلئے سابق ممبران اسمبلی ذمہ دار :پیربلال

سرینگر//سماجی کارکن پیربلال نے سونہ وار اور حضرت بل اسمبلی حلقوں کے سابق ممبران اسمبلی کی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ان اسمبلی حلقوں میں لوگوں کو بنیادی سہولیات جیسے طبی خدمات،پینے کاصاف پانی،سڑک رابطے اور دیگر ترقیاتی سرگرمیاں فراہم کرانے میں ناکام ہوئے  ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سابق ممبران اسمبلی نے پھاک،کھمبر اور دارا علاقوں کے لوگوں کی بہتری اور بھلائی کیلئے کچھ نہیں کیا۔ ہارون ڈیولپمنٹ فورم کی سالانہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے پیربلال نے کہا کہ سونہ وار اورحضرت بل اسمبلی حلقوں سے منتخب ہوئے ممبران نے خاص طور سے گزشتہ دس بر س کے دوران علاقے کی ترقی کیلئے کوئی کام نہیں کیا۔انہوںنے کہا کہ ممبران اسمبلی نے اِن حلقوں کے پسماندہ دیہات کو بیک ورڈ علاقہ قراردینے کیلئے کبھی آوازبلند نہیں کی۔ انہوںنے کہاکہ گنڈتال، نیوتھید، ملہ نار، بارجی، اپربارجی، سیدپورہ، مورن، درباغ، ساراباغ، دھنہ ہامہ،

تازہ ترین