ثالثی کے ذریعہ مصالحت ۔۔۔۔۔وقت کی اہم ضرورت!

ثالثی کے عمل سے مقدمات کا مصالحانہ حل تلاش کرنا غالبا ہمارے وقت کی سب سے بڑی ضرورت ہے اور جموںوکشمیر ہائی کورٹ کی کمیٹی برائے ثالثی و مصالحت نے گزشتہ دنوں شیر کشمیر انٹرنیشنل کنونیشن سنٹر میں اس حوالے سے ایک سہ روزہ ریاست گیر ورکشاپ کا اہتمام کرکے اس ضرورت کے تئیں عدلیہ کے مثبت احساس کا پیغام فراہم کیا ہے۔ یہ ایک واضح حقیقت ہے کہ ہماری عدالتوں میں ہزاروں کی تعداد میں مقدمات زیر سماعت ہیں اور ہر گزرنے والے دن کے ساتھ اس میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو تا جا رہا ہے۔ جس کی وجہ سے عدالتوں پر بوجھ میں بے پناہ اضافہ ہونے کے بہ سبب مقدمات کے فصیل ہونے میں لازمی طور پر تاخیر کا عنصر داخل ہوجاتا ہے۔چنانچہ بعض اوقات معاملات برسہابرس تک زیر سماعت رہنے کے باوجود فصیل نہیں ہو پاتے اور جب فیصلے ہو جاتے ہیں تو فریقین کی جانب سے اعلیٰ عدالتوں کی طرف رجوع کرنے کے رجحان سے سماعت کا ایک نیا سلسلہ شروع ہو تاہے،