شاہراہ پر قدغن کاخاتمہ۔۔۔ قابلِ سراہنا فیصلہ !

ریاستی حکومت نے پلوامہ خودکش حملے کے بعد سرینگر جموں شاہراہ  پر ادھمپور بارہمولہ تک ٹریفک کی آمد و رفت کے حوالے سے لگائی گئی قدغنوں کے فیصلے کو واپس لیکر ایک اہم عوامی مطالبے کے تئیں مثبت ردعمل ظاہر کیا ہے۔ اگر چہ یہ فیصلہ قومی سلامتی کے نام پر لیا گیا تھا لیکن اس سے ریاستی عوام کو جن بےبیان مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا، اُسکا ایک ترقی پسند سماج میں تصوربھی نہیں کیا جاسکتا، کیونکہ اس کی وجہ سے نہ صرف عوام الناس کے معمولات بُری طرح متاثر ہوئے تھے بلکہ ریاست، خاص کر وادیٔ کشمیر کی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔ ماہرین نے اس فیصلے کو ابتداء میں ہی حقوق انسانی کی پامالی، سماجی زندگی میں خلل اور معیشت کو نقصان پہنچانے کی ایک کوشش قرار دیا تھا۔چانچہ عوامی سطح پر ہمہ گیر پیمانے پر اس فیصلے پر برہمی کا اظہار کیا جا رہا تھا اور سیاسی و نظریاتی صفوں کے آر پار کم