تازہ ترین

شوپیان کی دوشیزہ کااغواء اور قتل،حقوق کمیشن کی ڈپٹی کمشنر وایس ایس پی پلوامہ کورپورٹ پیش کرنے کی ہدایت

سرینگر// شوپیاںمیں یکم فروری کو نامعلوم مسلح افراد کی طرف سے ایک دوشیز کی اغوا کے بعد ہلاکت کے واقعے میں بشری حقوق کے ریاستی کمیشن نے ایس ایس پی پلوامہ اور متعلقہ ڈپٹی کمشنر کو6مارچ تک مفصل رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔ شوپیاںمیں یکم فروری کو دوران شب نامعلوم مسلح افراد نے ایک دوشیزہ عشرت منیر ساکن ڈانگر پورہ پلوامہ کو اغواکرنے کے بعد زینہ پورہ شوپیاں میںگولیاںمار کر ہلاک کرڈالا۔ انسانی حقوق کے ریاستی کمیشن کے چیئرمین جسٹس(ع) بلال نازکی نے سنیچر کو متعلقہ ضلع و پولیس انتظامیہ کے سربراہوں کو معاملے کی نوعیت سے رپورٹ پیش کرنے کی ہدات دی،جبکہ کیس کی آئندہ شنوائی6مارچ کو مقرر کی گئی۔ بشری حقوق کے مقامی کمیشن کی طرف سے یہ نوٹسیں،سینٹر فار پیس اینڈ پروٹیکشن آف ہیومن رائٹس کے چیئرمین ایم ایم شجاع کی طرف سے اس واقعے سے متعلق کمیشن میں عرضی پیش کرنے کے بعد اجراء کی گئی۔ درخواست میں میڈیا رپوٹوں

برفانی تودوں سے ہوئی ہلاکتوں پر ڈاکٹر فاروق کو افسوس

سرینگر//برفانی تودے گرآنے کی وجہ سے ہوئی ہلاکتوں پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے گورنر سے مطالبہ کیاکہ جموں میں درماندہ کشمیری مسافروں کو سرینگر بذریعہ طیاروں کے پہنچانے کے انتظامات کئے جائیں اور شاہراہ پر درماندہ مسافروں کو منزل مقصود تک پہنچانے کیلئے لائحہ عمل ترتیب دیا جائے۔ایک بیان میں ڈاکٹر فاروق عبداللہ نیبرفانی تودوں کی زد میںآکر ہوئی ہلاکتوں پر افسوس اور مہلوکین کے کنبوں سے ہمدردی کااظہار کیا۔ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ برفانی تودوںکی زد میںآکر سینکڑوں مکان زمین بوس ہوگئے ہیں اور اُن میں مقیم کنبے کھلے آسمان تل آگئے ہیں۔انہوں نے حکومت پرزوردیا کہ وہ بے گھر ہوئے کنبوں کے قیام وطعام اور اُن کی بحالی کے فوری طور اقدام کریں۔نیشنل کانفرنس کے صدر نے حکومت سے اپیل کی کہ سرینگر جموں شاہراہ کے بند ہونے کی وجہ سے جموں میں درماندہ مسافروں کو خصوصی طیا

ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی

کپوارہ // شاٹھ گنڈ بالا ماور لنگیٹ علاقہ میں اس وقت کہرام مچ گیا جب ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی ایک کمسن بچہ کی موت کا سبب بن گئی ۔واقعہ کے خلاف علاقہ کے لوگو ں میں زبردست غم و غصہ پایا جارہا ہے ۔تفصیلات کے مطابق ماور علاقہ میں ہفتہ کی صبح کو 4سالہ عادل بشیر ولد بشیر احمد اچانک بیمار پڑ گئے اور جب اس کے درد میں اضافہ ہوا، تو افراد خانہ نے اُسے لنگیٹ اسپتال پہنچانے کے لئے مقامی سڑک پر لایا تاہم وہا ں پر ایک بھی گا ڑی موجود نہیں تھی ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ شاٹھ گنڈ بالا ہرل ماور سڑک پر ہے اور یہا ں ٹرانسپورٹ کا کوئی انتظام نہیں ہے جس کے باعث علاقہ کے لوگو ں جن میں مریض ،طلبہ ،تجارت پیشہ اور دیگر شامل ہیں، کو سخت مشکلات کا سا منا کرنا پڑتا ہیں ۔مقامی لوگو ں نے واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کی وجہ سے مریض کو بر وقت اسپتال نہیں پہنچایا جاسکا اور یہی وجہ ہے

مشیر ریاست کے سیاسی نمائندوں کے برابر نہیں :سوز

سرینگر//پردیش کانگریس کے سابق صدر پروفیسر سیف الدین سوزنے لداخ خطے کو صوبے کا درجہ دیئے جانے کے گورنر انتظامیہ کے فیصلے پر شدید ردعمل کااظہار کرتے ہوئے سوال کیا ہے کہ کیا گورنر کی تین نفری مشاورتی کمیٹی ریاست کے سیاسی نمائندوں کے  برابر ہوسکتی ہے؟ایک بیان میں پروفیسر سیف الدین سوزنے کہا کہ گورنر ستیہ پال ملک نے لداخ خطے کو علیحدہ ڈویژن قرار دے کر اُس خطے میں بے چینی کی فضاء پید اکر دی ہے ۔بنیادی طور پر یہ بے چینی اس لئے پیدا ہو گئی ہے کہ گورنر ملک نے لداخ خطے کی سیاسی جماعتوں کے ساتھ اِس مسئلے پر کوئی گفت و شنید نہیں کی ہے۔ اُن کو خاص طور کرگل خطے کی سبھی سیاسی جماعتوں کے ساتھ بات کرنا چاہئے تھی۔گورنر ملک کا طرز و فکر بنیادی طور پر ٹھیک نہیں ہے کیونکہ وہ اپنے عہدے کو منتخب حکومت کا نعم البدل سمجھتے ہیں جو بالکل غلط ہے۔ اُن کو یہ سوچنا چاہئے کہ وہ عارضی طور پر مرکز کی نمائندگی کرتے

شاہ فیصل کاپیرپنچال اور وادی چناب کے لوگوں کو مشورہ

سری نگر/(یو این آئی) سابق آئی اے ایس آفیسر ڈاکٹر شاہ فیصل نے لداخ کو الگ انتظامی صوبے کا درجہ دینے کی تازہ اور گرم بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہا کہ پیر پنچال اور وادی چناب کو الگ انتظامی صوبے کادرجہ حاصل کرنے کے لئے وہاں کے لوگوں کو ایک عوامی تحریک شروع کرنی چاہئے۔ ڈاکٹر شاہ فیصل نے اپنے فیس بک پوسٹ کے ذریعے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ الگ انتظامی صوبے کا درجہ حاصل کرنے کے لئے پیر پنچال اور وادی چناب کے لوگوں کو عوامی سطح پر ایک تحریک شروع کرنی چاہئے اور کسی بھی سیاسی پارٹی کو جھوٹے وعدے کرکے اس معاملے پر سیاست کرنے کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ پیر پنچال اور وادی چناب کو اپنی مخصوص جغرافیائی پوزیشن اور ریاستی راجدھانی سے کافی دوری پر واقع ہونے کے پیش نظر الگ انتظامی صوبے کا درجہ دیا جانا چاہئے۔ لداخ کو الگ انتظامی صوبے کادرجہ دینے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا

درگمولہ میں خونخوار تیندواپکڑاگیا

کپوارہ//اشرف چراغ //کپوارہ قصبہ کے مضافات درگمولہ میں ہفتہ کو ایک خونخوار تیندوہ پکڑا گیا ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ ایک خونخوار اور جسیم تیندوے نے گزشتہ ایک مہینے سے درگمولہ اور اس کے قریبی دیہات میں ادھم مچا دی تھی جس کی وجہ سے لوگ زبردست خوف زدہ تھے ۔تفصیلات کے مطابق ہفتہ کی صبح کو ہی تیندوہ بستی میں دا خل ہو ا اور نیو سکول میں پناہ لی تاہم بعد میں وہاں سے چلا گیا اور درگمولہ میں قائم بی ایڈ کالج کے غسل خانہ میں پناہ لی تاہم بعد میں یہ لوگو ں کی توجہ کا مر کز بنا اور لوگو ں کی بڑی تعداد بی ایڈ کالج کی طرف روانہ ہوئی ۔مقامی لوگو ں نے فوری طور محکمہ وائلڈ لائف کو مطلع کیا جس کے بعد ایک ٹیم وہاں پہنچ گئی اور تیندوے کو قابو میں لینے کے لئے ا سے بے ہوشی کا انجکشن دیا اور اپنی تحویل میں لیا ۔      

مقبول بٹ اورافضل گورو تحریک کے محسن،مزاحمتی اور عسکری جماعتوں کا برسیوں پر خراج عقیدت

سرینگر//حریت (ع)، لبریشن فرنٹ،فریڈم پارٹی،انجمن شرعی شیعیا ن ،پیپلز لیگ،محاذآزادی، پیپلز فریڈم لیگ،تحریک کشمیر،سالویشن مومنٹ، مسلم خواتین مرکز،تحریک استقلال اور ینگ مینز لیگ نے محمد مقبول بٹ اور محمد افضل گورو کو اُن کی برسیوں پر خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ دونوں سپوتوں کی قربانیاں ایک منفرد حیثیت رکھتی ہیں۔مزاحمتی قائدین نے انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے اپیل کی کہ تہاڑ جیل میں دفن دونوں حریت پسندوں کے باقیات کشمیری قوم کو واپس کرنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ حریت (ع) کے محبوس چیئرمین میرواعظ محمد عمر فاروق نے رواں تحریک آزادی کے ہر اول دستے کے قائد اور سرکردہ رہنما محمد مقبول بٹ کو انکی35ویں اور کشمیر کے مایہ ناز سپوت محمد افضل گورو کو انکی چھٹی برسی پر خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے حق و انصاف کی جدوجہد میں انکی قربانیوں کو ناقابل فراموش قرار دیا ہے۔ میرواعظ نے کہا کہ حق و انصاف کے حص

بجلی ٹرانسفارمرمہینے میں چار مرتبہ خراب

گاندربل//گاندربل کے حکیم گنڈ میں نصب 63 کلو واٹ بجلی ٹرانسفارمر پچھلے ایک ماہ کے دوران چار مرتبہ خراب ہوا جس کے باعث پورا علاقہ ایک ماہ سے گھپ اندھیرے میں ڈوبا ہے۔حکیم گنڈ کے ایک باشندے رئیس احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ’پچھلے ایک ماہ سے محلہ میں نصب 63 کلو واٹ بجلی ٹرانسفارمر چار مرتبہ خراب ہوا جس کے نتیجے میں پورا علاقے میں شام ہوتے ہی اندھیرا چھاجاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ٹرانسفارمر کو جیسے ہی ٹھیک کرکے علاقے میں نصب کردیا جاتا ہے تو ایک یادو گھنٹے کے بعد ہی پھر خراب ہوجاتا ہے۔مقامی لوگوں نے بستی میں 100 کلو واٹ ٹرانسفارمر نصب کرنے کا مطالبہ کیا ۔  

ڈورومیں11ملازمین معطل

اننت ناگ//تحصیلدار ڈورو نے ایس ڈی ایم آفس و تحصیل آفس ڈورو میں تعینات 11ملازمین کو ڈیوٹی سے غیر حاضر رہنے پر معطل کیا ہے ۔تحصیلدار ڈورو مظفر احمد ملک نے ایس ڈی ایم آفس و تحصیل آفس کا اچانک معائینہ کرکے 11ملازمین کو ڈیوٹی سے غیر حاضر پایا ،جس پر موصوف نے ایک حُکمنامہ زیر نمبر 181-83/AC/TDجاری کرکے سبھی غیر حاضر ملازمین کو معطل کیا ہے ۔معطل شدہ ملازمین میں1آفس قانون گو، 2جونیئر اسسٹنٹ ،1ڈرائیوراور7درجہ چہارم کے ملازمین ہیں ۔  

جنوبی کشمیر میں تیسرے روز بھی معمول کی زندگی درہم برہم

اننت ناگ//تباہ کن برف باری کے سبب جنوبی ضلع اننت ناگ میں ہفتہ کو بھی معمول کی زندگی پوری طرح درہم برہم رہی ۔ضلع کے کئی علاقوں میں لوگوں نے بجلی اورپانی کی عدم دستیابی اور سڑکوں سے برف نہ ہٹانے پر برہمی کا اظہار کیا ہے ۔ضلع کے اچھ بل ماگرے پورہ کے لوگوں نے رابط سڑک سے برف نہ ہٹانے کا الزام عائد کرتے ہوئے محکمہ آر اینڈ بی کے خلاف احتجاج کیا ہے ۔مظاہرین نے کہا کہ محکمہ لوگوں کو راحت پہنچانے میں مکمل طور پر ناکام ہوا ہے ۔بٹہ گنڈ ویری ناگ کی رابطہ سڑک بھی برف سے ہنوز ڈھکی ہے ،جس کے سبب آبادی کو عبور و مرور میں مشکلات درپیش ہیں ۔اُدھر کانچلو کنڈ کے لوگوں نے انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ علاقہ کی تمام رابط سڑکیں برف سے ہنوز ڈھکی ہیں جس کے سبب دردرزہ میں مبتلا ایک خاتون کو کئی کلومیٹر چار پائی پر اسپتال پہنچایا گیا ۔زملگام ڈورو کے لوگوں نے علاقے میں پینے کے پانی کی قلت کی شکایت کر

اوڑی کے متعدد دیہات ہنوز منقطع

اوڑی// سرحدی قصبہ اوڑی میں حالیہ بھاری برفباری کے نتیجے میں متعد دیہات کی ربطہ سڑکیں تیسرے روز سے بند ہیں جس کی وجہ سے اِن علاقوں کے رہنے والے لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ان علاقوں میں باڑین، بونیار میدانن، گگڑہل، جبڈی، کورالی، چوٹالی، سمالی، برنیٹ، دْدرن،ماچھی پتھرہکلس،مایاں ،ناگاڈائی،براری پورہ،مْکام پیرنیاں،ہتھلنگا، موٹھل، صورہ، بلکوٹ، سلیکوٹ، چرنڈہ، بٹگرں،گوہالن شامل ہیں۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ رابطہ سڑکیں بند ہونے کی وجہ سے مریضوں کو اسپتال لے جانے میں انہیں طرح طرح کے مسائل درپیش ہیں۔کئی دیہات میں غذائی اجناس کی قلت کی شکایات موصول ہو رہی ہیں۔چوٹالی سے ایک شہری نے بتایا کہ اْنہیں راشن کی قلت ہے اور اْن کے علاقے کے لوگ پیدل میدانن راشن گھاٹ پر راشن لینے کے لئے پہنچے مگر گھاٹ منشی موجود نہیں تھا اور انہیں خالی ہاتھ گھر واپس لوٹنا پڑا۔اوڑی اور بونیار کے دیگردیہات سے

بنہ پورہ ترہگام کی اندرونی سڑکیں بدستور بند

کپوارہ// ترہگام کی کئی اندرونی سڑکو ں سے ابھی تک برف نہیں ہٹائی گئی ۔کال محلہ بنہ پورہ ترہگام کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ محکمہ تعمیرات عامہ نے کنن پوشہ پورہ سڑک سے برف ہٹائی تاہم دیگر رابطہ سڑکو ں سے برف نہیں ہٹائی گئی ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ کال محلہ رابطہ سڑک سے برف نہ ہٹانے کی وجہ سے برف مکانو ں کی چھتو ں کو چھو رہا ہے جس کے باعث لوگو ں کو عبور و مرور میں زبردست مشکلات درپیش ہیں ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ معاملہ کئی بار متعلقہ محکمہ کی نو ٹس میں بھی لایا گیالیکن انہو ں نے لوگو ں کے مشکلات کی طرف کوئی بھی توجہ نہیں دی اور انہیں متبادل سڑک رابطہ کا استعمال کرنا پڑتا ہے ۔اس دوران بنہ پورہ ترہگام کے لوگو ں نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ حالیہ برف باری کی وجہ سے یہا ں کی ترسیلی لائنو ں کو نقصان پہنچ چکا ہے لیکن اُن کی مرمت کیلئے کوئی اقدام نہیں کیا گیا ہے۔  

پسیوں کے مقامات پیدل عبور کرنے پر پابندی عائد

رام بن //جموں سرینگر شاہراہ کے بند رہنے کی وجہ سے درماندہ ہوئے سینکڑوں مسافروں اور ڈرائیوروں نے ہفتہ کے روز رام بن کے مقام پر انتظامیہ کے خلاف مظاہرہ کیا۔ وہ شاہراہ کی فوری بحالی کا مطالبہ کرنے کے ساتھ ساتھ دیگر سہولیات کی فراہمی کی بھی مانگ کر رہے تھے۔ قابل ذکر ہے کہ گزشتہ روز پسی کی زد میں دو غیر ریاستی ملازمین کی موت کے بعد پولیس اور انتظامیہ نے لوگوں کے پیدل پسیاں عبور کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی ہے جس کی وجہ سے لوگوں کے لئے سفر جاری رکھنا مشکل ہو گیا ہے ۔دریں اثنا سینکڑوں مسافر جموں میں درماندہ ہوگئے ہیں۔ ان درماندہ لوگوں کا کہنا ہے کہ انہیں گوناگوں مشکلات کاسامنا ہے۔ انہوں نے مقامی ہوٹل مالکان اور دکانداروں پرگراں فروشی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ ہماری مجبوری کا ناجائز فائدہ اُٹھاتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اب ان کے جیب خالی ہوگئے ہیں اور شاہراہ اگر مزید بند رہی تو انہی

عمر عبداللہ کا بیروہ میں لازمی خدمات بحال نہ ہونے پرتشویش

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے حلقہ انتخاب بیروہ میں حالیہ برفباری کے بعد لازمی خدمات بحال نہ ہونے پرتشویش کا اظہار کرتے ہوئے ضلع انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ لوگوں کی راحت رسانی کیلئے جنگی بنیادوں پر اقدامات کریں۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ انتخاب کے 80فیصد علاقوں میں ابھی بھی بجلی اور پینے کے پانی کی سپلائی بحال نہیں ہوپائی ہے ، جس کی وجہ سے سردیوں کے ایام میں آبادی کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ انہوں نے متعلقہ حکام سے تاکید کی کہ بجلی اور پینے کے پانی کی مکمل سپلائی بحال کرنے کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں۔ عمر عبداللہ نے کہا کہ حلقہ انتخاب کے بیشتر علاقوں کی سڑکوں اور رابطہ سڑکوں سے ابھی تک برف نہیں ہٹائی گئی ہے جس کی وجہ سے لوگوں خصوصاً مریضوں کا عبور و مرور مشکل بن گیا ہے۔   

مرگنڈ کنگن میں کتوں کا حملہ،3سی آر پی اہلکار اور خاتون زخمی

گاندربل// مرگنڈ کنگن میں قائم سی آر پی ایف 118 بٹالین کیمپ پر کتوں کے ایک جھنڈ نے حملہ کردیا جس کے نتیجے میں سی آر پی ایف اہلکاروں سمیت چار افراد زخمی ہوگئے۔مرگنڈ کنگن میں قائم 118 سی آر پی ایف کیمپ پر درجنوں آوارہ کتوں کے ایک جھنڈ نے اچانک حملہ کردیا جس کے نتیجے میں تین سی آر پی ایف اہلکار اور سڑک سے گزر رہی خاتون زخمی ہوگئی۔زخمیوں کو ٹراما ہسپتال کنگن منتقل کردیا جہاں علاج ومعالجہ کرکے گھر روانہ کردیا گیا۔اس موقع پرمقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کنگن مارکیٹ میں آوارہ کتے گھومتے رہتے ہیں اور اکثرو بیشتر شہریوں پر حملے کردیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ آج تک سینکڑوں افراد پر حملہ کرکے ان کو زخمی کیا گیا ۔  

شوپیان میں محکمہ پی ایچ ای کے خلاف احتجاج

شوپیان//جنوبی ضلع شوپیان کے دیوپورہ کی آبادی نے پینے کے پانی کی عدم دستیابی کے پیش نظر محکمہ پی ایچ ای شوپیان کے خلاف احتجاج کیا۔احتجاجی مظاہرین نے کہا کہ دیوپورہ شوپیان میں حالیہ برفباری کی وجہ سے پائپ لائن کو نقصان پہنچا جس کی وجہ سے دیوپورہ علاقے میں پینے کے پانی کی زبردست قلت ہوگئی ہے۔دیوپورہ کے لوگوں نے بتایا کہ گائوں میںبرفباری ہونے کے بعدپینے کے پانی کی سخت قلت ہے اور پانی کیلئے اب برف کا استعمال کرتے ہیں ۔ادھر ملک محلہ ،آرم محلہ، بٹہ پورہ اور ملک محلہ بونہ بازار شوپیان کے لوگوں نے بھی پینے کے صاف پانی کی شدید قلت سے پریشان ہو کر محکمہ کے خلاف احتجاج کیا ہے۔آرم محلہ بٹہ پورہ کے لوگوں نے بتایا کہ پچھلے تین دنوں سے وہ پانی کی بوند بوند کیلئے ترس رہے ہیں۔  

کرناہ ،کیرن ،گریز اور مژھل کی سڑکیں ہنوز بند

سرینگر //حالیہ برف باری سے بند ہوئی کرناہ ،کیرن، مژھل اور گریز کی سڑکوں سے برف نہ ہٹانے کے سبب اُن علاقوں میں مقیم آبادی کی زندگیاں اجیرن بن چکی ہیں اور اُن علاقوں کی آبادی گذشتہ ایک ماہ سے گھروں میں محصور ہیں۔انہوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ سڑکوں کو کھول کر اُن کیلئے غذائی اجناس پہنچایا جائے۔ان علاقوں میں دکانوں پر ضروریات کی چیزوں کی قلت ہے، دالیں، سبزیاں، پھل ، مرغ اور گوشت تودور کی بات معصوم بچوں کیلئے دودھ تک نہیں مل رہا ہے ۔اسی طرح ادویہ دکانوں پر کئی اہم اور ضروری ادویات بھی نایاب ہو چکی ہیں ۔کرناہ میں سنیچر کو بیوپار منڈل نے احتجاج کیا اور سرکار سے مطالبہ کیا ہے کہ کرناہ کپوارہ شاہراہ کو کھولنے کے اقدامات کئے جائیں۔بیوپار منڈ ل کے کارکنان کا کہنا ہے کہ اس وقت چوکی بل کپوارہ میں کرناہ کی کئی گاڑیاں جن میں مال لدا ہوا ہے تباہ ہو رہا ہے جبکہ سینکڑوں مسافر بھی کپوارہ اور چو

مزید خبریں

اسلام ایثار اورقربانی کا درس دیتا ہے:مولانا قاسمی موجودہ موسمی حالات میں متاثرین کی مدد کریں سرینگر//جمعیت علماء اہل السنت والجماعت نے برفانی تودوںکی زد میںہوئی ہلاکتوں پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے امت مسلمہ سے سے اپیل کی کہ اسلام ایثار اور ہمدردی کا درس دیاتا ہے اسلئے ہمیں اپنے متاثرین کی مدد کیلئے بھرپور تعاون کرلینا چاہئے۔جمعیت کے سکریٹری اورمہتمم دارالعلوم شیری بارہمولہ مولانا شیخ عبدالقیوم قاسمی نے کہا کہ خیر خواہی اور انسانیت نوازی کے سلسلے میں بے شمار احادیث وارد ہوئی ہیں اور اسلام نے روز اول سے درد دل کا سبق دیا ہے ۔مولانا قاسمی نے کہا کہ موسم سرما میں اکثر وبیشتر اہلیان کشمیر کو ہر جگہ بالخصوص جموں سرینگر شاہراہ پر دقتوں اور پریشانیوںکا سامنا کرنا پڑتا ہے اور کئی کئی روز تک روڑ بند رہنے کی وجہ سے مسافراور سیاح مصائب اور آلام سے دوچار ہوتے ہیں ایسے حالات میں ہر فرد بش