تازہ ترین

سکول کیلئے بس کی فراہمی کا مطالبہ

 کشتواڑ// اسکولی طلبا نے پیر کے روزجموں کشتواڑ شاہراہ کو ہستی کے قریب بند کرکے ضلع انتظامیہ کے خلاف زوردار احتجاج کیا۔ ہستی ، کاندنی ورڑا کے طلبا جو قصبہ کے مختلف اسکولوں میں زیرتعلیم ہیں،نے کہاکہ انہیں کشتواڑ آنے جانے کیلئے ٹرانسپورٹ سہولت نہیں ملتی جس وجہ سے ان کی تعلیم بری طرح سے متاثر ہورہی ہے ۔اس دوران دسویں جماعت کے طالب علم عاطف منظور نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہیں احتجاج کرنے کا کوئی شوق نہیں لیکن وہ اس کیلئے مجبور ہوئے ہیں کیونکہ انہیں ہر روز گھر سے بارہ کلومیڑ دور اسکول جانا پڑتا ہے جس دوران ٹرانسپورٹ کے ناقص انتظامات سے سخت مشکلات کاسامناہے ۔انہوںنے مطالبہ کرتے ہوے کہا کہ سکول کیلئے گاڑی فراہم کی جائے تاکہ وہ آسانی سے آجاسکیں ۔آٹھویں جماعت کی ایک طالبہ نے بتایا کہ اگرچہ انہیں گاڑی والے سوار کرتے ہیں لیکن پھر ائورلوڈ ہونے پرگاڑیوں کا چالان کیا جاتا ہے جس پر ا

بارات لے جاری گاڑی حادثہ کا شکار

کشتواڑ// پیر کی شام 6 بجے کے قریب ہڑنہ سے پلماڑ بارات لے جارہی گاڑی حادثے کاشکار ہوگئی تاہم مسافر معجزانہ طور پر بچ گئے ۔گاڑی زیرنمبرJK17 0452 ہڑنہ کے قریب سڑک سے لڑھک کر نیچے گرگئی جس میں سوار تمام مسافر بچ گئے۔ ذ رائع کے مطابق حادثہ کو وقت پیش آیا جب ڈرائیور سڑک کے ایک تنگ مقام پر دوسری طرف سے آ رہی گاڑی کو جگہ د ینے کی کوشش کر رہا تھاجس دوران سڑک دب جانے سے گاڑی سڑک سے لڑھک کر کھیتوں میں جاگری تاہم اس میں سوار تمام مسافر بچ نکلے۔ چوکی انچارج ڈیٹھ پیٹھ وکرم سنگھ نے بتایا کہ اس گاڑی میں 6سے 7مسافر سوارتھے جن میں بچے و خواتین بھی شامل ہیں تاہم خوش قسمتی سے تمام مسافر محفوظ رہے۔  

جکیاس بھلیسہ میں کانگریس کا مظاہرہ

بھدرواہ//بلاک کانگریس کمیٹی جکیاس بھلیسہ نے مقامی مسائل پر احتجاجی مظاہرہ کیا۔اس موقعہ پر مقررین نے یک زبان ہوکرجکیاس میں ڈگری کالج کی پر زورمانگ کی ۔ان کاکہناتھاکہ چونکہ چلی پنگل کے طلبہ اور طالبا ت کو پہاڑی اور دشوار راستوںسے چل کر یا تو ڈگری کالج کلہوتران یا پھر بھدرواہ میلوںکی مسافت طے کر کے جانا پڑتا ہے اس لئے انہیں مقامی سطح پر ہی اعلیٰ تعلیم کی حصولی کا موقعہ فراہم کیاجائے ۔اس کے علاوہ بجلی کی فیس میںکمی کرنے ،بٹھیاس ۔جکیاس ،گونڈوروڈ اور دیگر حلقہ اسمبلی بھدرواہ اور اندروال کی سڑکوںکوفوری طور پر مکمل کئے جانے ،ایم جی نریگا کے تحت مزدوروںکی بقایا اجرت واگذار کرنے ،نریگا مزدوروں کے سالانہ ایام بڑھاکر دو سو دن کرنے ،تمام محکموںکے ڈیلی ویجرز ،کیجول ،کنٹریکچول اور ایڈہاک عارضی ملازمین کو مستقل کرنے اور ان کی بند پڑی تنخواہوں کو واگزار کرنے کی مانگ کی گئی ۔انہوں نے پنشن ہولڈروںکی پنشن

آپسی بھائی چارہ

رام بن/تحصیل پوگل پرستان جہاں آپسی بھائی چارے کی ایک مثال کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے وہیں اس آپسی بھائی چارے کو مزید نکھارنے کیلئے پوگل اور ملیگام کے نوجوں طبقہ نے علاقہ کے معززین کی سربراہی میں ایک قدم اٹھایا ہے اور یہ آپسی بھائی چارے کی جانب یہ قدم خود میں ایک مثال بن گیا ہے جہاں پہلے سے ہی ہندو مسلم بھائی چارہ قائم ہے اور پھر اس میں بہتری لانے کی کوشیش قابل سرہانا قدم ہے جی ہاں علاقہ کے مشہور مقام سرگلی جہاں گرین ٹاپ سرگلی کے نام کا ایک میدان واقع ہے اور اس میدان پر گزشتہ چار سال سے ایک کرکٹ مقابلہ کھیلا جاتا ہے جس میں ایک ٹیم ملیگام اور دوسری ٹیم پوگل کی جانب سے کرکٹ میدان میں اْترتی ہیں اور مقابلہ کے دوران ہزاروں تماشائی وہاں موجود ہوتے ہیں واضح رہے کہ یہ کرکٹ مقابلہ آپسی بھائی چارہ کو بنائے رکھنے کیلئے کھیلا جاتا ہے جہاں پہلے دو مقابلوں میں ملیگام نے پوگل کی ٹیم کو جیت نے

مہومیں میڈیکل کیمپ کا اہتمام

رام بن//رام بن کی تحصیل کھڑی کے مہو گائوں میں آپریشن سد بھائونا کے تحت راشٹریہ رائفلز نے ایک طبی کیمپ کا اہتمام کیا جس میں  سینکڑوںمریضوں کا معائنہ کیا گیا۔کیمپ کا افتتاح فوج کے افسران نے گائوں کے منتخب نمائندوں کی موجودگی میں کیا۔کیمپ میں 3سیول ہسپتالوں کے ڈاکٹروں سمیت آرمی میڈیکل کور کے 2ڈاکٹروںاور نیم طبی عملے نے بھی شرکت کی ۔اس دوران مختلف بیماریوں میں مبتلا افراد کی طبی جانچ کی گئی۔کیمپ میں مرد وخواتین اور بچوں کو ڈاکٹروں نے معائنہ کیا اور ان میں مفت دوائیاں تقسیم کیں۔میڈیکل افسران نے دور دراز علاقوں سے آئے مریضوں کو ان کی بہتری کے لئے یہ کیمپ منعقد کرنے کے بارے میں بتایا۔  

پینے کے صاف پانی کی شدید قلت

راجوری //راجوری کے پنج پیر اور چلڈرن پارک کے مکینوں نے پینے کے صاف پانی کی شدید قلت کو لے کر جموں راجوری شاہراہ کو ٹریفک کی آمدورفت کیلئے بند کر تے ہوئے احتجاج کیا ۔پنج پیر کے مکینوں کی ایک بڑی تعداد جس میں خواتین بھی شامل تھیں جموں راجوری شاہراہ کو بند کرنے کے بعدٹائر بھی جلائے ۔مظاہرین نے ضلع انتظامیہ اور محکمہ پی ایچ ای کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ عوام کو درپیش مسائل کی جانب کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔مظاہرین نے محکمہ پی ایچ ای کے اعلیٰ آفیسران اور ریاستی انتظامیہ کیخلاف شدید نعرے بازی کی تاہم اس دوران تحصیلدار راجوری دیگر آفیسران کے ہمراہ موقعہ پر پہنچے اور انہوں نے مظاہرین کو یقین دلا یا کہ ان کو پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے گا جس کے بعد شاہراہ کو گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بحال کیا گیا ۔دریں اثناء چلڈرن پارک راجوری کے مکینوں نے گوجر منڈی تا پنجہ چوک سڑک کو بند کر کے

حضوری باغ میں بجلی ٹرانسفارمر عوام کے نام وقف

جموں //بی جے پی کے سینئر لیڈر و سابقہ وزیر ست شرما نے ویسٹ اسمبلی حلقہ کے حضوری باغ علاقہ میں ایک بجلی ٹرانسفارمر ک عوام کے نام وقف کیا ۔انکے ہمراہ وارڈ نمبر 41 کے کارپوریٹر سنجے بارو ،ضلع صدر بی جے پی ایودھیا گپتا ،ساٗل جی مہاراج و علاقہ کے دیگر لوگ بھی تھے۔یہ ٹرانسفارمر 9 لاکھ روپے کی لاگت سے نصب کیا گیا ہے۔ اس موقعہ پر ست شرما نے کہا کہ یہ اس علاقہ کے لوگوں کی ایک دیرینہ مانگ تھی کیونکہ علاقہ میں لاگت کم وو لٹئیج کی وجہ سے انہیں کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا تھا اور اب جبکہ ٹرانسفارمر نصب کیا گیا تو اس سے علاقہ کے مکینوں کو کافی راحت ہوگی۔اس موقعہ پر انہوں نے کہا کہ بی جے پی عوام کی بھلائی کے لئے وعدہ بند ہے اور ’’سب کا ساتھ ،سب کا وکاس ،سب کا وشواس ‘‘ میں یقین رکھتی ہے۔انہوں نے پی ڈی ڈی کی جانب سے لوگوں کی ضروریات پر دھیان دینے پر انکی ستائش کی۔ شرما نے

مزید خبرں

شہبازمرزا کی خبر سے متعلق وضاحت کہا اہلیان گول کو یقین دلاتا ہوں کہ بھاجپا میں شمولیت کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا گول//گزشتہ دو روز قبل شوشل میڈیا فیس بک اور وٹس ایپ پر پی ڈی پی ضلع صدر رام بن شہباز مرزا کی ایک تصویر وائرل ہوئی میں میں صاف طور سے یہ دکھائی دے رہا ہے کہ شہباز مرزا نے بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کی ہے۔ تاہم اِس تصویر کو لیکر شہباز مرزا کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا، اور عوامی حلقوں میں شہباز مرزا کے تئیں شیدید غم و غصے کی لہر پیدا ہو گئی، سوشل میڈیا پر تو چند مٹھی بھر افراد نہیں مرزا کے بھاجپا میں شمولیت کے فیصلہ کو اْس کا ذاتی فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ مرزا کا ایک ذاتی فیصلہ ہے اور ایک جمہوری ملک کا باشندہ ہونے کے ناطے ہر شہر ی کو یہ حق حاصل ہے کہ جب چاہیے اور جس پارٹی میں چاہیے شمولیت اختیار کر سکتا ہے۔تاہم شہباز کے زیادہ تر خیرخواہوں نے مرزا کے