تازہ ترین

اندھ میں ریلوے سے منسلک نجی کمپنیوں کی من مانیاں عروج پر،مقامی آبادی پابہ شعلہ

گول//کٹرہ بانہال ریلوے لائن سب ڈویژن گول کے کئی مقامات پر قومی کمپنیاں کام کر رہی ہیں جن میں گیمون ، پٹیل ایج، افکان ،ارکان وغیرہ شامل ہیں اوریہاں اندھ، سنگلدان ، دلواہ، داڑم وغیرہ مقامات پر یہ کمپنیاں کام کر رہی ہیں ہر جگہ سے کمپنیوں کی جانب سے عوام کے استحصال کی خبریں ہی موصول ہو رہی ہیں اور کمپنیوں کی جانب سے بستیوں اور دیگر جگہوں پر کوئی بھی سہولیات میسر نہیں ہیں جس وجہ سے لوگ کافی پریشان ہیں ، وہیں دوسری جانب جن لوگوں کی اراضی اس ریلوے ٹریک میں آئی ہے اور جن لوگوں کے رہائشی مکانات کو نقصان ہو رہا ہے انہیں بھی کوئی مدد نہیں دی جا رہی ہے اس کے بر عکس ان لوگوں کے بیروزگارنوجوانوں کو بھرتی کرنے سے بھی انکار کیا جا رہا ہے اور بیرون ریاست و مقام سے لوگوں کو لایا جا رہا ہے ۔ اس طرح جمعرات کو ساتویں دن بھی اندھ میں لوگوں نے اپنا احتجاج جاری رکھا ۔ مقامی لوگوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ک

ناچلانہ کا پسنجر شیڈ فوج کے زیر تصرف، عوام کیلئے بحال کرنے کا مطالبہ

بانہال // جموں سرینگر شاہراہ پر واقع ناچلانہ کے مقام کھڑی آڑپنچلہ کے مسافروں کیلئے تعمیر کیا گیا مسافر شیڈ فوج کے زیر استعمال رہنے کی وجہ سے اس شیڈ کی تعمیر کا مقصد ہی فوت ہوگیا ہے اور فوجی اہلکاروں کی طرف سے اس مسافر شیڈ کو استعمال کرنے کی وجہ سے مسافروں کو شیڈ کے باہر ہی گاڑیوں کے انتظار میں وقت گزارنا پڑتا ہے - کھڑی۔ آٹپنچلہ سے تعلق رکھنے والے ایک وفد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کھڑی مہو منگت رابطہ سڑک پر ناچلانہ پْل کے مقام ایک مسافر شیڈ تعمیر کیا گیا ہے لیکن بدقسمتی سے صبح سے شام تک یہ شیڈ فوجی اہلکاروں کے تصرف میں رہتا ہے جس کی وجہ سے مسافروں کو بارش ، برفباری اور دھوپ میں باہر ہی وقت گزارنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فوج کی گشتی پارٹیاں اپنے ٹھہرنے کیلئے صبح سے شام تک اسی شیڈ کے اندر اور باہر قیام کرتی ہیں جس کی وجہ کھڑی آڑپنچلہ اور مہو منگت سے تعلق رکھنے والے مرد و خواتین سمیت

پہاڑی سے گر کر خاتون کی موت

مہور//آج ضلع ریاسی کے گلابگڑھ کے لوگوں نے بٹھنڈی جموں میں ضلع انتظامیہ ریاسی کے خلاف مظاہرے کئے۔مظاہرین کا کہنا ہے کہ گزشتہ دو ماہ سے گلابگڑھ سڑک بند پڑی ہے جس کو بحال کرنے کیلئے انتظامیہ کی طرف سے کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔لوگوں نے کشمیر اعظمیٰ کو بتایا سڑک بند ہونے کی وجہ سے انہیں طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ دو ماہ سے ادویات،راشن اور تیل خاکی کی شدید قلت پائی جارہی ہے۔گلابگڑھ سڑک بند ہونے کی وجہ سے گزشتہ ایک ماہ کے دوران تین اموات پیش آئی۔ادھرجمعرات کو ایک 40 سالہ خاتون افروضہ بیگم زوجہ محمد صفدر ساکنہ دیول جو کہ محکمہ تعلیم میں ملازم تھی آج دیول سے مہور کی طرف جارہی تھی کہ نہوچ کے مقام پر پاؤں پھسلنے کی وجہ سے گہری کھائی میں جاگری اور موقع پر ہی موت واقع ہوئی۔ گلابگڑھ کے ایک شخص شبیر گیدرمت نے بتایا کہ اگر چہ انہوں نے کئی مرتبہ انتظامیہ کو اپنی ر

کشتواڑ میں خواجہ معین الدین چستیؒ کا عرس احترام کیساتھ منایا گیا

کشتواڑ//ملک کے دیگر حصوں کی طرح کشتواڑ میں بھی جمعرات کے روز کشتواڑ میںخواجہ معین الدین چستی ؒکا عرس نہایت ہی مذہبی جوش و جذبہ واحترام کے ساتھ منایا گیا ۔شاہ خاندان نے صد رانجمن تبلیغ الاسلام صوبہ جموں بوناستان کشتواڑ کے فرید مُصطفیٰ شاہ کی رہنمائی میںعرس منایا ۔اس موقعہ پر ایک خصوصی دعائیہ مجلس بھی منعقد کی گئی، جس میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔اسکے علاوہ مذہبی سکالروں نے خواجہ معین الدین چستی ؒکی زندگی پر روشنی ڈالی،جنھوں نے زندگی بھر لوگوں میں امن، خوشحالی اور بھائی چارہ کا پیغام پھیلایا۔  

گرتے پتھروں کی وجہ سے کشتواڑ۔ڈوڈہ شاہراہ دو گھنٹوں تک بند

کشتواڑ//کشتوڑ۔ڈوڈہ شاہراہ NH-244پر جمعرات کے روز تقریباً 2گھنٹوں تک ٹریفک معطل رہا ۔ اطلاعات کے مطابق کلیگڑھ میں گُذشتہ کئی دنوں سے بارشوں اور گرتے پتھروںکی وجہ سے ٹریفک جمعرا ت کے روز دو گھنٹوں تک معطل رہی۔ ڈی ایس پی ٹریفک زوہیب حسین نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کلیگڑھ علاقہ میںسڑک کے دونوں اطراف گرتے پتھروں کی وجہ سے ہم نے شاہرہ پر نقل و حرکت دو گھنٹوں تک معطل رکھی،تاکہ کوئی نقصان نہ ہو۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ لگاتار پسیاں گر آنے اور گرتے پتھروں سے شاہراہ پر ٹریفک کی نقل و حرکت معطل کردی گئی۔دریں اثنا، ٹریفک معطل رہنے کی وجہ سے مسافر بردار گاڑیوں ،ایمبولنس اور پرائیویٹ ٹرانسپورٹ کی بہت سی گاڑیاں شاہراہ پر دو گھنٹوں تک در ماندہ رہی ۔شاہراہ پر ملبہ ہٹانے کے بعد مسافروں اور گاڑیوں کو شاہراہ پر چلنے کی اجازت دی گئی۔

ڈوڈہ کا سرکاری دفاتر کا اچانک دورہ ADC

 ڈوڈہ // اسسٹنٹ ڈیولپمنٹ کمشنر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد اے ڈی سی امام دین نے ٹھاٹھری سب۔ڈویژن کے وام سے شکایات موصول ہونے کے بعد جمعرات کے روز سب۔ڈویژن کے سرکاری دفاتر، سکولوں ، اسپتال، محکمہ صحت عامہ کا اچانک دورہ کیا۔اے ڈی سی کے ہمراہ ایس ڈی ایم ٹھاٹھری انور حسین بانڈے بھی تھے۔اے ڈی سی نے محکمہ دیہی ترقیات کے دفتر کا بھی دورہ کیا اور تمام محکموں  کے سربراہوںکو ایڈوائزری جاری کی ،جس میں انہیں کہا گیا کہ اگرکسی بھی ملازم کے خلاف کوئی شکایت آئے گی تو اسے بخشا نہیں جائیگا۔  اسکے علاوہ اے ڈی سی نے تمام ملازموں کو ایماندارانہ ورک کلچر برقرار رکھنے کی صلاح دی، تاکہ لوگوں کے مسائل کا ازالہ ہو سکے ۔  

پوشن ابھیان کے تحت کٹرہ میں بیداری کیمپ کا اہتمام

ریاسی //آئی سی ڈی ایس پروجیکٹ ریاسی کی جانب سے جمعرات کے روز یہاں کٹرہ میں بی ڈی او کٹرہ اور محکمہ صحت کے اشتراک سے بلاک کٹرہ کے پنچایت ہٹ میں نوجوانوں کے لئے ایک بیداری پروگرام کا اہتمام کیا گیا ،جس میں آر ڈی ڈی، آئی سی ڈی ایس اور محکمہ صحت کے فیلڈ عملہ نے شرکت کی۔آئی سی ڈی ایس کی پوشن ٹیم نے کٹرہ میں نوجوانوں کے ساتھ بحث و مباحثہ کی ایک نشست منعقد کی اور انہیں صحت مند عادات سے باخبر کیا گیا  اور کہا گیا کہ ان عادات کا مستقبل میں کافی فائدہ ہوتا ہے۔پوشن ابھیان ورکشاپ کے دوران  نوجوانوں نے کوپوشن مکت بھارت مشن کو حاصل کرنے کیلئے محکمہ کو بھر پور مدد کرنے کی حلف لی۔اس موقعہ پر سی ڈی پی او انجم گنائی نے کہا کہ نوجوان قوم کا اثاثہ ہے اور ملک کا مستقبل صحت مند نوجوانوں میں مضمر ہے کیونکہ بد غذائی والے بچے مملک کی اقتصادی ترقی میں شرکت  نہیں کر سکتے ہیں، اسلئے ہمیں بد

مزید خبرں

پوچھال کشتوڑ میں پانی کی قلت کو لیکر لوگ سراپا احتجاج اے آئی بٹ کشتواڑ//قصبہ میں محکمہ صحت عامہ کی ناقص کار کردگی کی وجہ سے ضلع کے مختلف حصوں بشمول موضع پوچھل میں پانی کی قلت ایک سنگین مسئلہ اختیار کر گیا ہے۔پوچھال (پنچایت اے۔2 ) کے مکینوں  نے محکمہ صحت عامہ پرپانے کی پانی کے مسئلہ کے تئیں غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کرنے کی مذمت کی کیونکہ علاقہ میں مہینے میں10  سے لیکر  15  دنوں کے وقفہ کے بعد پانی سپلائی کی جاتی ہے، جس سے لوگوں کو کافی پریشانیوں کا سامنا ہے ۔موضع پوچھال کے عوام نے کہا کہ علاقہ میں پینے کے پانی کی شدید قلت ہے اور محکمہ صحت عامہ عوام کو پانی مہیا کرنے میں موثر اقدام اُٹھانے میں ناکام رہا ہے۔ مکینوں نے یہ بھی الزام لگایا کہ محکمہ صحت عامہ پانی کی تقسیم کاری میں امتیاز برت رہی ہے ۔موضع پوچھال پنچایت اے۔2کی سرپنچ کملیش کماری نے کہا کہ موضع کے مقامی