تازہ ترین

کتاب و سنت کے حوالے سے مسائل کا حل

سوال:بڑی مقدار میں نمونے کی ادویات ڈاکٹر کوSample بھی فراہم کرتی ہیں اور آئے روز طرح طرح کے تحفے (Gift)بھی دیتی ہیں۔ اس سب کا مقصد ایک تو یہ ہوتا ہے کہ ڈاکٹر کی اپنی ضروریات پوری کرناہوتا ہے لیکن دوسرا اہم مقصد ہوتا ہے کہ ڈاکٹر اس کمپنی کی دوائی مریضوں کو تجویز کرے۔اس طرح کمپنی کی دوائی زیادہ سے زیادہ فروخت ہوگی۔ اب ہمارا سوال یہ ہے کہ کمپنی کے یہ گفٹ اور samples رشوت کے دائرے میں آتے ہیں یا نہیں؟ دوسرا سوال یہ ہے کہ یہ کمپنیاں سود پر قرضے لے کر کام کرتی ہیں۔ اسی کاروبار سے وہ گفٹ بھی دیئے جاتے ہیں بلکہ کمپنیاں علم طب کے بارے میں بڑے بڑے سمینار منعقدکراتی ہیں یا ان کوSponserکرتی ہیں ان سمیناروں میں شرکت اس کے لئے ڈاکٹروں کو سفر خرچ بھی دیتی ہیں کیا سب لینا ڈاکٹروں کیلئے جائز ہے ؟ ڈاکٹر منصور احمد۔۔ سرینگر کیا ڈاکٹروں کیلئے دواسازکمپنیوں سے ملنے والے گفٹ لینا جائز ہے؟

اسلام انسانیت کا پیغام

 دنیا کے حق پرست ، غیر جانب دار اور بے لاگ مورخ،دانش ور ،مفکر اور منصف اس حقیقت کے معترف ہیں کہ اسلام لطف و کرم فیاضی اور اخوت کا دین ہے اور اُمت ِ مسلمہ ایک عظیم،شاندار اور پُروقار عقیدے کی امین ہے۔اسلام کی تعلیمات نہ تو کسی ذہین مفکر یار روشن خیال قانون دان کی مرتب کردہ تصنیف  ہ اور نہ ہی کسی خود ساختہ قوانین کا مجموعہ بلکہ یہ دین خدائی دستور حیات ہے اور ملت اسلامیہ دنیائے انسانیت کے لئے خیر و فلاح کی داعی ہے۔اسلام میں ہر مسئلے کا حل ہے اور اس کی تعلیمات ساری انسانیت کے لئے قابل عمل ہیں اور صرف ان کی بنیاد پر صالح ا ور پُر سکون معاشرہ وجود میں آسکتا ہے۔اسلام میںتمام لوگوں کے لئے بلا تفریق مذہب و ملت ،رنگ و نسل اور مشرب و مسکن ایسی ہدایات،احکامات اور رعایات ہیںکہ مسلم معاشروں میںغیر مسلم بھی آزادی و سکون کے ساتھ اپنے معتقدات و تصورات کے مطابق حیات مستعار کے ایام گزار سکتے

تازہ ترین