تازہ ترین

کرناٹک کا ناٹک

 کانگریس اورجے ڈی ایس سپریم کورٹ کی پناہ میں نئی دہلی //کرناٹک میں سیاسی ناٹک جاری ہے۔ برسراقتداراوراپوزیشن جماعتوں کے لیڈروں کی جانب سے ایک دوسرے پرمسلسل الزام تراشی کی جارہی ہے۔ اس دوران فلورٹسٹ معاملے میں نیا موڑآگیا ہے۔ کانگریس نے گورنروجوبھائی والا کے ذریعہ وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارا سوامی کو لکھے گئے خط کے خلاف سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ وہیں گورنروجوبھائی والا نے وزیراعلیٰ کو خط لکھ کرشام 6 بجے تک فلورٹیسٹ کی ہدایت دی ہے۔وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارا سوامی نے اسمبلی اسپیکرسے کہا- میں آپ کے اوپرفلورٹیسٹ پر فیصلہ چھوڑدیتا ہوں۔ یہ دہلی کے ذریعہ  ہدایت نہیں کی جائے گی۔ میں آپ سے گزارش کرتا ہوں کہ گورنرکے بھیجے گئے خط سے میری حفاظت کریں۔کرناٹک کے وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی گورنر کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ پہنچ گئے ہیں۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ گورنرکے تئیں میرے دل میں احترا

بی جے پی حکومت جرائم روکنے میں ناکام: پرینکا

نئی دہلی// کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے اترپردیش حکومت پر جرائم کو روکنے میں ناکام رہنے کا کا الزام لگاتے ہوئے کہاکہ وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت والی حکومت انہیں بھی اپنے فرض کی ادائیگی سے روک رہی ہے۔محترمہ واڈرا کو جمعہ کو اس وقت جبراََ گرفتار کرلیا گیا جب وہ اترپردیش کے سون بھدر میں ان کسانوں کے اہل خانہ سے ملاقات کرنے جارہی تھیں جنہیں اپنی زمین خالی کرنے سے انکار کرنے پر گولی مارکر قتل کردیا گیا تھا۔سون بھدر کے گھوڈوال علاقہ میں 17مئی کو پردھان اور گاوں والوں کے مابین تنازعہ میں فائرنگ ہوئی تھی جس میں دس لوگوں لوگوں کی موت اور 28 دیگر زخمی ہوئے تھے۔محترمہ واڈرا نے اپنی گرفتاری کے بعد ٹوئٹ کیا کہ اترپردیش حکومت کی ڈیوٹی ہے مجرموں کو پکڑنا۔ میرا فرض ہے جرائم سے متاثر لوگوں کے حق میں کھڑا ہونا۔ بی جے پی جرائم روکنے میں ناکام ہے ہی اور مجھے بھی اپنا فرض ادا کرنے

پرینکا کی گرفتاری افسوسناک:راہل

نئی دہلی// کانگریس صدر کے عہدہ سے استعفی دے چکے مسٹر راہل گاندھی نے پارٹی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا کی گرفتاری کو غیر قانونی اور افسوس ناک قرار دیتے ہوئے الزام لگایا کہ اترپردیش کی بی جے پی حکومت زیادتی پر اترآئی ہے اور اقتدارکا غلط استعمال کررہی ہے ۔ مسٹر گاندھی نے آج ٹوئٹ کیا[؟]اترپردیش کے سون بھدر میں پرینکا کی غیر قانونی گرفتاری افسوس ناک ہے ۔ سون بھدر میں اپنی زمین خالی کرنے سے منع کرنے والے کسانوں کو گولی مار کر بے رحمی سے قتل کردیا گیا تھا اور متاثرہ کنبوں سے ملاقات کے لئے جاتے ہوئے انہیں گرفتار کرنا اقتدار کی طاقت کا غلط استعمال ہے ۔ا س سے ثابت ہوتا ہے کہ اترپردیش کی بی جے پی حکومت میں عدم تحفظ بڑھ رہا ہے ۔[؟] کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال نے بھی ایک بیان جاری کرکے محترمہ واڈراکی گرفتار پر افسوس ظاہر کیا ہے اور اس کارروائی کو اترپردیش حکومت کی من مانی قرا ردیتے ہ

مریم نواز کے خلاف نیب کی جعلی ٹرسٹ ڈیڈ کی درخواست خارج

اسلام آباد// احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں مریم نواز کے خلاف جعلی ٹرسٹ ڈیڈ جمع کرانے کے معاملے پر نیب کی درخواست خارج کردی ہے۔احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی سربراہی میں جعلی ٹرسٹ ڈیڈ کیس کی سماعت ہوئی، ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب سردار مظفر عباسی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ٹرسٹ ڈیڈ جعلی تھی جب کہ عدالت کا ایکسکلوزیو دائرہ اختیار ہے۔مریم نواز نے نیب پراسیکیوٹر سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو ایک سال کیوں لگا عدالت کو یاد دلانے میں، نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ وہی عدالت کو بتا رہا ہوں، مریم نواز نے کہا کہ تھوڑی سی دیر کردی، بس ایک سال جس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ دیر آئے لیکن درست آئے۔ وکیل مریم نواز نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ہر وقت بندہ درست نہیں آتا، درخواست قابل سماعت نہیں لہذا مسترد کریں۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد 10 منٹ بعد فیصلہ سنایا جس میں عدالت

کرناٹک کے واقعات کے سلسلے میں لوک سبھا میں کانگریس کی نعرے بازی

نئی دہلی// کرناٹک اسمبلی کے واقعات پر لوک سبھا میں کانگریس اور اس کے اتحادیوں نے جمعہ کو ہنگامہ کیا اور اسپیکر کی نشست گاہ کے قریب نعرے بازی کی۔ صبح 11 بجے جیسے ہی ایوان کی کارروائی شروع ہوا اور اسپیکر اوم برلا نے وقفہ سوال شروع کرنے کا اعلان کیا، کانگریس، نیشنلسٹ کانگریس اور ترنمول کانگریس کے رکن اپنی جگہوں پر کھڑے ہو گئے اور وقفہ سوال ملتوی کرکے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر کرناٹک میں کانگریس جنتادل ایس حکومت کو گرانے کی سازش کے بارے میں بات کرنے کا مطالبہ کرنے لگے۔ اپوزیشن کے ممبران اپنے ہاتھوں میں پوسٹر لئے تھے، جن میں انگریزی میں ’سیو ڈیموکریسی‘ یعنی جمہوریت لکھا تھا۔بار بار اپیل کے باوجود اسپیکر نے وقفہ سوال جاری رکھا تو کانگریس کے رکن ایوان کے وسط میں نشست گاہ کے سامنے آ گئے اور ’ سیو ڈیموکریسی‘، 'وی وانٹ جسٹس‘ اور ’آمریت نہیں چلے گی