تازہ ترین

ہندوستان اور چین ،سرحد پر امن کیلئے عہدبند :حکومت

 نئی دہلی//وزیردفاع راج ناتھ سنگھ نے بدھ کو ملک کو نہ صرف ہندوستان اور چین سرحد بلکہ مکمل بین الاقوامی سرحد کی سکیورٹی کے سلسلے میں یقین دلایا اور کہا کہ دونوں ملک سرحد پر امن اور استحکام بنائے رکھنے ے لئے حالیہ معاہدوں کی پابندی کررہے ہیں۔ لوک سبھا میں وقفہ صفر میں کانگریس کے لیڈر ادھیررنجن چودھری کے ذریعہ ہندوستان چین سرحد پر چھ جولائی کو لداخ کے ڈیم چوک علاقے میں ہوئے واقعہ کا ذکر کئے جانے پر وزیردفاع نے مداخلت کی۔مسٹر سنگھ نے مسٹر چودھری کے ذریعہ اس مسئلے کو اٹھانے پر حیرانی کا اظہارکیا۔اس دوران بیجو جنتا دل کے لیڈر بھرتہری مہتاب نے زور دے کر کہا کہ مکمل ایوان کو وزیراعظم نریندر مودی کی کوششوں اور سفارتی مہموں کی مکمل طورپر حمایت کرنی چاہئے اور اراکین کو ایک سُر میں بات کہنی چاہئے ۔ وزیردفاع نے کہا کہ بھارت اور چین کے درمیان سرحد پر عام طور پر امن کا ماحول ہے لیکن کبھی کبھی مق

باغی ممبران اسمبلی کو ایوان میں حاضری کا پابند نہ بنایاجائے : سپریم کورٹ

نئی دہلی// سپریم کورٹ نے بدھ کو ایک اہم عبوری حکم میں واضح کیا کہ کرناٹک کے باغی ممبران اسمبلی کو تحریک اعتمال کے عمل میں حصہ لینے کے لئے پابند نہیں کیا جاجاسکتا ہے ۔تاہم، عدالت عظمی نے دوسری طرف یہ بھی واضح کیا کہ اسمبلی اسپیکر کانگریس اور جنتا دل ( سکیولر) کے باغی اراکین اسمبلی کے استعفے پر اپنے حساب سے فیصلہ کریں گے اوراس کے لئے کوئی وقت کی میعاد مقرر نہیں کی جا سکتی۔  چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جسٹس دیپک گپتا اور جسٹس انیرودھ بوس کی بنچ نے کانگریس اور جنتا دل (ایس) کے باغی ممبران اسمبلی کی درخواستوں پر عبوری حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ "ہم یہ واضح کرتے ہیں کہ ریاستی اسمبلی کے تمام 15 باغی ممبران اسمبلی کو اگلے حکم تک ایوان کی کارروائی میں حصہ لینے کے لئے پابند نہیں کیا جانا چاہئے "۔   جسٹس رنجن گگوئی نے بنچ کی طرف سے حکم سناتے ہوئے کہا کہ درخواست گزاروں کو اختیار

انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن کی تشکیل پر کابینہ کی مہر

نئی دہلی//مرکزی کابینہ نے انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن کی تشکیل سے متعلق بل کو بدھ کے روز منظوری دے دی۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں یہاں ہونے والے کابینی اجلاس میں اس نیشنل میڈیکل کمیشن بل کو منظوری دی گئی۔ اس بل کے پاس ہونے کے بعد انڈین میڈیکل کونسل کی جگہ نیشنل میڈیکل کمیشن لے گا۔ بل کے توضیعات کے مطابق ایم بی بی ایس کے آخری سال کے امتحان کو نیشنل ایگزٹ ٹیسٹ (این ای ٹی) کے نام سے جانا جائے گا۔ پوسٹ گریجویٹ سطح کے میڈیکل کورس میں داخلے کے لیے اسے پاس کرنا ضروری ہوگا۔ بیرون ممالک سے ایم بی بی ایس کرکے آنے والے ڈاکٹروں کو بھی ملک میں پریکٹس سے قبل یہ امتحان دینا ہوگا۔  اب تک آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (ایمس) میں داخلہ کے لیے انٹرنس ایگزام ایمس خود ہی منعقد کرتا ہے ۔ اس بل کے پاس ہوجانے کے بعد ایمس سیمت تمامہ نیشنل انسٹی ٹیوٹ میں قومی داخلہ اور ا

لیبر ریفارم بل اگلے ہفتے پارلیمنٹ میں پیش ہوگا

نئی دہلی// لیبر اور روزگار کے وزیر سنتوش کمار گنگوار نے کہا ہے کہ محنت و روزگار کی اصلاحات سے متعلق وسیع بل کو اگلے ہفتے پارلیمنٹ میں لایا جائے گا۔  مسٹرگنگوار نے بدھ کو راجیہ سبھا میں ضمنی سوالات کے جواب میں کہا کہ حکومت لیبر قوانین کو آسان، جامع اور معقول بنانے کے لئے 44 لیبر قوانین کو چار لیبر کوڈ میں ضم کررہی ہے ۔ ان میں سے دو لیبر کوڈ کو کابینہ نے منظوری دے دی ہے اور ان سے متعلقہ بل اگلے ہفتے پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ 44 لیبر قوانین کو اجرت، صنعتی تعلقات، سوشل سکیورٹی اور فلاح و بہبود اور پیشہ ورانہ سیفٹی، صحت اور کاروباری حیثیت سے متعلق کوڈ میں شامل کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے ) حکومت نے سال 2002 میں اس تصور پر غور و خوض شروع کیا تھا لیکن دس سالوں میں اس بارے میں کچھ کام نہیں ہوا۔  ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا ک

سپریم کورٹ کا فیصلہ بی جے پی کے خلاف: کانگریس

نئی دہلی// کانگریس نے کرناٹک میں باغی ممبران اسمبلی کے معاملے پر سپریم کورٹ کے فیصلے کو آئین کے موافق قرار دیتے ہوئے اس کا خیر مقدم کیا ہے اور کہا کہ یہ فیصلہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے خلاف ہے اور اس کے رہنما جھوٹ پھیلا کر خوشیاں منارہے ہیں۔ کانگریس کے ترجمان ابھیشیک منوسنگھوی نے آج پارلیمنٹ کے احاطے میں نامہ نگاروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ باغی ممبران اسمبلی کے سلسلے میں عدالت نے واضح کیا ہے کہ ان کے استعفی تسلیم کرنے یا نہیں کرنے یا انہیں نااہل قرا ردینے کے بارے میں فیصلہ کرنے کا اختیار اسمبلی کے اسپیکر کو ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عدالت نے ایک طرح سے واضح کردیا ہے کہ وہ اسپیکر کے دائرہ اختیار میں مداخلت نہیں کرسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ صد فیصد بی جے پی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر اعلی ایس یدورپا کے خلاف ہے ۔ اس فیصلے سے یہ بھی واضح ہے کہ اگر کسی کے بعدعددی طاقت ہے تو وہ حکومت تشکیل