ریلوے کی نجکاری کا کوئی سوال ہی نہیں:گوئل

 نئی دہلی//ریلوے کے وزیر پیوش گوئل نے ہندوستانی ریلوے کی نجکاری کے الزامات کو خارج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریلوے کی نجکاری کوئی نہیں کرسکتا لیکن سیمی ہائی اسپیڈ گاڑیوں کی آمدورفت اور بہتر مسافر سہولیات کے لئے اگر باہر سے سرمایہ آتا ہے تو اس کا استقبال کیا جانا چاہئے ۔مسٹر گوئل نے عام بجٹ میں ریلوے کے گرانٹ کے مطالبوں پر 12گھنٹے تک چلی بحث کا جواب دیتے ہوئے جمعہ کو یہ بات کہی۔انہوں نے کہا،‘‘ریلوے کی نجکاری کوئی کر ہی نہیں سکتا اور اس کا تو کوئی سوال ہی نہیں ہے ۔لیکن کوئی نئی ٹیکنولوجی لے کر آتا ہے ریلوے کی تجدید کاری کے لئے ،کوئی سیمی ہائی اسپیڈ ٹرین چلاتا ہے اور مسافروں کی سہولت کو بڑھانے میں تعاون کرتا ہے تو ایسی سرمایہ کاری کا سب کو استقبال کرنا چاہئے ۔’’ریلوے کے وزیر نے 50لاکھ کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کے بارے میں اراکین کے سوالوں کے بارے میں کہا کہ ریلوے

چارہ گھوٹالہ معاملے میں لالوکی ضمانت

رانچی// جھارکھنڈ ہائی کورٹ نے غیر منقسم بہارکے مشہور چارہ گھوٹالہ معالے میں سزایافتہ راشٹریہ جنتادل ( آرجے ڈی ) سپریمو لالو پرسادیادو کو دیوگھر خزانے سے غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں آج ضمانت دے دی ۔جسٹس اپریش کمار سنگھ کی سنگل بینچ نے دیو گھر خزانے سے غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں ضمانت عرضی پر سماعت کے بعد مسٹر یادو کو 50-50 ہزار روپے کے ذاتی مچلکے پر ضمانت دے دی ۔ اس معاملے میں سزا کی آدھی مدت گذر جانے کو بنیاد بناکر ضمانت عرضی دائر کی گئی تھی۔ عدالت نے انہیں اپنا پاسپورٹ جمع کرانے کا حکم بھی دیا ہے ۔آرجے ڈی صدر دمکا اور چائباسا خزانے سے غیر قانونی نکاسی معاملے میں سزایافتہ ہونے کی وجہ سے فی الحال جیل سے باہر نہیں نکل پائیں گے ۔ جب تک انہیں ان دونوں معاملوں میں بھی ضمانت نہیں مل جاتی تب تک انہیں جیل میں ہی رہنا ہوگا۔آرجے ڈی سپریمو کی جانب سے اس سال 13 جون کو دیو گھر خزانے سے غیر ن

ہرش وردھن اور ہنس راج ہنس کو دہلی ہائی کورٹ کی نوٹس

نئی دہلی//انتخابی حلف نامہ میں غلط جانکاری دینے سے متعلق بی جے پی کے دو اراکین پارلیمنٹ کی مشکلیں بڑھنے والی ہیں۔ دہلی ہائی کورٹ نے مرکزی وزیر صحت ہرش وردھن سے اس عرضی پر جواب طلب کیا ہے جس میں ان کی لوک سبھا کی رکنیت رَد کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ عرضی کے مطابق ہرش وردھن پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ انھوں نے دوارکا میں اپنی بیوی کے ذریعہ خریدے گئے رہائشی اپارٹمنٹ کی جانکاری انتخابی حلف نامہ میں نہیں دی تھی۔ معاملے کی اگلی سماعت 24 ستمبر کو ہوگی۔عرضی داخل کر ایک شخص نے الزام لگایا تھا کہ انتخابی حلف نامہ میں ہرش وردھن نے اپنی بیوی کی ا?مدنی کے ذریعہ کا ذکر نہیں کیا ہے جب کہ انتخابی کمیشن کے قانون اور سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق امیدواروں کو اپنی بیوی اور بچوں کی ا?مدنی کا ذریعہ بتانا ہوتا ہے۔دوسری جانب دہلی ہائی کورٹ نے بی جے پی رکن پارلیمنٹ ہنس راج ہنس کے خلاف داخل کی گئی عرضی پر سماعت

راہل گاندھی نے گجراتی کھانے کا لطف اٹھایا

احمد آباد//ہتک عزت کے ایک مقدمے میں پیشی کے لیے یہاں آنے والے راہل گاندھی نے آج سرکٹ ہاؤس میں اپنا متعینہ دوپہر کا کھانہ چھوڑ کر گجراتی کھانے کا لطف اٹھانے کے لیے لاء گارڈن علاقے میں ایک مشہور ریستوران میں پہنچ گئے ۔ مسٹر گاندھی نے اس سے قبل سنہ 2017 میں اسمبلی انتخابات کی تشہیر کے دوران بھی سواتی اسنیکس نام کے ریستوران میں گجراتی کھانوں کا لطف اٹھایا تھا۔وہ دوپہر تقریباً 12:30 بجے ہوائی اڈے پر پہنچے اور اس کے بعد وہ سرکٹ ہاؤس کے لیے روانہ ہوگئے جہاں ان کے لے ظہرانے کا انتظام تھا لیکن انہوں نے اچانک یہ پروگرام بدل دیا۔ انہوں نے عدالت کی جانب جانے والے راستے پر واقع اس ریستوران کا رخ کیا۔ ان کے ساتھ کانگریس کے قدآور رہنما احمد پٹیل، شکتی سنگھ گوہل، گجرات کانگریس کے صدر امت چاؤڑا، لیڈر آف اپوزیشن پریش دھانانی،ڈپٹی لیڈر آف اپوزیشن شیلیش پرمار اور سابق صدر ارجن موڈھواڈیا اور بھرت

جے این یو کو ملک کے مرکزی دھارے سے دورنہیں ہونے دیاجائیگا:نشنک

نئی دہلی//حکومت نے آج کہاکہ دہلی کی جواہر لعل نہرو یونیورسٹی (جے این یو)ایک اچھا ادارہ ہے اور اسے ملک کے مرکزی دھارے سے دورنہیں ہونے دیاجائیگا۔فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیررمیش پوکھریال نشنک نے لوک سبھا میں سنٹرل یونیورسٹیز ترمیمی بل پر بحث کاجواب دیتے ہوئے کہا کہ جے این یو تحقیق کے شعبہ میں چوٹی پر ہے ۔یہ بہت ہی اچھاادارہ ہے ۔ہم اس یونیورسٹی کو بہتر طریقہ سے چلائیں گے ۔کچھ لوگوں کی وجہ سے اسے بدنام نہیں ہونے دیاجائیگا۔اس یونیورسٹی کے قومی دھارے سے دورہونے کا تو سوال ہی نہیں ہے ۔مسٹر پوکھریال بل پر بحث کے دوران بی جے پی کے رکن ایس پی ایس بگھیل کے ذریعہ کیے گئے سوال کاجواب دے رہے تھے ۔مسٹر بگھیل نے آندھراپردیش میں ایک مرکزی یونیورسٹی اور ایک شیڈول کاسٹ مرکزی یونیورسٹی قائم کرنے کے لیے پیش کیے گئے اس بل پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ حکومت جتنی بھی سنٹرل یونیورسٹی قائم کرے ،لیکن اس بات

بچوں کو ثقافتی ورثے ، تہذیب اور روایات کی تعلیم دی جانی چاہئے : نائب صدر

نئی دہلی//نائب صدر جمہوریہ ہند ایم وینکیا نائیڈو نے بچوں کو ہندوستان کے ثقافتی ورثے ، تہذیب اور روایات کی تعلیم دینے کی اہمیت پر زور دیا ہے ۔پولینڈ اور یوکرین میں بہادر بچوں کے فیسٹول 2019ء میں ہندوستان کی نمائندگی کرنے والے بچوں کے ساتھ آج یہاں تبادلہ خیال کرتے ہوئے جناب نائیڈو نے والدین اور اساتذہ سے زور دے کر کہا کہ وہ بچوں کو ہندوستان کے ثقافتی ورثے ، تہذیب اور روایات کی تعلیم دینے کی جانب مزید توجہ دیں۔انہوں نے اسکولوں سے زور دے کر کہا کہ وہ رضاکارانہ سرگرمیوں مثلاًاین ایس ایس، این سی سی، اسکاؤٹس اور گائڈزوغیرہ میں ان کی شرکت کی حوصلہ افزائی کرکے بچوں میں رضاکارانہ سرگرمیوں کا جذبہ پیدا کریں۔اس بات کا مشاہدہ کرتے ہوئے کہ بہادر بچوں کے بین الاقوامی فیسٹول جیسی تقریبات میں ان کی شرکت بچوں کو ایک دوسرے کے ساتھ دوستی کی اہمیت اور ایک دوسرے کی ثقافت کو سمجھنے اور تکریم کرنے میں معاون