تازہ ترین

عالمی رہنماؤں نے دی مودی کو مبارک باد

 نئی دہلی//چین ،جاپان ،روس ، اسرائیل اور بھوٹان سمیت دنیا کے مختلف ملکوں کے رہمناؤں نے وزیراعظم نریندرمودی کو انتخابات میں تاریخی جیت کی طرف گامزن ہونے پر مبارک باد دی ہے ۔ چین کے صدر شی جن پنگ نے واضح اکثریت کی طر ف بڑھنے پر مسٹر مودی کو فون کرکے مبارک باد دی اور مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔جاپان کے وزیراعظم شنزو ابے نے بھی ہندستانی وزیراعظم کو فون کیا او ر جیت حاصل کرنے پر مبارک باد دی ۔ روس کے صدر ولادمیر پوتن نے مسٹر مودی کو پیغام بھیج کر انکی پارٹی بھارتیہ جنتاپارٹی کو پارلیمانی انتخاب میں واضح اکثریت ملنے پر مبارک باد دی ہے ۔انھوں نے بعد میں مسٹر مودی کوفون کرکے بھی مبارک باد دی اور سنہرے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ اسرائیل کے وزیراعظم بنیامن نیتن یاہو نے انتہائی انوکھے انداز میں ہندی میں ٹوئیٹ کرکے مسٹر مودی کو مبارک باد دی ۔انھوں نے کہا،‘&lsquo

اڈوانی نے مودی کو مبارکباد دی

 نئی دہلی//بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی)کے قدآور لیڈر لال کرشن اڈوانی نے وزیر اعظم نریندر مودی کو پارٹی کو ناقابل تصور فتح سے ہمکنار کرنے پر مبارکباد دی۔  مسٹر اڈوانی نے آج یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ مسٹر مودی نے اس الیکشن میں بی جے پی کو تاریخی جیت دلائی ہے اور اس لیے وہ انھیں صمیمِ قلب سے مبارکباد دیتے ہیں۔  سابق نائب وزیراعظم امت شاہ کو بھی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ مسٹر شاہ اور بی جے پی کے تمام کارکنان نے بے لوث کے جذبے سے کام کرتے ہوئے بی جے پی کا پیغام رائے دہندگان تک پہنچایا جس کی وجہ سے بی جے پی کو یہ غیرمعمولی جیت ملی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ دیکھ کر بہت اچھا لگتا ہے کہ ہندوستان جیسے عظیم اور تنوع والے ملک میں انتخابی عمل شاندار کامیابی کے ساتھ انجام کو پہنچا۔ انہوں نے کہا کہ اس کامیابی کے لیے رائے دہندگان اور انتخابات کا انعقاد کرنے والی ایجنسیوں کو مبارکباد

مودی کا پھر چلا جادو، کانگریس چاروں خانے چت

نئی دہلی// وزیراعظم نریندر مودی کی مقبولیت پر سوار بھارتیہ جنتا پارٹی اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں نہ صرف جیت حاصل کررہی ہے بلکہ مغربی بنگال اور اوڈیشہ میں بھی اس نے اپنی حالت مضبوط کرکے مخالفین کی بولتی بند کردی ہے۔بی جے پی کی زبردست جیت کے آگے ملک کی سب سے پرانی پارٹی کانگریس کہیں ٹک نہیں سکی ہے اور وہ پچاس سیٹوں کے آس پاس سمٹ کررہ گئی ہے جس کے سبب گزشتہ بار کی طرح وہ اس بار بھی لوک سبھا میں اپوزیشن کے لیڈر کا عہدہ حاصل کرنے کی حالت میں نہیں لگ رہی۔ کانگریس کی کراری شکست سے صاف ہے کہ عوام نے اس کی ’نیائے‘ یوجنا کو پوری طرح خارج کردیا ہے۔کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے پارٹی کی شکست قبول کرتے ہوئے وزیراعظم مسٹر مودی کو شاندار جیت کے لئے مبارکباد دی ہے۔ انہوں نے امیٹھی سیٹ پر اپنی حریف مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کو بھی مبارکباد دی ہے۔یو این آئی۔

سو نیا اور پرینکا نے راہل سے ملاقات کی

 نئی دہلی // لوک سبھا انتخابات کی ووٹوں کی گنتی کے رجحانات کے درمیان ترقی پسند اتحاد (یو پی اے ) کی سربراہ سونیا گاندھی اور کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے آج پارٹی صدر راہل گاندھی سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔لوک سبھا انتخا بات کے رحجانات سے کانگریس کو قرارا جھٹکا لگا ہے اور پارٹی میں غور وخوص کا دور شروع ہو گیا ہے ۔ محترمہ واڈرا صبح مسٹر گاندھی کی رہائش گاہ پر پہنچی اور مستقبل کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کے بعد یو پی اے سربراہ نے مسٹر گاندھی سے ان کی رہایش گا ہ پر ملاقات کی۔ سمجھا جاتا ہے کہ دونوں لیڈروں نے کانگریس صدر سے مستقبل کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا۔ محترمہ گاندھی نے شام کو یو پی اے کے اتحادیوں کی میٹنگ بھی بلائی ہے ۔   کانگریس نے لوک سبھا انتخا بات سے پہلے محترمہ واڈرا کوجنرل سیکریٹرٰی نامزد کرتے ہو ئے انہیں مغربی اتر پردیش کا انچار

سنی دیول کی شاندار جیت

گرداسپور //لوک سبھا انتخابات 2019 کے نتائج آتے ہی بی جے پی کے سبھی کارکنان میں خوشی کی لہر ہے۔ وہیں بی جے پی کے امیدوار کے طور پر گرداس پور لوک سبھا سیٹ سے الیکشن لڑرہے اداکار سے لیڈر بنے سنی دیول نے اپنی جیت بھی درج کرادی ہے۔ جس کے بعد انہوں نے وہاں کی عوام کا شکریہ بھی اداکیا۔سنی دیول نے اپنے لوک سبھا حلقے کے لوگوں کا بھی شکریہ اداکیا ہے، انہوں نے لوگوں کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ انہیں یقین تھا کہ رجحان ان کے حق میں آئیں گے۔ آخرکار جب ایسا ہے توانہیں اس بات کی بیحد خوشی ہورہی ہے۔سنی دیول کا مقابلہ یہاں کانگریس کے لیڈر سنیل جاکھڑ سے تھا۔ سنیل جاکھڑ کے گرداس پور میں ونر رپنے سے پہلے یہ سیٹ ونود کھنہ کے پاس تھی۔ وہ بی جے پی سے رکن پارلیمنٹ تھے لیکن ان کے انتقال کے بعد سنیل جاکھڑ اس سیٹ سے جیتے تھے۔  

جیت سے بی جے پی ہیڈکوارٹر میں زبردست جوش وخروش

نئی دہلی //لوک سبھا انتخابات کے رجحانوں کے آنے کے ساتھ ہی آج یہاں بی جے پی کے مرکزی ہیڈکوارٹر میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور لوگ اس کا اظہار ایک دوسرے کو مبارک باد دیکر کرنے لگے ۔ صبح نو بجے انتخابات رجحان آنے لگے تو بی جے پی ہیڈکوارٹر پر پارٹی کارکنوں اور حامیوں کا آنا شروع ہوگیا اور دوپہر تک یہاں زبردست بھیڑ ہوگء۔ان لوگوں میں پارٹی کی جیت کے تئیں زبردست جوش وخروش نظر آیا لیکن لیڈران ابتدائی رجحانوں پر ردعمل ظاہر کرنے سے گریز کرتے دیکھے گئے ۔پارٹی ہیڈکوارٹر میں ہزاروں لوگوں کے آنے کے مدنظر وسیع تر انتظامات کیے گئے ہیں ۔پارٹی ہیڈکوارٹر میں کام کرنے والے لوگ صبح ہی پہنچ گئے تھے ۔ بی جے پی کے کچھ کارکنوں نے ڈھول نگاڑوں کے تھاپ پر ناچ ۔گا کراپنی خوشی کا اظہار کیا۔جیت کے امکانات سے خوش حامیوں نے تو کئی بار لڈو تقسیم کیے ۔پارٹی ہیڈکوارٹر میں آنے والے لیڈر ابتدائی رجحانوں پر کوئی رد عمل ظاہر کر

’سب کا ساتھ سب کاوکاس ‘کو سب کا اعتماد ملا: مودی

نئی دہلی// وزیراعظم نریندرمودی نے لوک سبھا انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو مل رہی جیت کے لئے پارٹی کی قیادت والی حکومت کی ‘سب کا ساتھ سب کا وکاس’کی پالیسی پر سب کے اعتماد کی وجہ سے ملک کی جیت قرار دیا ہے ۔ مسٹر مودی نے دوپہر ڈھائی بجے کے بعد انتخابات کی تصویر صاف ہونے کے بعد ٹوئٹ کیا ‘سب کا ساتھ +سب کا وکاس=ہندستان کی جیت’۔بی جے پی کے صدر امت شاہ نے بھی کہا کہ انتخابات کے یہ نتائج اپوزیشن کے جھوٹ، ذاتی حملوں اور بے بنیاد سیاست کے خلاف ملک کا فیصلہ کیا ہے۔