تازہ ترین

جنوبی کشمیر میں جاں بحق جنگجوئوں کی نماز جنازوں میں لوگوں کا اژدھام

سرینگر/ہزاروں لوگوں نے  سنیچر کو جنوبی ضلع پلوامہ میں اُن دو جنگجوئوں کی نماز جنازوں میں شرکت کی جو علی الصبح فورسز کے ساتھ مختصر جھڑپ کے دوران جاں بحق ہوگئے۔ آئی جی کشمیر ایس پی پانی کے مطابق مذکورہ جنگجوئوں کو ''ایک مختصر جھڑپ'' کے دوران ٹکن نامی گائوں میں جاں بحق کیا گیا۔ عینی شاہدین کے مطابق لوگوں کی بھاری تعداد کو شامل کرنے کیلئے بیلو اور ببہ ہار گائوں کے رہنے والے جاں بحق عسکریت پسندوں کے متعدد جناز ے ادا کئے گئے۔ لیاقت احمد اور واجد الاسلام نامی جنگجو حزب المجاہدین سے وابستہ تھے۔ دریں اثناء پلوامہ ضلع میں مذکورہ جنگجوئوں کے ماتم میں معمول کا کاروبار معطل رہا جس دوران آس پاس کے لوگ بیلو اور ببہ ہار نامی گائوں میں دن بھر موجود رہے۔  

راجوری میں کنٹرول لائن پرفوجی اہلکار پاکستانی فائرنگ سے ہلاک

سرینگر/ضلع راجوری میں کنٹرول لائن پرتعینات ایک فوجی اہلکار سنیچر کو اُس وقت ہلاک ہوگیا جب پاکستانی افواج نے اُس پر گولی چلائی۔ خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق یہ حالیہ دنوں کے اندر ایسی ہلاکت کا دوسرا واقعہ تھا۔ اس سے قبل جمعہ کو ایک فوجی اہلکار کو اکھنور سیکٹر میں گولی کا نشانہ بناکر ہلاک کیا گیا۔دفاعی ترجمان کا حوالہ دیتے ہوئے پی ٹی آئی نے اطلاع دی ہے کہ فوجی اہلکار کو پاکستانی افواج نے گولی کا نشانہ بنایا جس کے بعد وہ زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھا۔ واضح رہے کہ کنٹرول لائن پر ہر ایسے واقعے کے بعد بھارت اور پاکستان ایک دوسرے پر  2003کی جنگ بندی کی خلاف ورزی کے الزامات عائد کرتے ہیں۔ اعداد و شمار کے مطابق اس سال کنٹرول لائن پر ایسے واقعات کی تعداد میں نمایاں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے اور یہ گذشتہ آٹھ برس میں سب سے زیادہ رہی۔  سال رواں کے پہلے سات ماہ کے دو

سینٹرل یونیورسٹی طالبعلموں کا ساتھیوں کی حراست کیخلاف احتجاج

سرینگر/نوگام سرینگر میں واقع سینٹرل یونیورسٹی کشمیر کے سینکڑوں طالب علموں نے سنیچر کو احتجاجی دھرنا دیکر سرکاری  فورسز کے ہاتھوں اپنے گرفتار ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ کیا۔ عینی شاہدین کے مطابق طالب علموں نے کلاسوں کا بائیکاٹ کرنے کے بعد نوگام بائی پاس چوک تک احتجاجی مارچ کیا اور ٹریفک کی نقل و حمل میں مانع ہوگئے۔ سینکڑوں طالب علموں نے بینر اٹھارکھے تھے اور وہ نعرے بازی کرتے ہوئے بائی پاس تک پہنچے ۔وہ فورسز کے ہاتھو ں  گرفتار  ںیونیورسٹی کے دو طالب علموں کی رہائی کا مطالبہ کررہے تھے۔ احتجاجی طالب علموں کا کہنا تھا کہ پولٹیکل سائنس کے دو طالب علم ،سہیل احمد ساکنہ شوپیان اور اسماعیل ساکنہ بارہمولہ کو فورسز نے یونیورسٹی کے نزدیک ہی واقع اُن کے کرایہ کے کمروں سے گرفتار کیا ہے۔ پولٹیکل سائنس ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ ڈاکٹر خالد نے کہا کہ دونوں یونیورسٹی کے ریگولر طا

پلوامہ میں جنگجوئوں کے جاں بحق ہونے کے بعد ماتمی ہڑتال

سرینگر/جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں سنیچر کو ہڑتال کی وجہ سے معمولات زندگی متاثر رہی۔ یہ ہڑتال دو جنگجوئوں کے جاں بحق ہونے کے بعد ہوئی۔ حزب المجاہدین سے وابستہ لیاقت احمد ساکنہ بیلو اور واجد الاسلام ساکنہ ببہ ہار نامی جنگجو آج صبح ٹکن نامی گائوں میں سرکاری فورسز کے ساتھ ایک مختصر جھڑپ میں جاں بحق ہوگئے۔ مقامی ذرائع کے مطابق ضلع کے اکثر علاقوں میں دکان اور دیگر کاروباری ادارے بند ہیں۔ اس دوران حکام نے انٹرنیٹ کی سروس معطل کردی ہے۔ اس سے قبل پولیس نے کہا کہ جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع کے بعد فوج، پولیس اور سی آر پی ایف کی ایک ٹیم نے علی الصبح ٹکن نامی گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران چھپے جنگجوئوں نے فورسز پارٹی پر فائرنگ کی۔ پولیس کے مطابق فورسز اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی عمل میں لائی جس کے نتیجے میں جھڑپ شروع ہوئی جو زیادہ دیر تک نہیں

پلوامہ جھڑپ میں جاں بحق جنگجوئوں کی شناخت ہوگئی

سرینگر/پلوامہ کے ٹکن نامی گائوں میں سنیچر کی صبح سرکاری فورسز کے ساتھ ایک مختصر جھڑپ میں جاں بحق دو جنگجوئوں کی شناخت ہوگئی ہے۔ مذکورہ دو نوں جنگجو عسکری گروپ حزب المجاہدین سے وابستہ تھے اور اُن کی شناخت لیاقت احمد وانی ساکنہ بیلو پلوامہ اور واجد الاسلام ساکنہ ببہ ہار پلوامہ کے بطور ہوئی ہے۔ اس سے قبل جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں سنیچر کی صبح سرکاری فورسز کے ساتھ ایک مختصر جھڑپ میں مذکورہ دو جنگجو جاں بحق ہوگئے ۔ پولیس نے کہا کہ جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع کے بعد فوج، پولیس اور سی آر پی ایف کی ایک ٹیم نے علی الصبح ٹکن نامی گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران چھپے جنگجوئوں نے فورسز پارٹی پر فائرنگ کی۔ پولیس کے مطابق فورسز اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی عمل میں لائی جس کے نتیجے میں جھڑپ شروع ہوئی جو زیادہ دیر تک نہیں چلی اور دو جنگجوئوں کے جاں بحق

پلوامہ میں مختصر جھڑپ، 2جنگجو جاں بحق

سرینگر/جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع میں سنیچر کی صبح سرکاری فورسز کے ساتھ ایک مختصر جھڑپ میں دو جنگجو جاں بحق ہوگئے ۔ پولیس نے کہا کہ جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع کے بعد فوج، پولیس اور سی آر پی ایف کی ایک ٹیم نے علی الصبح ٹکن نامی گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران چھپے جنگجوئوں نے فورسز پارٹی پر فائرنگ کی۔ پولیس کے مطابق فورسز اہلکاروں نے بھی جوابی کارروائی عمل میں لائی جس کے نتیجے میں جھڑپ شروع ہوئی جو زیادہ دیر تک نہیں چلی اور دو جنگجوئوں کے جاں بحق ہونے پر ختم ہوگئی۔ جھڑپ کی جگہ سے اسلحہ و گولی بارود بر آمد کیا گیا ہے۔