تازہ ترین

کشمیر کے کالیجوں کی چھٹی میں 21فروری تک توسیع

سرینگر/ایک سرکاری بیان میں اتوار کو بتایا گیا ہے کہ ڈویژنل کمشنر کشمیر نے کالیجوں کی چھٹی 21فروری تک بڑھادی گئی ہے۔  ڈویژنل کمشنر کشمیر، بصیر احمد خان نے بیان میں کہا کہ کشمیر کے سبھی کالیج موسم کی خرابی کے پیش نظر 21فروری تک بند رہیں گے۔ یہ کالیج سرمائی تعطیلات کے بعد کل یعنی18فروری کو کھلنے والے تھے۔ بیان میں بتایا گیا ہے کہ کالیج کی چھٹیوں میں توسیع کا فیصلہ موسم کی خرابی کے پیش نظر لیا گیا ہے۔  

جموں میں مسلسل تیسرے روز بھی کرفیو کا نفاذ جاری

 سرینگر/جموں شہر میں اتوار تیسرے روز بھی کرفیو کا نفاذ جاری رہا۔ حکام کا کہنا ہے کہ کرفیو کا سلسلہ امن و قانون کی صورتحال بہتر بننے تک جاری رہے گا۔ پولیس حکام کے مطابق گذشتہ رات سے جموں میں سکون ہے اور پورے دن کہیں سے بھی کسی نا خوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ جموں کشمیر کی مجموعی صورتحال کے بارے میں غور کے بعد کرفیو میں نرمی کے بارے میں کوئی فیصلہ لیا جائے گا۔ گذشتہ روز بھی شہر کی نئی بستی،بنتلاب،دومانا اور پریڈ گرائونڈ علاقوں میں مظاہرے ہوئے لیکن ان علاقوں کی صورتحال پرفوری طور قابو پالیا گیا۔ جموں کشمیر میں کشمیریوں اور مقامی مسلمانوں پر حملوں کے بعد سے کرفیو کا نفاذ جاری ہے۔یہاں موبائیل انٹرنیٹ سروس معطل کرکے رکھی گئی ہے۔ یہ حملے لیتہ پورہ پلوامہ میں جنگجوئوں کے خود کُش حملے کے پس منظر میں کئے گئے۔  گذشتہ جمعرات کو ہوئے اس حملے میں کم سے ک

جموں میں کشمیریوں پر حملوں کیخلاف وادی میں فقید المثال ہڑتال سے معمولات ٹھپ

سرینگر/وادی میں اتوار کو کشمیریوں پر جموں اور بھارت کے دیگر حصوںمیں حملوں کیخلاف فقید المثال ہڑتال سے معمولات مکمل طور ٹھپ رہے۔ وادی بھر میں تمام دکان اور کاروباری ادارے بند جبکہ سڑکیں سنسان رہیں۔ شہر سرینگر میں ہوکا عالم رہا اور لوگ اپنے گھروں کے اندر ہی دن گذار۔  آج کے ہڑتال کی اپیل جموں اور بھارت کے دوسرے حصوں میں مقیم کشمیریوں پر ہورہے حملوں کیخلاف احتجاج کرنے کیلئے وادی میں سرگرم تجارتی انجمنوں نے کی تھی۔ جموں میں لیتہ پورہ خود کُش حملے کے بعد متعدد کشمیریوں پر حملے ہوئے ہیں۔ گذشتہ جمعرات کو ہوئے اس حملے میں کم سے کم49فورسز اہلکار ہلاک ہوگئے۔ وادی کی تجارتی انجمنوں کا مطالبہ ہے کہ جموں اور دوسرے علاقوں میں مقیم کشمیریوں کو تحفظ فراہم کیا جائے۔   حکام  نے  پوری  وادی  کشمیر  میں  موباءیل  انٹرنیٹ   

مانسبل دھماکہ کیس کے پانچ ملزمان کے خلاف چار ج شیٹ دائر:پولیس

سرینگر/پولیس نے سنیچر کو صفا پورہ پولیس اسٹیشن میں درج مانسبل دھماکہ کیس کے سلسلے میں سیشن کورٹ میں چارج شیٹ پیش کیا۔  پولیس کے مطابق مانسبل گاندربل پارک میں ہوئے ایک دھماکے میں 12عام شہری زخمی ہوئے تھے ۔  جن ملزمان کے خلاف عدالتِ مجاز میں چارج شیٹ دائر کیا گیا ان میں  عرفان احمد خان ولد غلام محمد ، محمد یونس خان ولد مرحوم محمد ایوب خان ، بلال احمد ولد عبدالرشید ، محمد عمران صوفی ولد عبدالرشید ساکنان کوند بل صفا پورہ گاندربل اوربلال احمد میر ولد غلام رسول ساکنہ چشمائی گاندربل شامل ہیں۔  

راجوری میں کنٹرول لائن پر دھماکہ، فوجی آفیسر ہلاک

سرینگر/راجوری ضلع میں سنیچر کو کنٹرول لائن پر ایک زور دار دھماکے کی زد میں آکر ایک فوجی آفیسر ہلاک ہوگیا۔ ذرائع نے کہا کہ یہ دھماکہ راجوری کے نوشیرا لام جہانگیرعلاقے میں ہوا۔ اس دھماکے کی وجہ سے فوج کی انجینئر ونگ کا ایک آفیسر بری طرح زخمی ہوگیا ، جو بعد میں دم توڑ بیٹھا۔ ہلاک شدہ فوجی آفیسر کی شناخت فوری طور معلوم نہیں ہوسکی ہے۔  

جموں میں کشمیریوں پر حملوں کیخلاف کل تاجروں کی کشمیر میں ہڑتال کال

سرینگر/کشمیر کی تجارتی انجمنوں نے سنیچر کو جموں اور باقی علاقوںمیں کشمیریوں پر حملوں کیخلاف احتجاج کیلئے کل یعنی اتوار کو کشمیر میں ہڑتال کی کال دی۔ یہ کال کشمیرمیں تاجروں کی سب سے بڑی نمائندہ انجمنوں ،کشمیر ٹریڈرس اینڈ منو فیکچررس فورم اور کشمیر اکنامک لائنس نے دی۔ اس سے قبل کشمیری تاجروں نے لالچوک سرینگر تک ایک احتجاجی ریلی نکالی جس کے دورن جموں میں ہوئے کشمیریوں پر حملوں کی مذمت کی گئی۔ اس دوران لالچوک سرینگر اور اس کے آس پاس علاقے میں دکانداروں نے شٹر گرائے اور احتجاجی ریلی میں حصہ لیا۔ مظاہرین تاریخی گھنٹہ گھر تک گئے اور کشمیر سے باہر کشمیریوں کی حفاظت کے اقدامات پر زور دیا۔  

کشمیریوں پر حملوں کیخلاف3 بجے سے سرینگر میں ٹریڈرس کا اعلانِ ہڑتال

 سرینگر/سرینگرمیں تاجروں کی انجمنوں نے سنیچر کو اعلان کیا کہ وہ لالچوک سرینگر میں آج تین بجے سے اپنی سرگرمیاں کشمیریوں پر جموں میںحملوں کیخلاف احتجاج کے طورروک دیں گے۔ مختلف تاجر انجمنوں کے نمائندوں نے کہا کہ وہ اپنے تجارتی ادارے تین بجے سے بند کریں گے۔ ادھر دہرادون میں مقیم کشمیری طالب علموں کو کرایہ داروں کی طرف سے کرایہ پر لئے گئے کمرے واپس لے لئے گئے ہیں۔ واضح رہے کہ جموں سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق کشمیریوں اور مقامی مسلمانوں پر حملوں کا سلسلہ جاری ہے۔ جموں میں گذشتہ روز اُس وقت کرفیو نافذ کیا گیا جب تشدد پر آمادہ بھیڑ نے شہر میں توڑ پھوڑ کی اور درجنوں گاڑیوں کو نقصان پہنچایا۔یہ مظاہرین لیتہ پورہ حملے کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے مسلمانوں کی املاک کو نقصان پہنچانے لگے جس کے بعد صورتحال کو قابو کرنے کیلئے کرفیو کا نفاذ عمل میں لایا گیا۔ اس دوران جموں میں

جموں میں کشمیریوں پر حملو ں کیخلاف اننت ناگ میں ہڑٹال اور مظاہرے

سرینگر/جنوبی کشمیر کے اننت ناگ قصبہ میں سنیچر کو جموں میں کشمیریوں پر حملوں کیخلاف ہڑتال کے دوران مظاہرے ہوئے۔  قصبہ میں آج صبح معمول کے مطابق دن کا آغاز ہوا تاہم اننت ناگ لالچوک علاقے میںتمام کاروباری ادارے اچانک بند ہوئے اور لوگ جموں میں کشمیری شہریوں پر حملوں کیخلاف مظاہرے کرنے لگے۔ اطلاعات کے مطابق اگر چہ کے پی روڑ علاقے میں دکان معمول کے مطابق کھلے تھے تاہم مظاہرین لالچوک علاقے میں پولیس کے ساتھ متصادم ہوئے۔مظاہرین نے فورسز پر پتھر پھینکے اور جواب میں فورسز نے ٹیر گیس کے گولے داغے۔ مقامی لوگوں نے الزام عاید کیا کہ فورسز اہلکارتوڑ پھوڑ پر اُتر آئے اور انہوں نے راہگیروں کو مارا پیٹا۔ آخری اطلاعات ملنے تک مظاہرے جاری تھے۔ اس دوران جموں سے موصولہ اطلاعات میں بتایا جارہا ہے کہ کرفیو کے باوجود بلوائیوں نے اُن کوارٹروں کو نشانہ بنایا جن میں کشمیری رہائش پذیر ہیں۔

جموں میں دوسرے روز بھی کرفیو جاری

سرینگر/جموں میں سنیچر کودوسرے روز بھی کرفیو کا نفاذ جاری رہا۔ حکام کے مطابق کرفیو کا نفاذ جاری ہے تاہم دن گذرنے کے ساتھ ساتھ صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ہی کوئی فیصلہ لیا جائے گا۔ جموں میں گذشتہ روز اُس وقت کرفیو نافذ کیا گیا جب تشدد پر آمادہ بھیڑ نے شہر میں توڑ پھوڑ کی اور درجنوں گاڑیوں کو نقصان پہنچایا۔یہ مظاہرین لیتہ پورہ حملے کیخلاف احتجاج کرتے ہوئے مسلمانوں کی املاک کو نقصان پہنچانے لگے جس کے بعد صورتحال کو قابو کرنے کیلئے کرفیو کا نفاذ عمل میں لایا گیا۔ اس دوران جموں میں انٹرنیٹ سروس بھی معطل رکھی گئی ہے۔ گذشتہ روز جونہی جموں میں صورتحال بگڑ گئی تو فوج کو مدد کیلئے طلب کیا گیا جس نے شہر میںفلیگ مارچ کیا۔  

سرینگر۔جموں شاہراہ پر یکطرفہ ٹریفک جاری

سرینگر/ٹریفک حکام نے سنیچر کو کہا کہ سرینگر۔جموں شاہراہ پر یکطرفہ ٹریفک چل رہی ہے اورآج جموں سے سرینگر کی طرف جانے والی درماندہ گاڑیوں کو ہی چلنے کی اجازت دی جارہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب شاہراہ پر گاڑیوں کی موجودگی کسی حد تک کم ہو تو اس کے بعد کشمیر وادی میں درماندہ جموں جانے والی کم و بیش7000گاڑیوں کو سفر کی اجازت دی جائے گی۔ سرینگر۔جموں شاہراہ کو جمعہ بعد دوپہر یکطرفہ ٹریفک کیلئے کھولا گیا۔ حکام کے مطابق سرینگرسے جموں جانے والی گاڑیوں کے بارے میں اُسی وقت کوئی فیصلہ لیا جائے گا جب شاہراہ پر موجودگاڑیاں کسی حد تک کم ہوجائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ کم و بیش2000گاڑیاں آج صبح سویرے تک جواہر ٹنل پار کرکے وادی کے اندر داخل ہوگئیں۔ ان میں سے ایک ہزار گاڑیاں اشیائے ضروریہ لیکر آرہی ہیں جن کی وادی کشمیر میں کمی محسوس کی جارہی ہے۔  

پونچھ علاقے میں مظاہرین پولیس کے ساتھ متصادم، گاڑیوں کی توڑ پھوڑ

سرینگر/ضلع پونچھ کے اعلیٰ پیر علاقے میں جمعہ کو پولیس نے تشدد پر آمادہ بھیڑ کیخلاف ٹیر گیس کا استعمال کیا۔ عینی شاہدین کے مطابق علاقے میں لیتہ پورہ حملے کیخلاف مظاہروں کے پیش نظر پولیس کی تعیناتی عمل میں لائی گئی تھی جس کے دوران تشدد بھڑک اُٹھا۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کی ایک بھیڑ نے جمع ہوکر کئی کاروں کے شیشے توڑ ڈالے جس کے بعد پولیس نے تشدد پر آمادہ بھیڑ کیخلاف کارروائی عمل میں لائی۔ مظاہرین نے اعلیٰ پیر میں ایک مسلمان شہری کے گھر کے شیشے بھی توڑ دئے اور مسلمان شہریوں کی دکانوں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ صورتحال کو قابو میں لایا گیا ہے۔ اس سے قبل جموں کے گجر نگر علاقے میں بھی پُر تشدد مظاہروں کے دوران درجنوں گاڑیوں کی توڑ پھوڑ کی گئی اور کئی ایک کو آگ لگائی گئی۔ ان واقعات میں 12افراد زخمی ہوگئے جس کے بعد جموں میں کرفیو نافذ کردیا گیا۔

گجر نگر جموں میں پُر تشدد مظاہروں کے بعد کرفیو نافذ

سرینگر/جموں کے گجر نگر علاقے میں جمعہ کو حکام نے کرفیو نافذ کردیا۔ یہ اقدام علاقے میں پُر تشدد مظاہروں کے بعد اٹھایا گیا۔مظاہرین گذشتہ روز جنوبی کشمیر کے لیتہ پورہ علاقے میں عسکریت پسندوں کے فورسز پر ہلاکت خیز حملے کیخلاف مظاہرے کررہے تھے جس کے نتیجے میں کم سے کم 49فورسز اہلکار ہلاک ہوگئے۔ اطلاعات اور شاہدین کے مطابق گجر نگر علاقے میں ایک بھاری بھیڑ نے درجنوں گاڑیوں کو نقصان پہنچایا۔ یہ تشدد جموں بند کے دوران بھڑک اُٹھا جس کی اپیل جموں تاجر برادری نے کر رکھی تھی اور جس کی حمایت جموں کے وکلاء اور نیشنل کانفرنس نے بھی کی تھی۔ عینی شاہدین کے مطابق موٹر سائیکلوں پر سوار ، بھارت کا ترنگا اُٹھائے مظاہرین نے گاڑیوں اور رہائشی مکانوں پر سنگباری کی اور پریم نگر علاقے میں کچھ گاڑیوں کو نذر آتش بھی کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکام نے علاقے میں کرفیو نافذ کردیا لیکن اس کے باوجود بھیڑ جمع

لیتہ پورہ حملے پر مشترکہ مزاحمتی قیادت کا رد عمل

سرینگر/لیتہ پورہ حملے پر تبصرہ کرتے ہوئے سید علی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل علیحدگی پسندوں کے وفاق، ،مشترکہ مزاحمتی قیادت نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا کہ کشمیر کے لوگوں اور قیادت کو یہاں کی سر زمین پر ہونے والی ہر ہلاکت پر افسوس ہے۔ انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا''چونکہ یہاں کے لوگ روز اپنے پیاروں کے جنازوں کو کاندھا دیتے آرہے ہیں اس لئے ہر مرنے والے کے خاندان کا دکھ درد سمجھ سکتے ہیں۔'' انہوں نے کہا '' کشمیر تنازع کے حل میں تاخیر، جموں کشمیر کے لوگوں کی خواہشات سمجھنے سے انکار اور یہاں کے لوگوں کیخلاف طاقت کا استعمال عمل میں لاکر ایک سیاسی مسئلے کوفوجی رنگ دینے سے وادی کشمیر میں خاص کر صورتحال سنگین بنی ہوئی ہے اور ہماری نئی نسل اس کا شکار ہورہی ہے۔ جو بھارت کی پالیسی کو یہاں نافذ کرنے کیلئے تعینات ہیں ، اُنہیں بھی اس کی قیمت ا

لیتہ پورہ حملہ: بھارت نے پاکستان سے 'پسندیدہ ملک کا درجہ' واپس لیا

سرینگر/بھارت نے جمعہ کو پاکستان سے ''پسندیدہ ملک کا درجہ'' واپس لے لیا۔ یہ اقدام جنوبی کشمیر کے لیتہ پورہ پانپور میں عسکریت پسندوں کے حملے کے اگلے روز کیا گیا۔ اس حملے میں کم سے کم49فورسز ہلکار ہلاک ہوگئے۔ خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق نئی دلی میں سیکورٹی سے متعلق کابینہ کمیٹی کی میٹنگ کے بعد وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ حملے میں ملوث افراد کو قانون کے دائرے میں لانے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا ''پاکستان کو الگ تھلگ کرنے کیلئے سفارتی کوششیں تیز کی جارہی ہیں''۔ بھارت نے بہت پہلے پاکستان کو''پسندیدہ ملک کا درجہ'' دے رکھا تھا، جو آپسی تجارت سے متعلق ہے تاہم پاکستان نے ابھی بھارت کو یہ درجہ نہیں ہے۔ بھارت کا الزام ہے کہ لیتہ پورہ حملے میں پاکستان ملوث ہے ۔ اس حملے میں م

کشمیر شاہراہ تازہ پسیاں گر آنے کے بعد ٹریفک کیلئے پھر بند

 سرینگر/تین دن تک جزوی طور کھلی رہنے کے بعد سرینگر۔جموں شاہراہ کو جمعہ کو ٹریفک کیلئے پھر بند کیا گیا۔ حکام کے مطابق یہ اقدام شاہراہ پر رامبن۔رامسو علاقے میں تازہ پسیاں گر آنے کے بعد اٹھایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رات بھر بارش ہونے کی وجہ سے شاہراہ پر پسیاں گر آئی ہیں جنہیں ہٹانے کا کام جاری ہے۔  

لیتہ پورہ جنگجو حملہ: مرنے والے فورسز اہلکاروں کی تعداد بڑھ کر20

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر لیتہ پورہ کے نزدیک گوری پورہ میں جمعرات کو جنگجوئوں نے سی آر پی ایف کی ایک گاڑی کو نشانہ بناتے ہوئے حملہ کیا جس کے نتیجے میں کم سے کم 20اہلکارہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے۔ جنگجوئوں کا یہ حملہ اپنی نوعیت کا انوکھا حملہ تھا جس میں جنگجوئوں نے سی آر پی ایف گاڑی کو دھماکے کی زد میں لایا۔ اطلاعات کے مطابق علاقے میں ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی گئی جس کے بعد علاقے میں لوگوں کو بھاگتے ہوئے دیکھا گیا۔ ذرائع کے مطابق پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا گیا ہے۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔  

لیتہ پورہ جنگجو حملہ: 12فورسزا ہلکار ہلاک15زخمی

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر لیتہ پورہ کے نزدیک گوری پورہ میں جمعرات کو جنگجوئوں نے سی آر پی ایف کی ایک گاڑی کو نشانہ بناتے ہوئے حملہ کیا جس کے نتیجے میں  12اہلکارہلاک اورکم سے کم15 زخمی ہوگئے۔ جنگجوئوں کا یہ حملہ اپنی نوعیت کا انوکھا حملہ تھا جس میں جنگجوئوں نے سی آر پی ایف گاڑی کو دھماکے کی زد میں لایا۔ اطلاعات کے مطابق علاقے میں ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی گئی جس کے بعد علاقے میں لوگوں کو بھاگتے ہوئے دیکھا گیا۔ ذرائع کے مطابق پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا گیا ہے۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔  

لیتہ پورہ پانپور میں فورسز گاڑی پر جنگجوئوں کا شدید حملہ،15اہلکار زخمی

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر لیتہ پورہ کے نزدیک گوری پورہ میں جمعرات کو جنگجوئوں نے سی آر پی ایف کی ایک گاڑی کو نشانہ بناتے ہوئے حملہ کیا جس کے نتیجے میں کئی اہلکاروں کے شدید زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ اطلاعات کے مطابق علاقے میں ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی گئی جس کے بعد کم و بیش 15سی آر پی ایف اہلکاروں کو شدید زخمی حالت میں پایا گیا۔ ذرائع کے مطابق پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا گیا ہے۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔  

لیتہ پورہ پانپور میں فورسز گاڑی پر جنگجوئوں کا شدید حملہ

سرینگر/سرینگر۔جموں شاہراہ پر لیتہ  پورہ  کے  نزدیک  گوری  پورہ  کے  مقام  پرجمعرات کو جنگجوئوں نے سی آر پی ایف کی ایک گاڑی کو نشانہ بناتے ہوئے حملہ کیا جس کے نتیجے میں کئی اہلکاروں کے شدید زخمی ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ مقامی ذرائع کے مطابق انہوں نے ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی جس کے بعد شدید فائرنگ ہوئی۔ ذرائع کے مطابق پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا گیا ہے۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔  

گیارہویں میں ناکام ہوئے طالب علموں کا احتجاج، بمنہ بورڈ آفس میں توڑ پھوڑ

سرینگر/جمعرات کوگیارہویں جماعت کے امتحانی نتائج میں ناکام ہوئے بیسیوں طالب علموں نے جموں کشمیر سٹیٹ بورڈ آف سکول ایجوکیشن کے آفس واقع بمنہ، سرینگر میں جمع ہوکر'' خراب ''نتائج کیخلاف احتجاج کیا۔ بورڈ آفس حکام نے کہا کہ احتجاجی طالب علموں نے بورڈ کے دفتر میں کھڑکیوں کے شیشے توڑ دئے اور توڑ پھوڑ بھی کی۔ بورڈ سے وابستہ ایک آفیشل نے کہا کہ احتجاج طالب علموں کو چاہئے کہ وہ اپنے جوابی پرچوں کی نقل حاصل کرکے اپنی کارکردگی خوددیکھیں یا مذکورہ پرچوں کی دوبارہ مارکنگ کیلئے درخواست دیں۔ انہوں نے کہا کہ طالب علموں نے بورڈ کے دفتر میں امن و قانون کی صورتحال پیدا کی جس کو لیکر بورڈ حکام پولیس طلب کرنے پر مجبورہوگئے جنہوں نے صورتحال کو قابو میںکرلیا۔ اس واقعہ کے کچھ ویڈیوز، جو وائرل ہوئے ہیں، میں کئی احتجاجی طالب علموں کو بورڈ آفس میں توڑ پھوڑ کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے