تازہ ترین

دنیشور شرما گورنر سے ملاقی

    سری نگر/ریاست کیلئے خصوصی مذاکرات کار دنیشور شرما نے منگل کو راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک سے ملاقات کی ۔ ایک سرکاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ شرما نے گورنر کو ریاست کے لوگوں کے ترقیاتی و سیاسی معاملات کے بارے میں حاصل کی گئی اپنی رائے سے آگاہ کیا۔ بیان کے مطابق گورنر اور شرما نے ریاست کی اندرونی سلامتی صورتحال اور ریاست کی مجموعی ترقی کے علاوہ انتظامیہ میں جواب دہی اور شفافیت واپس لانے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔ بیان میں مزید بتایا گیا کہ انہوں نے امرناتھ یاترا کو احسن طریقے پر منعقد کرنے کے سلسلے میں کئے جارہے انتظامات پر بھی بات چیت کی۔    

شمالی کشمیر کے سوپور علاقے میں فورسزاورجنگجو ئوں کے مابین معرکہ آرائی

سرینگر/شمالی کشمیر کے سوپور علاقے میں منگل بعد دوپہر کوفورسز اور جنگجوئوں کے مابین معرکہ آرائی شروع ہوگئی ہے۔ یہ معرکہ آرائی سوپور کے وڈورہ پائین نامی علاقے میں شروع ہوگئی۔ اس سے قبل آج صبح فورسز نے جنگجو مخالف آپریشن عمل میں لاتے ہوئے مذکورہ علاقے میں تلاشی شروع کی جس کا سلسلہ دن بھر جاری رہا۔ پولیس ذرائع کے مطابق دن بھر کے تلاشی آپریشن کے دوران آخر کارجنگجوئوں اور فورسز کا آمنا سامنا ہوگیا جس کے بعد طرفین میں گولیوں کا تبادلہ شروع ہوگیا۔  اطلاعات کے مطابق آج صبح فوج، سی آر پی ایف اور اس او جی اہلکاروں نے مل کر وڈورہ کو محاصرے میں تلاشی آپریشن شروع کیا تھا۔  

پنڈت کشمیر آکرالگ کالونیوں میں نہیں رہنا چاہتے :میرواعظ

سرینگر/ حریت کانفرنس (ع) کے چیرمین میرواعظ عمر فاروق نے کشمیری پنڈتوں کو کشمیری سماج کا ایک ناقابل تنسیخ حصہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے '' ہمارا یہ واضح موقف رہا ہے کہ کشمیری سماج اور تہذیب کا ایک حصہ ہونے کے ناطے کہ ہم ان کی پر امن گھر واپسی کا ہمیشہ خیر مقدم کریں گے اور اس سلسلے میں ہم نے بارہا پنڈت برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے گھروں کو لوٹ آئیں اور ماضی کی طرح کشمیری تہذیب و تمدن کا ایک حصہ بن کریہاں زندگی گزاریں''۔ ایک بیان کے مطابق تولہ مولہ میں میلہ کھیر بھوانی میں شرکت کیلئے آئے پنڈتوں کے ایک اعلیٰ سطحی وفد ،جس کی قیادت شری ستیش کمار اور نتھل رازدان کررہے تھے، سے اپنی رہائش گاہ واقع میرواعظ منزل نگین پر ملاقات کے دوران میرواعظ نے انہیں کہا کہ کشمیری پنڈتوں کی گھر واپسی پر کوئی سیاست کرنے کے بجائے ان کی واپسی کو انسانی نقطہ نظر سے دیکھا جانا چاہئے ۔ بیان میں

سمبل میں مبینہ اجتماعی عصمت دری کا واقعہ،خاتون سمیت پانچ افراد گرفتار

سرینگر/شمالی کشمیر کے سمبل میں منگل کو پولیس نے ایک خاتون سمیت پانچ افراد کو گرفتار کرلیا جن پر الزام ہے کہ وہ ایک لڑکی کی مبینہ اجتماعی عصمت دری اور بلیک میلنگ میں ملوث ہیں۔ متاثرہ لڑکی کے گھروالوں کی طرف سے پولیس کے پاس دائر شکایت میں بتایا گیاہے کہ سمبل کے نوگام علاقے میں ایک لڑکی کی کچھ ماہ قبل عصمت دری کی گئی۔ شکایت کے مطابق عصمت دری کرنے والے نے لڑکی کو بلیک میل کیا جس کے نتیجے میں بعد میں اس کی کئی اور لوگوں نے عصمت دری کی۔ پولیس ذرائع نے متاثرہ لڑکی کے گھروالوں کی طرف سے شکایت موصول ہونے کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں ایف آئی آر نمبر109/2019کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی ہے اور کچھ گرفتاریاں بھی عمل میں لائی گئی ہیں۔    

شوپیان معرکہ میں مارے گئے جنگجو آئی ایس نظریات سے متاثر تھے :پولیس

سرینگر /پولیس نے منگل کو اپنے ایک بیان میں کہا کہ پہاڑی ضلع شوپیان کے آونیرا علاقے میں سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں مارے گئے جنگجوئوں کی شناخت سیار احمد بٹ ساکنہ یاری پورہ کولگام اور شاکر احمد وگے ساکنہ آونیرا شوپیان کے بطور ہوئی ہے۔  پولیس نے کہا کہ پولیس ریکارڈ کے مطابق مہلوک جنگجو آئی ایس نظریات سے متاثر تھے اور وہ سیکورٹی فورسز پر حملوں ، عام شہریوں کو تشدد کا نشانہ بنانے کی کارروائیوں اور دیگرسرگرمیوں میں قانون نافذ کرنے والے ادارے کو انتہائی مطلوب تھے۔ پولیس کے مطابق جائے جھڑپ کے نزدیک سیکورٹی فورسز نے اسلحہ وگولہ بارود اور قابلِ اعتراض مواد برآمد کرکے ضبط کیا ہے۔ برآمد کئے گئے قابلِ اعتراض مواد کو قانونی جانچ کیلئے روانہ کیا گیا ہے۔ پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کرکے مزید تحقیقات شروع کی ہے۔    

شمالی کشمیر میں پانچ افراد زہریلی چائے پینے کے بعد داخل اسپتال

سرینگر/شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں ایک ہی گھر کے تین افراد سمیت پانچ شہریوں کو زہریلی چائے پینے کے بعد اسپتال میں داخل کیا گیا۔ یہ واقعہ ضلع کے کنزر علاقے میں گذشتہ اتوارکوپیش آیا جب ایک80سالہ خاتون نے اپنے شوہر بیٹے اور دو ہمسایوں کیلئے چائے تیار کرتے ہوئے کسی زہریلی شے کو چائے کی پتی سمجھ کر استعمال کیا۔ سٹیشن ہائوس آفیسر (ایس ایچ او) کنزر بشارت احمد کے مطابق خاتون سمیت جن پانچ افراد نے چائے استعمال کی تھی، اُنہیں ضلع کے ماگام اسپتال پہنچایا گیا جہاں سے اُنہیں جے وی سی بمنہ منتقل کیا گیا۔ خبر رساں ایجنسی جی این ایس کے مطابق جن افراد کو اسپتال میں داخل کرایا گیا اُن میں عبد الغنی صوفی، اُن کی اہلیہ ساجہ، اُن کا بیٹا فاروق احمد صوفی، غلام قادر وازہ اور غلام محمد وانی ساکنان اتکو دھوبی ون شامل ہیں۔  

نقب زنوں نے سوپور میں 2دکانوں کو لوٹ لیا

سرینگر/شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ میں نقب زنوں نے دو دکانوں کو لوٹ لیا۔ یہ واقعہ گذشتہ رات کے دوران سوپور قصبہ میں پیش آیا جس کے دوران نقب زن لاکھوں روپے مالیت کا سامان لوٹ کر چلے گئے۔ اطلاعات کے مطابق نقب زنوں نے مین مارکیٹ سوپور میں واقع فاروق احمد صوفی کی کپڑے کی دکان اور تحصیل روڑ پر واقع محمد یوسف بٹ کے پرویژنل سٹور سے لاکھوں روپے مالیت کا ساما لوٹ لیا۔ قصبہ کے دکانداروں نے سیول انتظامیہ اور پولیس پر الزام عاید کیا ہے کہ وہ اس طرح کے واقعات روکنے میں ناکام ہوئے ہیں۔ پولیس ذرائع کے مطابق چوری کی ان دو وارداتوں کے سلسلے میں کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی گئی ہے۔  

شمالی کشمیر کے ایک گائوں میں فورسزکا جنگجو مخالف آپریشن

سرینگر/شمالی کشمیر کے سوپور علاقے میں فورسز نے منگل کو جنگجو مخالف آپریشن عمل میں لاتے ہوئے تلاشی شروع کی۔ یہ کارروائی سوپور کے وڈورہ پائین گائوں میں عمل میں لائی جارہی ہے جہاں فورسز کو جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملی تھی۔ اطلاعات کے مطابق فوج، سی آر پی ایف اور اس او جی اہلکاروں نے مل کر وڈورہ کو محاصرے میں تلاشی آپریشن شروع کیا ہے۔ گائوں کے تمام راستے بند کردئے گئے ہیں اور فورسز کی کارروائی آخری اطلاعات ملنے تک جاری تھی۔    

شوپیان ضلع میں فورسز کیساتھ معرکہ آرائی کے دوران دو جنگجو جاں بحق

سرینگر/جنوبی کشمیر کے شوپیان ضلع میں منگل کی صبح فورسز کے ساتھ معرکہ آرائی کے دوران دو جنگجو جاں بحق ہوگئے۔ یہ معرکہ علی الصبح آونیرہ نامی گائوں میں پیش آیا جو ضلع کے زینہ پورہ علاقے میں پڑتا ہے۔ پولیس کے مطابق فورسز نے جنگجوئوں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد آونیرہ گائوں کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا جس کے دوران چھپے جنگجوئوں نے فورسز پر فائرنگ کرکے فرار ہونے کی کوشش کی تاہم اُن کی یہ کوشش ناکام بنائی گئی اور جوابی کارروائی میں دو جنگجوئوں کو جاں بحق کیا گیا۔ پولیس نے مزید کہا کہ جاں بحق جنگجوئوں کی شناخت کا کام جاری ہے۔ تاہم خبر رساں ایجنسی جی این ایس کے مطابق جاں بحق جنگجوئوں میں سیار احمد بٹ ولد ثنا اللہ ساکنہ ماچھوا کولگام اور شاکر احمد وگے ساکنہ آونیرہ شامل ہیں۔ مذکورہ دونوں جنگجو انصار غزوة الہند نامی عسکری گروہ کے ساتھ وابستہ تھے۔ دریں اثناء