شاٹھ گنڈ بالا ماور ہندوارہ میں معرکہ، ڈاکٹر منان ساتھی سمیت جاں بحق

 کپوارہ //شاٹھ گنڈ بالا، ماور ہندوارہ میں فورسز کیساتھ جھڑپ میں حزب المجاہدین کے سکالر کمانڈر منان وانی اپنے ساتھی سمیت جاں بحق ہوا۔اس دوران جائے جھڑپ پر مظاہرین اور فورسز میں شدید تصادم آرائی کے دوران قریب ایک درجن افراد زخمی ہوئے ، جن میں 8افراد کو گولیاں اور پیلٹ لگے۔منان وانی کی ہلاکت کی خبر پھیلتے ہی کپوارہ ،ہندوارہ اور لنگیٹ میں ہڑتال اور ٹریفک بند رہنے کے دوران درجنوں مقامات پر پتھرائو کے واقعات رونما ہوئے اور انتظامیہ نے شمالی اور جنوبی کشمیر میں انٹر نیٹ سروس بند کرنے کے علاوہ کالج اور دیگر تعلیمی ادارے بند کردیئے۔ اس دوران دونوں جنگجوئوں کو سپرد خاک کیا گیا جس کے دوران انکی نمازہ جنازہ میں ہزاروں لوگ شریک ہوئے۔ جھڑپ کیسے ہوئی؟ شاٹھ گنڈ بالا، ماور ہندوارہ کا 30آر آر ، پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ ہندوارہ اور سی آر پی ایف نے رات کے قریب اڈھائی بجے محاصرہ کیا اور

شوپیان میں حریت (گ)کارکن کی ہلاکت پر مظاہرے

شوپیاں//شوپیان کے مضافات میمندر میں نامعلوم مسلح افراد نے حریت (گ) سے وابستہ مسلم لیگ کے ایک کارکن طارق احمد گنائی ولد محمد یعقوب عرف طارق مقدم کو گولیاں مار کر ہلاک کر دیا۔مقامی لوگوں کے مطابق نامعلوم افراد نے طارق احمد کو اس وقت بلا کر اپنے ساتھ لیا جب وہ میمندر شوپیان میں اپنی رہائش گاہ پر تھا۔ مسلح افراد نے اسے قریب دو سو میٹر دوری پر شال لٹو میمندر روڈ پر گولیاں مار کر ہلاک کر دیا۔طارق کے ہلاک ہونے کی خبر پھیلتے ہی پورے علاقے میں صف ماتم چھا گیا۔ہزاروں کی تعداد میں لوگ میمندر پہنچے اور زبردست مظاہرے کئے اسکے بعد جلوس کی صورت میں میت کو لیکر ایک بڑے میدان میں پہنچایا گیا۔ جہاں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے طارق کی نماز جنازہ ادا کی۔اس دوران طارق کے جنازے میں سات عسکریت پسند بھی دیکھئے گئے جنہوں نے بطور سلامی ہوا میں فائر کئے۔اسکے بعد اسلام و آزادی کے حق میں نعرے بازی کی گونج میں طا

منان وانی:5جنوری سے 11اکتوبر تک

سرینگر +کپوارہ//منان وانی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں اپلائڈ جیالوجی میں پی ایچ ڈی کر رہے تھے۔5جنوری 2018کویو بی جی ایل لیکر منان کی تصویر عام ہوگئی،جس میں یہ پیغام تحریر کیا گیا تھا کہ انہوں نے عسکری صفوں میں شمولیت اختیار کی ہے۔تاہم منان کے اہل خانہ کا کہنا تھا کہ انہیں اس بات کی کوئی علمیت نہیں تھی کہ انہوں نے عسکری صفوں میں شمولیت اختیار کی،بلکہ انہیں بھی سماجی میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا۔علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی وئب سائٹ کے مطابق26برس کے منان  وانی’’اسٹریکچل اینڈ جیومورفو لوجیکل اسٹڈی آف لولاب ویلی کشمیر‘‘ میں پی ایچ ڈی کر رہے تھے۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی وئب سائٹ کے مطابق منان وانی نے2016میں ’’پانی،ماحولیات،موسمیات و معاشرہ‘‘(واٹر،انورمنٹ،ایکولجی اینڈ سوسائٹی) پر منعقدہ عالمی کانفرنس میں بہترین مکالے کیلئے ایوارڈ بھی حاصل کیا ت

تحریک عظیم اثاثے سے محروم

سنیچر کو جہاں چنائو وہاںہڑتال کی کال برقرار   سرینگر //مشترکہ مزاحمتی قائدین سید علی گیلانی ، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے سرکردہ عسکریت پسند اور اسکالر ڈاکٹرمنان بشیر وانی اور اس کے ساتھی کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ  منان بشیر وانی جو نہ صرف ایک ممتاز اسکالر تھے بلکہ موصوف ایک ادیب اور نامور قلمکار تھے ،کی شہادت سے رواں تحریک آزادی ایک عظیم اثاثے سے محروم ہو گئی ہے۔قائدین نے ڈاکٹر منان بشیر وانی کی شہادت کو تحریکی صفوں میں ایک زبردست نقصان قرار دیتے ہوئے اس سانحہ کیخلاف 12 اکتوبر 2018 بروز جمعتہ المبارک کو پورے جموںوکشمیر میں مکمل احتجاجی ہڑتال کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر جہاں رواں تحریک آزادی کے ساتھ یہاں کی چوتھی نسل جڑ چکی ہے میں پڑھے لکھے اعلیٰ تعلیم یافتہ افراد کا عسکریت کی جانب رجحان دراصل بھارت کی جارحانہ پالیسیوں کا نتی

سرینگر مئیر سے متعلق گورنر کے تاثرات

سرینگر//گورنر انتظامیہ نے کہا ہے کہ ریاست میں شہری بلدیاتی اداروں اور پنچائیتوں کے انتخابات ایک آزادانہ شفاف اور منصفانہ طریقے پر منعقد کئے جا رہے ہیں اور ان کے نتائج کا دارو مدار صرف اور صرف عوام کے ہاتھوں میں ہے ۔ راج بھون سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ پچھلے تین دنوں سے گورنر ستیہ پال ملک کی طرف سے ایک انٹر ویو کے ایک حصے کو غلط انداز سے پیش کیا گیاہے جس کے نتیجے میں یہ الزامات سامنے آئے ہیں کہ گورنر نے پہلے ہی فیصلہ لیا ہے کہ ایک مخصوص اُمیدوار کو سرینگر کا مئیر بنایا جائے گا ۔ انٹر ویو کے جس حصے کو توڑ مروڑ کر پیش کیا جا رہا ہے اُس کا متن یہ ہے ۔ سوال ۔ کیا آپ اُنہیں یقین دہانی کرانے اور اُن کو ساتھ میں لے کر چلنے کیلئے کچھ انتظار نہیں کر سکتے تھے ؟۔ گورنر ۔ آپ کے جواز کی ۔۔ سے نفی ہوتی ہے ۔ ہم نے اننت ناگ کیلئے انتظار کیا ، کُچھ بدلا ، انتظار کرنے سے کچھ بھی نہیں بدلے گا ۔ ا

اننت ناگ کے ایک پولنگ سٹیشن میں دوبارہ پولنگ کے احکامات

سری نگر//چیف الیکٹورل آفیسر شالین کابرا نے وارڈ نمبر 23 میونسپل کونسل اننت ناگ کے ایک پولنگ سٹیشن کے لئے دوبارہ پولنگ کے احکامات جاری کئے ۔سی ای او کی طرف سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق 10؍ اکتوبر 2018ء ( بدھ وار ) کو میونسپل کونسل اننت ناگ کے پولنگ سٹیشن نمبر 4 نیو کالونی شیر پورہ پائین وارڈ نمبر 23( شیر پورہ بالا) میں منعقد کئے گئے انتخابات کو رد کردیا گیا ہے اور اس پولنگ سٹیشن کے لئے دوبار ہ پولنگ 13؍ اکتوبر 2018ء ( سنیچروار ) صبح 6بجے سے سہ پہر 4تک منعقد ہوگی۔

وادی میں بلدیاتی انتخابات کے 2مرحلے

 صرف 106وارڈوں میں انتخاب ہوا، 148 امیدوار میدان میں   سرینگر// وادی میںبلدیاتی انتخابات کے2مراحل میں مجموعی طور پر106انتخابی وارڈوں میں268امیدواروں کی قسمت الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں بند ہوگئی ہے،جبکہ پہلے مرحلے میں8 فیصد اور دوسرے مرحلے میں ووٹنگ کی شرح3فیصد رہی۔ دونوں مرحلوں میں130امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہوئے،جبکہ79انتخابی وارڈوں پر کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا تھا۔ وادی میں پہلے مرحلے میں57 انتخابی حلقوں میں ہونے والے انتخابات میں سب سے زیادہ ووٹ ضلع کپوارہ جبکہ سب کم ضلع بانڈی پورہ میں ڈالے گئے۔پہلے مرحلے میں مجموعی طور پر84ہزار692ووٹوں میں سے 7ہزار 57 ووٹ ڈالے گئے۔ بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں49انتخابی وارڈوں میں ووٹ ڈالے گئے،جس کے دوران 148 امیدواروں کی سیاسی تقدیر الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں قید ہوگئی۔ وادی میں مجموعی طور پر ووٹوں کی شرح3فیصدر ہی ،جس

تازہ ترین