تازہ ترین

ککڑیال کٹرہ اور سوپور میں شدیدجھڑپیں ، 2 معرکوں میں5جنگجو جاں بحق

 ادہم پور+سوپور+کپوارہ// ککریال کٹرہ اورسوپور میں سیکورٹی فورسز اور جنگجوئوں کے درمیان خونریز معرکہ آرائی کے دوران5جنگجو جاں بحق جبکہ ایس ڈی پی او کٹرہ ، فوجی میجر، سی آر پی ایف کے دو آفیسر اور دیگر 8فورسز اہلکار زخمی ہوئے۔  ککڑیال کٹرہ  ریاسی کے ککڑیال کٹرہ علاقہ میں ملی ٹینٹوں اور فورسز کے مابین 6گھنٹے تک چلنے والے مسلح تصادم میں 3جنگجو جاں بحق ہو گئے جب کہ اس آپریشن میں 4افسران سمیت 12فورسز اہلکار زخمی ہو ئے۔ جی او سی یونیفارم فورس میجر جنرل اروند بھاٹیہ نے میڈیا کو بتایا کہ جمعرات کی صبح11:40منٹ پر اس وقت جھڑپ شروع ہوئی جب کل جھجر کوٹلی سے مفرور3 ملی ٹینٹوں کو ویشنو دیوی یونیورسٹی سے ملحق ککڑیال علاقہ کے دھیرتھی گائوں کے ایک مکان میں گھیر لیا گیا۔ رات بھر جھجر نالہ میں گزارنے کے بعد ملی ٹینٹ راج کمار نامی ایک شخص کے گھر میں داخل ہوئے اور کھانا طلب کیا لیک

جسٹس گگوئی سپریم کورٹ کے نئے چیف جسٹس مقرر

  نئی دہلی//صدر رامناتھ کووند نے سپریم کورٹ کے دوسرے سینئرترین جج رنجن گگوئی کو اگلا چیف جسٹس مقرر کیا ہے۔جج گوگوئی تین اکتوبر کو نئے چیف جسٹس کے عہدہ کا حلف لیں گے۔ وہ موجودہ چیف جسٹس دیپک مشرا کی جگہ لیں گے ، جو 2اکتوبر کو ریٹائر ہورہے ہیں۔  

فوج کو حاصل خصوصی اختیارات سے متعلق قانون افسپا کو نرم کرنے کی تجویز زیر غور

 مشتبہ جنگجوؤں کی گاڑیوں کی تلاشی اور انہیں ضبط کرنے کا اختیار دیا جائیگا   نئی دہلی // مرکزی وزارت داخلہ کے سامنے یہ تجویز زیر غور ہے کہ فوج کو حاصل خصوصی اختیارات سے متعلق قانون (افسپا) میں ترمیم کی جائے جس میں سے ’’ فوج کو کسی کو مارنے کی شق‘‘ ختم کرکے اس میں مزید کچھ چیزیں شامل کی جائیں۔ ریاست جموں و کشمیر  میں نافذ متنازعہ قانون افسپا، جسکے تحت فوج کو استثنیٰ حاصل ہے، پر نظر ثانی کی تجویز وزارت داخلہ کے زیر غور ہے۔ اس قانون کے تحت فوج کسی بھی گھر میں بغیر اجازت داخل ہوکر تلاشی لے سکتی ہے، شک کی بنا پر کسی کو گرفتار کرسکتی ہے، مشکوک حرکات کی بنا پر گولی چلا سکتی ہے، خدشے کی بنا پر کسی کو ہلاک کرسکتی ہے،مکان کو اڑا سکتی ہے۔لیکن کسی بھی عدالت میں فوج کیخلاف کیس دائر نہیں کیا جاسکتا، نہ پولیس میں ایف آئی آر درج ہوسکتی ہے اور نہ کوئی گر

۔35اے اور مجوزہ انتخابات پرکل جماعتی اجلاس

 ’’ ریاستی سرکارپنچایتی اور بلدیاتی چنائو کرانا چاہتی ہے تو شوق سے کرائے‘‘   سرینگر //سیاسی جماعتوں کے لیڈران نے آرٹیکل 35Aکی سپریم کورٹ میں پیروی کرنے والے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل تشار مہتا کو فوری طور تبدیل کرنے اور نئے انتخابات تک کیس کی سماعت  بند کرنے پر اتفاق کیا ہے ۔جمعرات کو نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ پر سیاسی لیڈران کی ایک میٹنگ منعقد ہوئی جس میں 35Aکے دفاع کے علاوہ سیاسی اور سیکورٹی صورتحال بھی بات چیت کی گئی ۔میٹنگ کے فوراً بعدعمر عبداللہ نے پریس کانفرنس میں کہا کہ سپریم کورٹ میں ریاستی حکومت کی طرف سے پیش ہوئے وکیل تشار مہتا نے حکومت کے مؤقف سے ہٹ کر بات کی ، جس کا اعتراف حکومت نے بھی کیا ہے جو سراسر غلط ہے۔عمر عبداللہ نے کہا کہ انہیں اپنی بات کرنے کیلئے وہاں نہیں بھیجا گیا تھا ،نہ وہ کسی سیاسی تنظیم کی ب

پولیس اہلکاروں کے ایکس گریشا ریلیف میں اضافہ

سرینگر// ریاستی پولیس سربراہ دلباغ سنگھ نے سرکار کی طرف سے جاںبحق پولیس اہلکاروں اور ایس پی ائوز کے نزدیکی رشتہ داروں کے معاوضے میں اضافے کا خیر مقدم کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت کی طرف سے معاوضے میں اضافے سے نہ صرف جاںبحق پولیس اہلکاروں اور ایس پی ائوز کے رشتہ داروں کو طویل مدت تک مالی معاونت کا استفادہ ہوگا بلکہ ان کے بچے بھی بہتر اور معیاری تعلیم سے آراستہ ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے سرکار کی طرف سے ایس پی ائوز کے ایکس گریشیا ریلیف میں اضافے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایس پی ائوز ریاستی پولیس کے شانہ بشانہ جنگجو مخالف کارروائیوں میں حصہ لے کر عوامی خدمات انجام دینے کے دوران مقدس قربانیاں پیش کر رہے ہیں ۔

حریت کالعدم تنظیم نہیں: عدالت

نئی دہلی//دلی کی ایک عدالت نے قریب ایک برس سے تہاڑجیل میں نظربندمعروف کشمیری تاجرظہوروٹالی کو ضمانت پر رہا کرنے کے احکامات صادر کئے ہیں۔ 24جولائی2017کوقومی تحقیقاتی ایجنسی ’این آئی اے‘ کی جانب سے سری نگراورنئی دہلی میں الگ الگ کارروائیوں کے دوران 7 مزاحمتی لیڈران بشمول نعیم احمد، الطاف احمدشاہ ،ایازاکبر،یرسیف اللہ ،شاہدالاسلام ،معراج الدین کلوال اورفاروق ڈارعرف بٹہ کراٹے کوگرفتارکئے جانے کے بعداین آئی اے نے معروف تاجرظہووٹالی کے علاوہ جنوبی کشمیرکے ایک نوجوان فوٹو جرنلسٹ کامران یوسف اورجاویداحمدبٹ کوبھی حراست میں لیکرنئی دہلی منتقل کیاتھا۔سبھی ملزمان یعنی سات مزاحمتی لیڈروں ،ظہوروٹالی،کامران یوسف اورجاویدبٹ کیخلاف این آئی اے نے دلی کے پٹیالہ ہائوس کورٹ میں 18جنوری2018کو چارج شیٹ داخل کیا تھا۔تاہم فردجرم عائدکئے جانے کے کچھ وقت بعداسی عدالت نے کامران یوسف اورجاوید احمدبٹ

شیعہ و سنی کارڈنیشن کمیٹی اجلاس

سرینگر//شیعہ و سنی کارڈنیشن کمیٹی کا ایک اہم اجلاس یہاں منعقد ہوا جس میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ محرم الحرام کے متبرک ایام میں آپسی بھائی چارہ کو ہر صورت برقرار رکھنے کیلئے سبھی مزاحمتی، مذہبی اور سماجی تنظیمیں اپنا اپنا کردار ادا کریں۔اتحاد المسلمین سربراہ و سینئر مزاحمتی لیڈر مولانا مسرور عباس انصاری کی صدارت میں میٹنگ میں مختلف شیعہ و سنی مذہبی جماعتوں نے محرم الحرام کے متبرک ایام کی فضیلت اور کربلا کی اہمیت کو اجاگر کیا۔اجلاس میں شیعہ و سنی کارڈنیشن کمیٹی کے رکن اور لبریشن فرنٹ سربراہ محمد یاسین ملک نے کہا کہ محرم الحرام کے ایام کے دوران دشمنوں کی ہمیشہ یہ کوشش رہتی ہے کہ کسی نہ کسی طریقے سے آپسی اتحاد کو پارہ پارہ کیا جائے ،لیکن معزز قائدین کی کاوشوں سے آج تک دشمن کی یہ تمام کوششیںناکام ثابت ہوچکی ہیں۔انہوں نے کہا کہ معرکہ کربلا حق و باطل کے درمیان جنگ تھا جہاں تک کشمیری قوم

قہر انگیز ژالہ باری اور آندھی

بارہمولہ،کپوارہ//ضلع بارہمولہ، کپوارہ اور بڈگام کے کئی علاقوں میں جمعرات کو  قہر انگیز ژالہ باری اور آندھی سے میوہ باغات ،اخروٹ اور دیگر فصلوں کو زبردست تباہی مچائی ۔ بارہمولہ کے پٹن ، پلہالن ،نہال پورہ ،وسن، رفیع باد،ٹنگمرگ ،کنڈی اور ناروائو کے علاوہ دیگر علاقوں میں شدید ژالہ باری ہوئی جس نے میوہ باغات ،اخروٹ ،مکئی،دھان کے علاوہ کئی فصلوں کو تباہ کیا ہ۔جس کی وجہ سے کسانوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ قہر انگیز آندھی کی وجہ سے سرینگر مظفر آباد شاہراہ پر کئی جگہوں پر سفیدے اکھڑ گئے جس کے نتیجے میں کئی گھٹوں تک ٹریفک کی آمد رفت میں خلل پڑا جبکہ کئی علاقوں میں بجلی سپلائی بھی متاثر ہوئی ۔ بڈگام کے چک کاوسہ ، کائوسہ خالسہ ، نار بل ، مازہامہ ، بیروہ ، ماگام کے علاوہ درجنوں دیہات میں پہلے گرج چمک کے ساتھ تیز ہوائیں اور بارشیں شروع ہوئیں اور پھر شدید ژالہ باری کا سلسلہ شروع ہوا ۔ قہ

ڈائریکٹرنیشنل ہیلتھ مشن تبدیل

سرینگر// حکومت نے انتظامیہ میں تبادلے اور تقرریوں کے سلسلے کو جاری رکھا ہے۔ جمعرات کو جاری کئے گئے حکمنامے کے مطابق نیشنل ہیلتھ مشن کے ڈائریکٹر ڈاکٹر موہن سنگھ کو تبدیل کیا گیا ہے ۔کل یہاں جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے جاری کئے گئے حکمنامے میں انہیں محکمہ صحت و طبی تعلیم میں رپورٹ کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔