اننت ناگ میں جنگجوئوں کا حملہ، 5سی آر پی ایف اہلکار ہلاک

اننت ناگ//اننت ناگ میں جنگجوئوں نے پولیس اور سی آر پی ایف کی مشترکہ ناکہ پارٹی کو نشانہ بناتے ہوئے اندھا دھند فائرنگ کی،جس کے نتیجے میں2 افسران سمیت5 اہلکار اور ایک غیر مقامی جنگجو ہلاک ہوا،جبکہ ایک پولیس افسر اور دوشیزہ سمیت6 اہلکار زخمی ہوئے۔ علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشیوں کا سلسلہ شروع کیا گیا،جبکہ ضلع میں انٹرنیٹ سروس کو بھی منقطع کیا گیا۔ اننت ناگ کے کھنہ بل،پہلگام روڑ پر آکسفورڈ اسکول کے نزدیک جنگجو قریب4بجکر55منٹ پر نمودار ہوئے اور سی آر پی ایف و پولیس کی مشترکہ ناکہ پارٹی پر گولیاں چلائی۔بتایا جاتا ہے کہ گولیوں کی آوازوں سے علاقے میں افراتفری مچ گئی اور دکاندار،دکانیں کھلی چھوڑ کر محفوط جگہوں کی طرف فرار ہوئے۔ اس دوران سی آر پی ایف کے116بٹالین بی کمپنی سے وابستہ5 اہلکار ہلاک ہوئے،جن کی  شناخت اسسٹنٹ سب انسپکٹر نورد شرما،کانسٹبل مسہاش کیشوال،کانسٹبل ستندر، کانسٹبل سن

مذاکرات سے ہر شئے حاصل ہوگی،جنگجو ہتھیار ڈال دیں

سیاست دانوں نے جھوٹے خواب بیچے،کشمیر کو حقیقی جنت بنائیں گے: گورنر کی تفصیلی پریس کانفرنس   سرینگر//ریاستی گورنر نے جنگجوئوں کو ہتھیار ڈالنے کی صلاح دیتے ہوئے بات چیت کرنے کا مشورہ دیا،جبکہ ا سمبلی حلقوں کی سر نو حد بندی کو آئینی معاملہ قرار دیتے ہوئے افواہ بازی سے تعبیر کیا۔ ایس پی ملک نے قومی میڈیا کی سرزنش کرتے ہوئے کشمیر مخالف پرپگنڈہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ انتہا پسندی کے آگے جھکنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔انہوں نے جموں کشمیر بنک پر چھاپوں کو’’آر بی آئی‘‘ کی ہدایت کے تحت قرار دیتے ہوئے واضح کیا کہ بدعنوانی میں ملوث افراد کو کاروائی کا سامنا کرنا پرے گا۔ سر نو حد بندی  اسمبلی حلقوں کی سر نو حد بندی پر دہلی سے لیکر سرینگر کی سیاسی گلیاروں میں شور اور خدشات کے بیچ ریاستی گورنر ایس پی ملک نے بدھ کو سر نو حد بندی کو افو

بادوباراں سے پیرپنچال کے آر پار تباہی،2 خواتین سمیت3افراد لقمہ ٔ اجل

سرینگر //پیر پنچال سلسلے کے آر پار ہوئی طوفانی بارشوں ،شدید ژالہ باری،سیلابی صورتحال اور بادل پھٹنے کے سبب بڑے پیمانے پر نقصان ہوا ہے۔ بانڈی پورہ اور گاندر بل میں درخت گر آنے کے نتیجے میں2خواتین سمیت3افراد لقمہ اجل بن گئے جبکہ پونچھ میں ماں اور بیٹی آسمانی برق کی زد میں آکر زخمی ہوئی ہیں ۔پونچھ کے ہی سرنکوٹ علاقے میں زیر تعمیر پر نئی ہائیڈل پروجیکٹ کو سیلابی صورتحال کی وجہ سے لاکھوں کا نقصان پہنچا ہے جبکہ خطہ چناب کے ڈوڈہ اور گرگل ضلع میں الرٹ جاری کر کے سکولوں کو بند کر دیا گیا ہے۔وسطی ضلع بڈگام میں مقامی لوگوں نے 600کے قریب بھیڑ بکریوں کو غرق ہونے سے بچالیا تاہم کشتواڑ اور بال تل میں میں بادل پھٹنے سے 118بھیڑ بکریاں ہلاک ہو گئیں ۔کئی جگہوں پر مکانات اور املاک کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے کئی رابطہ پل بھی ڈھ گئے ہیں ۔وادی کے اکثر علاقوں میں ترسیلی لائیں اور کھمبے گرنے کے سبب بجلی سپ

ٹرانسپورٹروں کی ریاست گیر ہڑتال ، روزمرہ معمولات متاثر

 سرینگر//ٹرانسپورٹروں کی طرف سے ریاست گیر ہڑتال سے سرینگراور جموں میں مکمل پہیہ جام رہاجس دوران لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔عوامی حلقوں میں اس بات پر سخت ناراضگی پائی جارہی ہے کہ سرکار نے اس صورتحال میں سرکاری ٹرانسپورٹ کو بہم نہیں رکھا ۔ٹرانسپوٹروں کی طرف سے صوبائی ٹرانسپورٹ دفتر کو آن لائن کرنے ،مال بردارگاڑیوں میں ’’ٹریکنگ نظام‘‘ نصب کرنے اور شاہراہ پر ٹول ٹیکس کی وصولیابی کے خلاف بدھ کو وادی گیر پہیہ جام ہڑتال  سے عام زندگی متاثر ہوئی،جس کے نتیجے میں لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سرینگر سمیت وادی کے شمال و جنوب میں ہر طرح کی مسافر بردار گاڑیوں بشمول،بسوں،منی بسوں،سومو گاڑیوں،ٹیکسیوں اور آٹو رکھشائوں نے مکمل ہڑتال کی۔بیشتر مال بردار اور مسافر بردار گاڑیاں بس اڈوں میں دن بھر کھڑی رہیں۔ اس دوران رابطہ سڑکوں اور بین ضلعی سڑکوں پر بھی م

مرکزی کابینہ کا اجلاس

نئی دہلی//مرکزی حکومت نے جموں و کشمیر میں صدر راج کی مدت مزید چھ مہینے بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے ۔مرکزی کابینہ کی آج یہاں ہوئی میٹنگ کے بعد اطلاعات و نشریات کے وزیر پرکاش جاوڈیکر نے بتایا کہ ریاست میں صدر راج کی میعاد آئندہ 2 جولائی کو ختم ہو رہی ہے ۔ گورنر ستیہ پال ملک نے ریاست کے حالات کے پیش نظر وہاں صدر راج کی مدت 6 ماہ بڑھانے کی سفارش کی تھی جسے کابینہ نے منظوری دے دی ۔انہوں نے کہا کہ اس تجویز کو پارلیمنٹ کی منظوری کے لئے آئندہ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں پیش کیا جائے گا۔جموں و کشمیر میں گزشتہ سال 20 جون کو صدر جمہوریہ کی منظوری کے بعد گورنر راج نافذ کیا گیا تھا۔ گورنر نے اسمبلی کو قریب چھ ماہ تک زیر التوا رکھنے کے بعد گزشتہ سال 21 نومبر کو تحلیل کر دیا تھا۔گذشتہ دسمبر میں ریاست میں گورنر راج کی چھ مہینے کی مدت پوری ہو گئی تھی اور ریاست کے آئین میں اسے چھ ماہ سے زیادہ بڑھانے کا الت