تازہ ترین

شاہراہ پر 12کلو میٹر علاقہ وبالِ جان بن گیا

 بانہال //جموں سرینگر شاہراہ منگل کے روز بھی بند رہی جس کے نتیجہ میں کم از کم 3000گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئیں۔ ڈگڈول کے مقام پر وقفے وقفے سے گرتے پتھروں اور پسیوں کی وجہ سے گاڑیوں کی آمدورفت مجموعی طور معطل رہی۔ اگر چہ صبح5 بجے سے شام6 بجے تک شاہراہ کو کئی بار بحال کرنے کی کوشش کی گئی لیکن اسے پوری طرح ٹریفک کے آمد و رفت کے قابل نہیں بنایا جا سکا۔ ٹریفک حکام نے  کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ منگل کی صبح ڈگڈول کے مقام پر گر آئی پسی کو صاف کرکے قابل آمدورفت بنایا گیا اور چند سو گاڑیوں کو نکالنے کے بعد دوپہر بعد ڈیڑھ بجے ایک اور بھاری پسی گر آئی جس کی وجہ سے شاہراہ مکمل طور بند ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ گرتے پتھروں کے بیچ شام پانچ بجے شاہراہ کو دوبارہ بحال کرنے کی کوشش ناکام ہوئی۔درماندہ گاڑیوں میں 300چھوٹی مسافر بردار گاڑیاں بھی شامل ہیں جو رام بن کے 20کلو میٹر علاقے میں پھنسی ہوئ

ڈی جی پی کا متاثرہ مقامات کا دورہ

بانہال +رام بن //ڈائریکٹر جنرل آف پولیس دلباغ سنگھ نے منگل کو سرینگر جموں شاہراہ پر پسیاں گر آنے والے مختلف مقامات کا دورہ کر کے متعلقہ افسران  اور تعمیراتی کمپنی کو ہدایات دیں کہ وہ فوری طور پر اسئے اقدامات کو بروئے کار لائیں تاکہ شاہراہ پر بلا خلل ٹریفک کی روانی کو ممکن بنایا جاسکے۔آئی جی پی ٹریفک الوک کمار بھی انکے ہمراہ تھے۔وادی کی بیرون ملک کیساتھ واحد راستے پر پنتھیال سے رامسو تک 12کلو میٹر تک ہر جگہ پسیاں اور پتھر گر آتے ہیں جن کی وجہ سے شاہراہ بار بار بند ہوجاتی ہے۔ انہوں نے رام بن میں شاہراہ کے بار بار بند ہونے کے حوالے سے افسران کی ایک میٹنگ بھی طلب کی اور ٹریفک کی بلا خلل روانی کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا ۔ڈی جی پی نے ہندوستان کنسٹرکشن کمپنی کے حکام بشمول منوہر شرما ،کے ہمراہ پنتھیال، مہر ،ماروگ ، منکی موڑ ، انوکھی فال ، اور ڈگ ڈول کا تفصیلی دورہ کیا ۔ڈی جی پی نے ای

سمبل سانحہ:طلاب سراپا احتجاج

سرینگر//سمبل میں معصوم بچی کے خلاف مبینہ جنسی زیادتی کے خلاف تیسرے روز بھی طلاب میں اُبال نظر آیا،جبکہ سرینگر سمیت کئی علاقوں میں فورسز اور طلاب کے درمیان شدید جھڑپیں بھی ہوئیں۔ جنوب و شمال میں تیسرے روز بھی مظاہرین  نے اس شرمناک فعل کے خلاف صدائے احتجاج بلند کیا۔ تعلیمی ادارے منگل کو  وادی کے مختلف حصوں میں تعلیمی اداروں سے وابستہ طلبا و طالبات کی بڑی تعداد نے احتجاجی مظاہرے کئے ۔ضلع انتظامیہ بارہمولہ نے پٹن تحصیل اور سنگھ پورہ میں تمام تعلیمی اداروںجبکہ ڈگری کالج بارہمولہ اور ہائر اسکینڈری اسکول بارہمولہ کے علاوہ سوپور ہائر اسکینڈری سکولوں کو بھی در تدریس کیلئے بند رکھنے کا اعلان کیا گیاتھا۔بانڈی پورہ کے سونا واری تحصیل میں کالج اور اسکول کے علاوہ ہائر اسکینڈری اسکول ،بائز و گرلزگاندربل بھی بند رہے۔ گورنمنٹ ڈگری کالج و ہائر اسکینڈری اسکول اننت ناگ و بجبہاڑہ کے علاو

حکام کی طرف سے تحقیقات کی یقین دہانی

سرینگر //شیعہ سنی کارڈ نیشن کمیٹی نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنا احتجاج ختم کرے۔کارڈی نیشن کمیٹی کاایک غیر معمولی اجلاس سرینگر میں منعقد ہوا جس میں سمبل میں پیش آئے شرمناک واقعہ پر تفصیل کے ساتھ غور و خوض ہوا۔اجلاس میں اتفاق رائے سے قرارداد پاس کی گئی، جس میں کہا گیا ہے کہ یہ اجلاس متفقہ طور لوگوں سے اپیل کرتا ہے کہ وہ اس نازک مرحلے پر صبر و تحمل سے کام لیں اور ریاستی حکام کی ان یقین دہانیوں ،جن میں انہوں نے واقعہ کی پوری تحقیقات کے احکاما ت صادر کئے ہیں، پر بھروسہ کریں اور اپنا احتجاج ختم کرکے عبور و مرور کے راستے کھول دیں۔قرار داد کے مطابق اجلاس کشمیری عوام سے صبر و تحمل برتنے اور اتحاد و اتفاق سے کام لینے کی اپیل کرتا ہے تاکہ ان عناصر کی سازشوں کو ناکام بنایا جائے جو اس واقعہ کی آڑ میں یہاں مسلکی منافرت کی مذموم فضا قائم کرنا چاہتے ہیں اور یہاں کے خرمن امن کو آگ لگانا چاہتے ہی

گاندربل میں مبینہ عصمت ریزی کا واقعہ

گاندربل//سمبل سوناواری میں پیش آئے شرمناک واقعہ کیساتھ ہی گاندربل میں بھی اسی طرح کا واقعہ پیش آیا ہے۔پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے مبینہ طورملوث ایک طالب علم کر گرفتار کرلیا اور لڑکی کی طبی جانچ کرائی ۔ایس ایس پی گاندربل خلیل احمد پسوال نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ پولیس اسٹیشن گاندربل میں 12مئی کے روز مبینہ طورپر ایک دوشیزہ کی عصمت ریزی کا واقع رونما ہونے کے بارے میں والدین کی جانب سے ایک رپورٹ درج کی گئی۔شکایت میں بتایا گیا کہ ہرن کے مقامی شہری کی 16 سالہ بیٹی(نام مخفی)کی اس کے ہمسائیگی میںرہائش پذیر محمد عاصف وانی ولد محمد مقبول ساکن نیو کالونی ہرن گاندربل نے مبینہ طور پر عصمت دری کی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے شک کی بنیاد پر سکنڈ ائر میں زیر تعلیم طالب علم محمد عاصف وانی ساکن ہرن کوجو کہ سکنڈ ایئر میں زیر تعلیم ہے کو گرفتار کرکے اس کی ابتدائی طبی جانچ کی۔انہوں نے کہا کہ لڑکی ک

ٹول ٹیکس معاملہ

 اننت ناگ//جنوبی کشمیر میں ٹول ٹیکس کے خلاف ٹرانسپورٹروںکی طرف مکمل ہڑتال کے بیچ احتجاجی ریلی نکالی گئی اور گورنر انتظامیہ سے اپیل کی  گئی کہ وہ اس فیصلے پر نظر ثانی کرے۔جنوبی کشمیر میںہڑتال کی کال سومو،ٹیکسی،منی و دیگر ٹرانسپورٹ انجمنوںنے مشترکہ طور دی تھی۔اس دوران ضلع اننت ناگ اور کولگام میں ٹرانسپورٹ غائب رہا جس کی وجہ سے مسافروں کو سخت مشکلات کا سامنا کر نا پڑا ۔ٹرانسپورٹ انجمنوں کے نمائندوں نے مشترکہ طور پراحتجاجی ریلی نکالی اور فیصلے کیخلاف نعرے بازی کی۔اننت ناگ اور کولگام اضلاع میں ہر طرح کا پبلک ٹرانسپورٹ بند رہا۔ سومو سروس، آٹو، منی بس سروس، ٹرکیں اور برحی غاریاں بھی بند رہیں اور سڑکیں سنسان نظر آرہی تھیں۔نہ کہیں ملازمین پہنچ پائے اور نہ طلاب یا دیگر لوگ کہیں جاسکے۔ٹرانسپورٹ بند ہونے سے کاروبار بھی بہت متاثر رہا۔انجمنوں کا کہنا تھا کہ وہ ٹیکس کے خلاف نہیں ہیں تاہم