تازہ ترین

کورونا وائرس کی دہشت، 21روز تک ملک گیر لاک ڈائون کا اعلان

چاہئے کچھ بھی ہو گھر سے نہ نکلیں، وائرس کی زنجیر نہ توڑی تو 21سال پیچھے چلے جائیں گے: مودی

25 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 نئی دلی // بھارت میں کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کی خاطر وزیراعظم نریندر مودی نے منگل شام دیر گئے 21دن تک ’لاک ڈائون‘  بڑھانے کاا علان کرتے ہوئے کہاکہ وائرس کی زنجیر نہ توڑی تو بھارت 21 سال پیچھے چلا جائیگا،انہوں نے ملک کے عوام سے اپیل کی کہ چاہے کچھ بھی ہو گھر سے باہر نہ نکلیں۔رات کے 8بجے قوم کے نام سرکاری ٹیلی ویژن پر تقریر کرتے ہوئے انہوں نے ہاتھ جوڑ کر لوگوں سے کہا’’ متعلقہ حکام کی جانب سے دی جانی والی ہدایت پر عمل کریں‘‘ ۔واضح رہے کہ ملک میں کرونا وائرس کے متاثرین کی تعداد ہر گذرتے دن کیساتھ بڑھ رہی ہے اور منگل شام تک یہ تعداد 521تک پہنچ چکی تھی ۔ اس دوران 9لوگوں کی موت بھی واقع ہوئی ہے۔بھارت کی سبھی ریاستیں اسکی لپیٹ میں آچکی ہیں جبکہ پوری دنیا میں ہلاکتوں کی تعداد 14ہزار تک پہنچ گئی ہے۔اپنی تشریاتی خطاب میں وزیر اعظم نے کہا ’’اگر ہم ملکی سطح پر 21دن تک لاک ڈائون نہیں کریں گے، تو ہم 21سال پیچھے چلے جائیں گے۔‘‘
انہوں نے کہا ’’ بھارت بھر کے لوگوں نے 22مارچ کے جنتا کرفیو کو کامیاب بناکر سنجیدہ قوم ہونے کا ثبوت دیا ہے ‘‘۔انہوں نے کہا ’’ اس وائرس نے بہت ہی طاقت ور ممالک کو بھی بے یار ومدد گار بنا کر رکھ دیا ہے، ہمارے لئے چیلنجز بڑھ رہے ہیں ‘‘۔ نریندر مودی نے عوام سے کہا ’’ معالجین کہتے ہیںکہ سماجی سطح پر دوری ہی واحد حل ہے، ملک کے ہر ایک شہری کو ایک دوسرے سے چند گز کی دوری رکھنی چاہئے ، اگر ہم ایک دوسرے سے دوری رکھنے میں ناکام ہوئے اور اگر کرونا وائرس کی منتقلی کی زنجیر نہ توڑی گئی تو بھارت کو اس کی بھاری قیمت چکانی پڑے گی ‘‘۔ انہوں نے لوگوں سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا ’’ آج رات سے بھارت بھر میں مکمل لاک ڈائو ن کیا جائے ، لاک ڈائون جنتا کرفیو سے زیادہ سخت ہو گا‘‘۔وزیر اعظم نے کہا ’’ ہمیں لاک ڈائون سے بھاری نقصان کا سامنا کرنا پڑے گا، لیکن لوگوں کی زندگیوں کو بچانے کیلئے اس کی سخت ضرورت ہے ‘‘۔انہوں نے اعلان کرتے ہوئے کہا ’’ بھارت بھرکو آج رات سے 21دن تک مکمل طور بند رکھا جائے‘‘ ۔ وزیر اعظم نے ایک پوسٹر اٹھا کر لہرتے ہوئے کہا’’ لاک ڈائون کا مطلب یہ ہے کہ کوئی سڑک پر نہ نکلے‘‘ ۔انہوں نے کہا’’ یہ وقت صبر اور تحمل کا ہے ،میں آپ سے ہاتھ جوڑ کر کہتا ہوں کہ اپنی زندگیوں کو خطرے میں نہ ڈالیں بلکہ اپنی زندگیوں کی حفاظت کریں ‘‘۔انہوں نے وعدہ کیا کہ مرکزی اور ریاستی سرکاریں لوگوں تک تمام ضروری اشیاء پہنچائیں گی۔
انہوں نے کہا کہ مرکزی سرکار نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے محکمہ صحت کیلئے پہلے ہی  15,000کروڑ روپے مختص رکھے ہیں۔ انہوں نے تمام ریاستوں کے حکام سے اپیل کی کہ وہ ایسے حالات میں سب سے پہلے ہیلتھ شعبہ پر اپنی توجہ مبذول کریں۔ مودی نے لوگوں سے کہا ’’آپ افوہ بازی پر عمل نہ کریں اور بغیر ڈاکٹر کی صلاح کے کسی بھی قسم کی ادویات کا استعمال نہ کریں‘‘ ۔اپنی تقریر میں انہوں نے کہا ’’ مجھے اس بات کا پورا یقین ہے کہ ہم اس چیلنج سے سرخ رو ہو جائیں گے ‘‘۔انہوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ اپنا اور اپنے کنبے کا خیال رکھیں’’ چاہئے کچھ بھی ہو، ایک قدم بھی گھر سے باہر نہ نکالیں‘ ‘۔