تازہ ترین

سارک کانفرنس میں مسئلہ کشمیر کاتذکرہ

سیاسی رنگ دینے کی کوشش گمراہ کن :پاکستان

21 مارچ 2020 (00 : 12 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
اسلام آباد//پاکستان نے کروناوائرس کی عالمی وباء پر سارک ممالک کی ویڈیو کانفرنس کے دوران مسئلہ کشمیر اُٹھانے کا دفاع کرتے ہوئے بھارت کے اِ س دعویٰ ،کہ اسلام آبادنے اِس انسانی مسئلہ کوسیاسی رنگت دینے کی کوشش کی ،کو ’’گمراہ کن‘‘قراردیا۔پاکستان کے وزیرمملکت برائے صحت ظفرمرزا نے ایک کانفرنس کے دوران اتوار کو کشمیرمیں تمام ’’پابندیوں ‘‘کوفوری طور ہٹانے کا مطالبہ کیاتاکہ وائرس سے بچائو کے اقدامات کئے جائیں۔بھارت کے دعویٰ پراپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے پاکستان کے دفترخارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ مرزا نے کروناوائرس کے پیش نظر کشمیرمیں صحت ایمرجنسی کی طرف توجہ دلائی اورمواصلات پر عائد بندشیں ہٹانے اورمیڈیکل سپلائی تک رسائی کو ممکن بنانے کی ضرورت اُجاگر کی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے ہی اس کیخلاف آوازبلند نہیں کی ،بلکہ کشمیر ،بھارت اور دنیا بھرمیں اس کی گونج سنائی دیتی ہے ۔دفترخارجہ نے انسانی مسئلہ کو سیاسی رنگت دینے کے بھارت کے دعوے کوگمراہ کن اوربے بنیادقراردیا۔دفترخارجہ نے کہا کہ پاکستان کی ویڈیوکانفرنس میں شمولیت سارک ممبران کے ساتھ یکجہتی اورجنوبی ایشیائی علاقائی تعاون تنظیم سے وابستگی کاعکاس ہے۔دفترخارجہ نے کہا کہ جنوبی ایشیاء کے لوگ اس بات سے بخوبی واقف ہیں،کہ سارک تنظیم کو کون ’سیاسی‘ مقاصد کیلئے استعمال کرتا ہے اور اس کے آگے بڑھنے میں رکاوٹیں کھڑی کرتا ہیں ۔انہوں نے مزیدکہا کہ پاکستان کاماننا ہے کہ جنوب ایشیاء کے ممالک کے مشترکہ مشکلات سے نبردآزما ہونے کو کسی کے پرپیگنڈے کاشکارنہیں ہونے دینا چاہیے۔