تازہ ترین

سائیبر جرائم سے متعلق جدید جانکاری کی فراہمی

کورٹ کمپلیکس مومن آباد میں 2 روزہ تربیتی پروگرام کا آغاز

4 اگست 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر//ماہرین قانون کو سائیبر قوانین ، اس کے تکنیکی پہلوؤں اور سائیبر جرائم سے متعلق جدید جانکاری فراہم کرنے کیلئے سٹیٹ جوڈیشل اکیڈمی کی جانب سے ڈسٹرکٹ کورٹ کمپلیکس مومن آباد سرینگر میں دو روزہ تربیتی پروگرام کا آغاز ہوا ۔ پروگرام کا افتتاح جسٹس علی محمد ماگرے نے کیا ۔ اپنے افتتاحی خطبے میں جسٹس ماگرے نے کہا کہ ہم عنقریب ایک الگ دُنیا میں داخل ہو رہے ہیں جہاں سائیبر ٹیکنالوجی کا دبدبہ ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں نے اس حقیقت میں زندگی گذارنا شروع کیا ہے اور اس سے سائیبر سیکورٹی کی اہمیت واضح ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کے دو پہلو ہیں جو بچاؤ اور تحقیقات پر مشتمل ہیں جسٹس ماگرے نے مزید کہا کہ سائیبر کرایم کی نشاندہی کرنا قدرے مشکل ہے اور اس سلسلے میں متعلقین کو تربیت فراہم کرنا لازمی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلی دو دہائیوں سے سمارٹ فونز اور انٹر نیٹ کا استعمال بڑے پیمانے پر ہو رہا ہے اور ان آلات میں ذاتی انفارمیشن رہ سکتی ہے جسٹس ماگرے نے کہا کہ خراب ذہنیت کے لوگ اس کا منفی استعمال کر سکتے ہیں ۔ تربیتی پروگرام میں ڈسٹرکٹ جج صاحبان ، سب ججوں ، منصفوں ، تحقیقاتی افسروں ، اے سی بی کے افسروں ، ماہرین قوانین اور دیگر کئی متعلقین نے شرکت کی ۔ سائیبر قانون اور سائیبر سیکورٹی کے ماہرین سندیپ مڈلوکر اور یوگیش پنڈت نے پروگرام کے شرکاء کو ضروری تربیت فراہم کی ۔ پروگرام کے مختلف تکنیکی سیشنوں کے دوران ماہرین مضمون نے سائیبر ٹیکنالوجی اور سائیبر جرایم اور سائیبر قانون کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی ۔ انہوں نے تربیت کے دوران کچھ عملی مثالیں بھی پیش کیں ۔ تکنیکی نشستیں پروگرام کے دوسرے روز بھی جاری رہیں گی ۔ جے اینڈ کے سٹیٹ جوڈیشل اکیڈمی کے ڈائریکٹر راجیو گپتا نے تربیتی پروگرام منعقد کرنے کے اغراض و مقاصد بیان کئے ۔