تازہ ترین

مزید خبریں

2 اگست 2019 (00 : 12 AM)   
(      )

نیو ڈسک

فوجی سربراہ اور اُترپردیش کے وزیر گورنر سے ملاقی 

جنگجو مخالف آپریشن انجام دینے کی ستائش کی

سرینگر//فوج کے سربراہ جنرل بپن راوت نے یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک سے ملاقات کی ۔ اُن کے ہمراہ لفٹینٹ جنرل رنبیر سنگھ آرمی کمانڈر ناردرن کمانڈ اور لفٹینٹ جنرل کے جے ایس ڈھلون جی او ایس 15 کارپس بھی تھے ۔ گورنر اور فوج کے سربراہ نے حالیہ امر ناتھ جی یاترا کے دوران ریاست میں سلامتی انتظامیہ اور اندرونی سلامتی سے متعلق فوج کی طرف سے کئے گئے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا ۔ گورنر نے جنرل راوت اور اُن کے عملے کی طرف سے سرحدوں پر نگاہ رکھنے اور ریاستی پولیس و سنٹرل آرمڈ پولیس فورسز کے اشتراک سے جنگجو مخالف آپریشن کامیابی کے ساتھ انجام دینے کی ستایش کی ۔ ادھراُتر پردیش کے وزیر مملکت برائے محنت و روز گار سنیل برالہ نے راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک سے ملاقات کی ۔ گورنر اور برالہ نے دونوں ریاستوں کی حکومتوں کی طرف سے اقتصادی ترقی ، سماجی انصاف ، صنعت و حرفت اور مزدوروں کی بہبودی سے متعلق اٹھائے جا رہے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا ۔ انہوں نے مرکزی حکومت کی طرف سے متعلقہ سیکٹر کی پیش رفت اور دونوں ریاستوں میں روز گار فراہم کرنے کے پروگراموں کے بارے میں بھی غور و خوض کیا ۔
 
 
 

بھاجپا ریاست میں اپنے بل پر حکومت بنائیگی:کھنہ 

جموں //بھارتیہ جنتاپارٹی کے قومی نائب صدر اویناش رائے کھنہ نے کہاہے کہ پارٹی ریاست میں آئندہ حکومت اپنے بل بوتے پر بنائے گی ۔گزشتہ روز ہی بھاجپا نے کھنہ کو ریاست میں اسمبلی الیکشن کا انچارج مقرر کیاہے ۔اگرچہ ابھی تک انتخابات کیلئے تاریخوں کا اعلان نہیںہوا لیکن بھاجپا کی طرف سے ممبر شپ مہم زوروں سے چلائی جارہی ہے۔ کھنہ کاکہناتھا’’پارٹی جموں وکشمیر میں آئندہ حکومت اپنے بل بوتے پر تشکیل دے گی اور یہاں اس کے ساتھ ہی امن ، ترقی اور خوشحالی کا دورہ شروع ہوگا‘‘۔انہوں نے کہاکہ ریاستی اسمبلی کے چنائو میں بھاجپا زبردست کامیابی حاصل کرے گی اور اپنے بل بوتے پر حکومت قائم کرکے ایک نئے باب کا اضافہ کرے گی ۔کھنہ نے کہا’’جموں ، لداخ اور کشمیر کے لوگ بھاجپا پر اعتماد کرتے ہیں اور ان کی پہلی پسند یہی پارٹی ہے جس کا مظاہرہ حالیہ پارلیمانی چنائو کے دوران بھی کیاگیا جب پارٹی کو سب سے زیادہ ریکارڈ ووٹ ملے ‘‘۔انہو ں نے کہاکہ بی جے پی نے پی ڈی پی کے ساتھ نظریاتی اور اہم معاملات پر سمجھوتہ کئے گئے بغیرصرف اور صرف ترقیاتی مقاصد کیلئے اتحاد کیا ۔ان کاکہناتھاکہ پارٹی کو 25اسمبلی نشستوں پر کامیابی ملی تھی اور لوگوں کی توقعات پر پورا اترنے کی بھرپور کوششیں کی گئیں ۔انہوں نے کہاکہ آج ریاست میں سیاسی صورتحال بھاجپا کیلئے زیادہ موافق ہے اور لوگوں نے کانگریس اور مقامی جماعتوں کا اصل چہرہ دیکھ لیاہے جنہوں ننے ہمیشہ عوام کے جذبات کے ساتھ کھلواڑ کیا ۔انہوں نے کہاکہ بھاجپا جمہوری اقدار کی مضبوطی کیلئے سنجیدہ ہے جبکہ ان جماعتوں نے پنچایتی اور بلدیاتی چنائو میں بائیکاٹ کرکے زمینی سطح پر جمہوری اداروں کی مضبوطی کے منافی کام کیا۔کھنہ نے کہاکہ پارٹی کی طرف سے جموں اور لداخ کے ساتھ امتیاز ختم کرنے کی کوشش کی گئی اور مرکزی حکومت نے ریاست کیلئے ریکارڈ فلاحی سکیمیں اور پروجیکٹ منظور کئے ۔
 
 
 

 جموں کشمیر میں اُمید سکیم کی عمل آوری 

مرکزی جوائنٹ سیکرٹری نے جائیزہ لیا 

سرینگر//محکمہ دیہی ترقی کی مرکزی وزارت کی جوائینٹ سیکرٹری نیتا کیجروال نے یہاں ایک میٹنگ کے دوران ریاست جموں و کشمیر میں سٹیٹ رورل لائیولی ہُڈ مشن کے تحت اُمید سکیم کی عمل آوری کا جائیزہ لیا ۔ میٹنگ میں ایس آر ایل ایم کے سٹیٹ مشن ڈائریکٹر عبدالرشید وار اور جموں و کشمیر کے ایڈیشنل مشن ڈائریکٹروں کے علاوہ دیگر افسران موجود تھے ۔ اپنے افتتاحی خطبے میں جوائینٹ سیکرٹری نے سیلف ہیلپ گروپوں ، دیہی اداروں اور دیگر انجمنوں کو تشکیل دینے کیلئے ایس آر ایل ایم کی کارکردگی کی سراہنا کی ۔ اس سے قبل ایس آر ایل ایم کے مشن ڈائریکٹر نے ایک پاور پوائینٹ پرذنٹیشن کے ذریعے ریاست جموں و کشمیر میں اُمید سکیم کی عمل آوری کے بارے میں مکمل تفصیلات دیں ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں 40082 سیلف ہیلپ گروپ ، 3642 دیہی ادارے اور 250 کلسٹر فیڈریشن قایم کئے گئے ہیں اور سیلف ہیلپ گروپوں میں مالی سال 2018-19 کے دوران ایس آر ایل ایم کے تحت 149.68 کروڑ روپے تقسیم کئے گئے ہیں ۔ ڈائریکٹر موصوف نے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ جے کے ایس آر ایل ایم نے آئی آئی ایم کے اشتراک سے  مختلف اضلاع میں مجموعی طور 246 کنال اراضی پرایرو میٹک پلانٹیشن پلانٹ قایم کئے ہیں اور اب تک 211750 پودے لگائے جا چکے ہیں ۔ جوائینٹ سیکرٹری نے زیادہ سے زیادہ میڈیسنل پودوں کو لگانے پر زور دیا ۔ انہوں نے متعلقہ افسروں سے تلقین کی کہ وہ لگن اور تندہی کے ساتھ کام کریں ۔ نیتا کیجری وال نے پروگرام کو ہر سطح پر کامیاب بنانے کیلئے مزید کوششیں بروئے کار لانے پر زور دیا تا کہ سماج کے پچھڑے طبقوں سے تعلق رکھنے والے لوگ مستفید ہوں ۔ 
 
 
 

دفعہ35اےکا تحفظ ترجیح | عوامی مزاحمت کے ساتھ رہیں گے : حکیم 

سرینگر//پیوپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم یاسین نے کہاہے کہ انکی تنظیم دفعہ 35-اے اور دفعہ 370، جو ریاست جموں و کشمیر کو خصوصی پوزیشن کی ضمانت ہیں، کے ساتھ کسی بھی قسم کی چھیڑ چھاڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ انھوں نے مرکزی حکومت کو خبر دار کیا کہ دفعہ35-اے اور دفعہ370 کے ساتھ کسی بھی قسم کی چھیڑ چھاڑکے بھیانک نتائج برآمد ہونگے جو ملک کے لئے سطح نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں۔ حکیم یاسین نے جموں بار سے وابستہ ان وکلاء اور سول سوسائٹی ممبران کی ستائش کی جنہوں نے متحد ہوکر دفعہ 35-اے کے تحفظ کے حق میں آواز اٹھائی . انھوں نے کہا کہ دفعہ 35-اے ریاست کے تینوں خطوط- کشمیر، جموں اور کشمیر کے لوگوں کے مفادات کی ضامن ہے اور اس دفعہ کے جانے سے ریاست کی انفرادیت اور ساخت کو دھچکا لگے گا۔ حکیم یاسین نے کہا کہ مہاراجہ ہری سنگھ نے بڑی محنت اور جدوجہد سے دانستہ طور مذکورہ دفعات کو آئین میں شامل کرایا ھے تاکہ ہندوستان کے ساتھ رہتے ہوئے ریاست کے عام لوگوں کے مفادات کا تحفظ یقینی بنایا جا سکے۔ انھوں نے کہا کہ بد قسمتی سے کچھ لوگ ان دفعات کو علاقائی اور مذہبی رنگ دیکر لوگوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رھے ہیں تاھم یہ امر حوصلہ افزا ہے کہ جموں کے دانشور اور وکلاء کمیونٹی نے ریاست کے لوگوں کے مفادات کے لئے دفعہ 35-اے کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے اس کی حفاظت لئے اپنی آواز اٹھائی ۔ پی ڈی ایف چیئرمین نے ریاست کی ان سیاسی جماعتوں کی سخت الفاظ میں تنقید کی جو ایک طرف دفعہ 35-اے کے حق میں کل جماعتی اجلاس منعقد کرانے کے بلند بانگ دعوے کرتے ہیں تو دوسری طرف مرکز کی خوشنودی حاصل کرنے کیلئے پارلیمنٹ میں بلواسطہ یا بلاواسطہ انکی عوام کش پالیسیوں کی حمایت کرتی ہیں۔ حکیم یاسین نے کہا کہ ریاستی عوام سیاسی طور کافی بیدارہیں اور انکو اب دوغلی سیاسی حربے استعمال کرنے سے دھوکا نہیں دیا جا سکتا ۔ انھوں نے کہا کہ ایسی سیاسی جماعتیں اب عوام کے سامنے ننگی ھو چکی ھیں 
 
 
 
 

۔35-اے | جموں و کشمیر کے باشندوں پر لٹکی تلوار:بھیم سنگھ

سرینگر//نیشنل پینتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا ہے کہ 35-اے کو ہٹانے کاہندستان کے صدر رام ناتھ کو پورااختیار حاصل ہے۔ 35-اے کو صدر کے حکم کے تحت ہندستان کے آئین میں شامل کر دیا گیا، جو مئی 1954 میں ختم ہو گیا ہے، کیونکہ صدر کے آرڈیننس کی قانونی حیثیت صرف 6 ماہ تک ہوتی ہے۔پینتھرس سربراہ پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا کہ 35-اے جموں و کشمیر کے باشندوں کے سر پر 1954 سے لٹکی ایک خطرے کی تلوار کی طرح ہے، جو ریاست کے باشندوں کے لئے ہندستان کے آئین میں موجود بنیادی حقوق پر روک لگاتی ہے۔انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ صدر صرف ایک دوسرا حکم جاری کرکے آرٹیکل 35-اے کو ہٹا سکتے ہیں۔انہوں نے افسوس کے ساتھ کہا کہ حکمران اور اپوزیشن پارٹی خاص طور پر کشمیر میں 35-A اور آرٹیکل 370 کے مسائل کا استحصال کر رہے ہیں، جو کہ آئین میں ایک عارضی شق تھی، جسے بہت پہلے سے نکال دینا چاہئے تھا۔ انہوں نے بی جے پی، کانگریس، این سی، پی ڈی پی وغیرہ پر صرف ووٹ کی سیاست کرکے معصوم عوام کے ذہن میں الجھن پیدا کرنے کا الزام لگایا۔
 
 
 

سنگرامہ کے سابق ممبر اسمبلی کیخلاف جعلسازی کا مقدمہ درج

سرینگر//کرائم برانچ نے سابق ممبر اسمبلی سنگرامہ اور کانگریس کے ضلع صدر بارہمولہ شعیب نبی لون کے خلاف دھوکہ دہی اور مجرما نہ سازش رچانے کی پاداش میں ان کے خلاف کیس درج کیا ہے۔  رشوت اوربدعنوانی کے خلاف اپنی کاروائی جاری رکھتے ہوئے  ریاستی کرائم برانچ نے سابق ممبر اسمبلی سنگرامہ اور کانگریس کے ضلع صدر بار ہ مولہ شعیب نبی لون کے خلاف 420اور120 بی آ ر پی سی کے تحت کیس درج کر لیا ہے۔ یہ کیس دراصل سی ایس صالحین کمپنی کے سکریٹر ی اور شعیب لون کے خلاف مبینہ طور ہرمیت سنگھ نا می ایک شئیر ہولڈر کو فراڈ طریقے سے 65 ہزار کے شئیر ٹرانسفر کرنے کے الزام میں درج کیا گیا۔ ہرمیت سنگھ سی اے کولڈ اسٹو ر میسر ا لپائن فرش پرائیویٹ لیمٹید نامی فرم کے شیر ہولڈر تھے جس کے دوسر ے مالک شعیب لون اور اس کے ساتھی بھی بتائے گئے ہیں۔ ابتدائی تحقیقات کے دوران شعیب لون اور سی ایس صالحین کو ملزم پا یاگیا جس کے بعد ملزم کے خلاف ایف آ ئی آر زیر نمبر 39 / 2019 پولیس اسٹیشن کرائم برانچ جموں میں در ج کیا گیا ۔ اس ضمن میں مزید تحقیقات جاری ہے۔
 
 
 

آخر دلی کی منشا کیا ہے؟

وزیراعظم کے مؤقف کو عوام کے سامنے لایا جائے

انجینئر رشید کی عمر عبداللہ سے اپیل

سرینگر//اے آئی پی سربراہ انجینئر رشید نے این سی کے ممبران پارلیمنٹ کی طرف سے وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ ملاقات پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ این سی پر لازم ہے کہ وہ دفعہ370اور 35-Aکے متعلق جاری افواہ بازیوں کے متعلق وزیر اعظم کے موقف اور رد عمل کے بارے میں عوام کو آگاہ کرے ۔ اپنے ایک بیان میں انجینئر رشید نے کہا ’’یہ بات حیران کُن ہے کہ این سی کے وفد میں تین میں سے دو ہی ممبران پارلیمنٹ وزیر اعظم سے ملے جبکہ محمد اکبر لون اس وفد کا حصہ نہیں بنے ۔ عمر عبداللہ صاحب کو یہ بات ذہن میں رکھنی چاہئے کہ جب پیوپلز یونائٹڈ فرنٹ اور دیگر لوگوں نے این سی سے کُل جماعتی میٹنگ بلانے کی گذارش کی تو انہوں نے یہ اعتراض پیش کیا کہ پہلے مرکزی سرکار کا موقف جاننا بے حد ضروری ہے اور اب جبکہ عمر عبداللہ خود بھی اس وفد میں شامل تھے تو ان پر ہر اعتبار سے لازم ہے کہ وہ لوگوں کو یہ بات بتا دیں کہ آخر وزیر اعظم نریندر مودی کا 35-A، 370اور حد بندی کے متعلق موقف کیا تھا ۔ وزیر اعظم سے ملنااچھی بات ہے لیکن ابھی تک عمر عبداللہ صاحب صرف یہ بتا رہے ہیں کہ انہوں نے وزیر اعظم سے کیا کہا جبکہ بد قسمتی کی بات یہ ہے کہ عمر عبداللہ صاحب یہ نہیں بتا رہے ہیں کہ وزیر اعظم نے جواب میں انہیں کیا کہا یا کیا یقین دہانیاں دیں۔ عوام کے ساتھ ساتھ سیاسی جماعتیں بھی اس بات کا حق رکھتی ہیں کہ انہیں پتہ چلے کہ آخر وزیر اعظم کا منشاٰ کیا ہے‘‘۔ انجینئر رشید نے کہا کہ جس قدر جلدی ہو این سی کو فوراً لوگوں کو اصل صورتحال سے خبردار کرنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات اگر چہ افسوسناک ہے کہ این سی نے تمام دیگر جماعتوں کو اعتماد میں لینے کے بجائے انفرادی طور وزیر اعظم سے ملنے کو ترجیح دی لیکن یہ بات لازمی ہے کہ وسیع تر قومی مفاد کے پیش نظر عمر عبداللہ کل جماعتی میٹنگ کیلئے اُن کی طرف سے مقرر کردہ شرط کی روشنی میں عوام کو یہ بتا دیں کہ آخر دلی کے ارادے کیا ہیں تاکہ ایک متفقہ اور جامع حکمت عملی تیار کی جا سکے ۔ 
 
 

صوبائی کمشنر کی ہدایات پر آبپاشی و فلڈ کنٹرول محکمہ نے دریائے جہلم پر 49بیٹ تشکیل دئیے 

  سری نگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان کی ہدایت پر آبپاشی و فلڈ کنٹرول محکمہ نے پلوامہ اور سری نگر اَضلاع سے ہوتے ہوئے اننت ناگ سے بانڈی پورہ تک دریائے جہلم کے 49بیٹ تشکیل دئیے ہیں تاکہ محکمہ کے اہلکار سیلابی صورت حال پر دِن رات نگاہ رکھ سکیں۔اِس سلسلے میں آبپاشی و فلڈ کنٹرول محکمہ نے 14سیکٹروں میں پانچ فلڈ زونل کمیٹیاں تشکیل دی ہیں۔فلڈ زونل کمیٹیاں ڈسٹرکٹ پولیس لائنز اننت ناگ ، پولیس سٹیشن اونتی پورہ ، لِفٹ سٹیشن کاکا پورہ ، پولیس کنٹرول روم سری نگر اور آبپاشی و فلڈ کنٹرول ڈویژن سمبل میں قائم کئے گئے ہیں۔تمام جہلم بیٹ اَفسروں نے اپنی رِپورٹ فلڈ زونل کمیٹیوں کو بھیجی ہیں ۔یہ رِپورٹ بعد میں ڈسٹرکٹ کاڈی نیشن کمیٹیوں کو بھیج دی گئیں جن کی سربراہی متعلقہ ڈپٹی کمشنر کر رہے ہیں،تاکہ ممکنہ سیلابی صورتحال سے نمٹنے کے لئے ایک مؤثر لائحہ عمل ترتیب دیا جاسکے۔
 
 
 
 
 

این آئی اے کی تحقیقاتی سرگرمیاں طفلانہ: خالدہ شاہ

پوچھ تاچھ کے پس پردہ انتقامی جذبہ کارفرماء

سرینگر// عوامی نیشنل کانفرنس کی صدر بیگم خالدہ شاہ نے کہا کہ قومی تحقیقاتی ایجنسی کی کشمیر میں سیاسی لیڈروں کی پوچھ تاچھ پرمبنی کارروائیاں طفلانہ طرز کی حرکتیں ہیں جو سمجھ سے بالاتر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ این آئی اے کی جانب سے تحقیقاتی سرگرمیوں کے پس پردہ ضرور کچھ چھپے عزائم کارفرما ہیں۔ بیگم خالدہ شاہ نے بتایا کہ کل ہی ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ اور نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی اچانک چندی گڑھ میں انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ محکمہ کی جانب سے جس معاملے کے بارے میں پوچھ گچھ کی گئی وہ کرکٹ ایسو سی ایشن کے رقومات سے متعلق ایک دیرینہ معاملہ ہے اور میں یہ بات واضح کرنا چاہتی ہوں کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے ہاتھ کسی بھی دھاندلی اور گھپلے بازی میں آج تک ملوث نہیں پائے گئے اور موصوف ہمیشہ کورپشن کیخلاف رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر لیڈروں کی دولت میں حیرت انگیز اضافہ کسی کو نظر آتا ہے تو اس کی تحقیقات کرنے میں کسی کو کوئی اعتراض نہیں لیکن تحقیقات کے پس پردہ انتقام گیری کا جذبہ کارفرما نہیں ہونا چاہیے۔ بیگم خالدہ شاہ نے مزید کہا کہ میں یہ بات واضح کرنا چاہتی ہوں کہ سبھی لیڈر بے ایمان نہیں ہیں اور لیڈروں کی اکثریت پر شک کرنا مناسب نہیں ۔ نیز کسی بھی لیڈر کی ناجائز دولت کی تحقیقات کیلئے قانون کے شائستہ طریقے موجود ہیں جس سے بلاوجہ کسی کی کردارکشی نہ ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ الزامات ثابت ہونے کے بعد ہی کسی کو زیر عتاب لایا جاسکتا ہے، بصورت دیگر کسی کے خلاف الزامات ثابت کئے بغیر اُس کی سماج میں بے عزتی کرنا بجائے خود جرم کاارتکاب ہے۔
 
 

بی ڈی او پلوامہ پر حملہ کا شاخسانہ | 11بلاکوں میں ملازمین کا احتجاج  

سرینگر//پلاک ڈیولپمنٹ آفس پلوامہ میں ایک ٹھیکیدار کے ہاتھوں متعلقہ آفیسر کی مارپیٹ اور دفتر میں توڑ پھوڑ کئے جانے کے واقعے کے خلاف ضلع بھر کے تمام بلاکوں میں ملازمین و افسران نے کام چھوڑ ہڑتال کی ۔کے این ایس کے مطابق  بلاک ڈیولپمنٹ افسر پلوامہ عابداقبال ملک( کے اے ایس ) کے دفتر میں ایک ٹھیکہ دارنے زبردستی داخل ہوکر توڑ پھوڑ شروع کی اور اسکے بعد متعلقہ بی ڈی او پر حملہ کیا ۔اس واقعے کیخلاف جمعرات کو ضلع پلوامہ کے11بلاک جن میں ترال،آری پل،پلوامہ،کاکا پورہ،پانپور،راجپورہ ،اونتی پورہ وغیرہ بلاکوں میں تعینات عملے نے واقعے کے خلاف سخت غم و غصے کا اظہار
 کرتے ہوئے کام چھوڑ ہڑتال کی۔ جس دوران اکثر مقامات پر ملازمین نے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڑ اٹھا کر مذکورہ ٹھیکہ دار کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔ احتجاج میں شامل ملازمین نے اسے حوالے سے ڈپٹی کمشنر اور ایڈشنل ڈپٹی کمشنر پلوامہ کو اس حوالے سے فوری مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے انہیں واقعے میں ملوث ٹھیکہ دار کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے ۔
سرکاری محکمہ جات کی ایڈوائزری تشویشناک
 
 
 

 سرکار کا تاخیر سے رد عمل حیران کن:سوشواکنامک کارڈی نیشنل کمیٹی

 سرینگر// تجارتی و صنعتی اتحاد سوشو اکنامک کارڈی نیشن کمیٹی نے سرکار ی محکموں کی طرف سے جاری ایڈوائزریوں سے غیر معمولی تشویش اور افواہ بازی کا ماحول پیدا کرنے پر برہمی کا اظہار کیا۔ بیان کے مطابق سوشو اکنامک کارڈی نیشن کمیٹی کی میٹنگ کے دوران ارکان نے اس بات پر حیرانگی کا اظہار کیا کہ ان اہم معاملات پر سرکار نے خاموشی کا اظہار کیا ہے،جس کے نتیجے میں افواہ بازی کا بازار بھی گرم ہوا۔انہوں نے ریاستی گورنر کی طرف سے ان معاملات میں تاخیر سے دئیے گئے بیان پر بھی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افواہ بازی اور قیاس آرائی کے ماحول کو ختم کرنے کیلئے سرکار نے خاموشی اختیار کی۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی گورنر نے وادی میں اضافی فورسز کی ضرورت پر بھی کوئی ردعمل پیش نہیں کیا۔ سوشو اکنامک کارڈی نیشن کمیٹی نے کہا کہ سرکاری محکموں کی طرف سے جاری تحریری ایڈوائزریوں کو زبانی طور پر غلط قرار دینے سے افواہ بازی پر قابو نہیں ہوگا،جبکہ اس کیلئے ذمہ دار افسران کے خلاف کاروائی نہ کرکے لوگوں کے خدشات میں اضافہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مرکز میں زیر اقتدار سیاسی جماعت کے بیانات سے ان افواہوں کو مزید تقویت ھاصل ہو رہی ہے۔ سوشو اکنامک کارڈی نیشن کمیٹی کے بیان میں کہا گیا کہ دنیا بھر میں کوئی بھی حکومت اپنی ہی شہریوں میں خوف و ہراس کا ماحول پیدا نہیں کر رہی ہے۔ انہوں نے تجارتی حلقوں  اور سیول سوسائٹی میں جامع اتحاد کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مشترکہ طور پر  ہی ان منصوبوں کو ناکام بنا دیا جاسکتا ہے،جو ریاستی عوام کے مفادات میں نہیں ہے۔
 
 
 
 
 

حکومت کھیل سرگرمیوں کوفروغ دینے کی وعدہ بند

وِجے کمار ، شرما اور سکند ن نے بانڈی پورہ سٹیڈیم میں فلڈ لائٹس کا افتتاح کیا

بانڈی پورہ //گورنر کے صلاح کاروں کے وِجے کمار ، کے کے شرما اور کے سکند ن نے مشترکہ طور شیر کشمیر سٹیڈیم بانڈی پورہ میں نصب کی گئی فلڈ لائیٹس کا افتتاح کیا۔ان فلڈ لائیٹس کو 75 لاکھ روپے کی لاگت سے نصب کیا گیا اور ان کی مدد سے اب اس سٹیڈیم میں رات کے دوران بھی کھیل مقابلے منعقد کئے جاسکیں گے۔مشیروں نے یہ سہولیت ملنے پر بانڈی پورہ کے عوام کو مبارک باد دی ۔ انہوں نے کہا کہ بانڈی پورہ کے لوگ ہمیشہ سے ہی کھیل کے شائقین رہے ہیں اور اس ضلع نے کئی کھلاڑی پیدا کئے ہیں۔مشیروں نے کھیلو انڈیا کے تحت سنتھٹک ایتھلیٹک ٹریک تعمیر کرنے کے سلسلے میں بھی سنگ بنیاد رکھا۔ کے وجے کمار نے کہا کہ بانڈی پور ہ کے نوجوانوں نے مختلف محاذوں پر اپنی صلاحیتوں کا بھرپور مظاہرہ کیا ہے ۔انہوںنے کہا کہ حکومت کھیل سرگرمیوں کو دیہات کی سطح پرفروغ دینے کی وعدہ بند ہے تاکہ نوجوان اپنی صلاحیتوں میں مزید نکھار لاسکیں۔اس موقعہ پر تینوں مشیروں نے سٹیڈیم میں موجود نوجوانوں کے ساتھ والی بال میچ کھیلا۔ مشیروں نے وہاں پہلے سے موجود کھلاڑیوں اور مختلف کلبوں کے ممبران کے ساتھ بات چیت کی۔مشیر وں نے ان کی نوٹس میں لائے گئے مسائل پر مناسب غور کا یقین دلایا۔مشیروں نے لانگر گنڈمیں کھیل کے میدان اور گنڈ پورہ میں دیہی ترقی محکمہ کی جانب سے کنورجنس سکیم کے تحت  17.50 لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر کئے گئے پنچایت گھر کا افتتاح کیا۔انہوں نے مختلف کرکٹ کلبوں کے ممبران نے کرکٹ کِٹ تقسیم کئے۔مشیروں نے کہا کہ محکمہ دیہی ترقی نے ضلع کی 151پنچایتوں میں 206کھیل کے میدان تعمیر کرنے کا کام دردست لیا ہے جس پر مجموعی طور8.23کروڑ روپے لاگت آنے کا اندازہ ہے اور ان میں سے اب تک 171کھیل کے میدان تیار کئے جاچکے ہیں۔اس موقعہ پر کمشنر سیکرٹری امور نوجوان و کھیل کود سرمد حفیظ ، ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ شہباز احمد مرزااور پولیس و سول انتظامیہ کے دیگر افسران موجود تھے۔
 
 
 
 

بڈگام میں 5نقب زن گرفتار، لاکھوں روپے کا مال مسروقہ برآمد

سرینگر// پولیس نے بڈگام ضلع میں چوری کی کئی وارداتیں حل کرکے 5نقب زنوں کو گرفتار کرکے ان کے قبضے سے لاکھوں روپئے کا مال مسروقہ برآمد کرلیا ۔ پولیس بیان کے مطابق بڈگام پولیس نے جمعرات کونقب زنوں کے ایک نیٹ ورک کا پردہ فاش کرتے ہوئے چوری کی 8وارداتوں میں ملوث 5افراد کی گرفتاری عمل میں لاکر ان کے قبضے سے لاکھوں روپے کا مال مسروقہ برآمد کرلیا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ کئی ہفتوں سے چاڈورہ پولیس کو گاڑیاں، موٹر سائیکلیں، موبائل فون اور دیگر قیمتی اشیاء چوری ہونے کے ضمن میں مسلسل شکایات موصول ہورہی تھیں جس کے بعد چاڈورہ تھانے میں معاملے کی نسبت کیس درج کرکے پوچھ تاچھ کا آغاز کیا گیا۔پولیس ترجمان کے مطابق ایس ڈی پی او چرار نے ایس ایچ او کی سربراہی میں خصوصی تحقیقاتی ٹیم کا قیام عمل میں لایا جنہوں نے پیشہ ورانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاکر5مشتبہ افراد کی گرفتاری عمل میں لاکر ان سے پوچھ تاچھ کا سلسلہ شروع کردیا۔ انہوں نے کہا کہ گرفتار شدگان میں شیراز احمد وانی ساکن چاڈورہ ، آزاد احمد وانی ساکن برنہ وار ، ساہل منظور ساکن چاڈورہ ، مشتاق احمد صوفی ساکن چاڈورہ اور عرفان شوکت ساکن واتھورہ شامل ہیں۔بیان کے مطابق پوچھ تاچھ کے دوران اس بات کا انکشاف ہوا کہ علاقے میں چوری کی مسلسل وارداتوں میں ان ہی افراد کا ہاتھ ہے۔ اس موقع پر پولیس کی خصوصی تحقیقاتی ٹیم نے گرفتار کئے گئے افراد کی نشاندہی پر لاکھوں روپے مالیت کا مال مسروقہ برآمد کیا گیا جس میں ماروتی کار، 5موٹر سائیکلیں ، کئی موبائل فون اور دوسرا ساز و سامان شامل ہے۔
 
 
 

طارق حسین گنائی نے ضلع ترقیاتی کمشنر بڈگام کا عہدہ سنبھالا 

سرینگر //طارق حسین گنائی نے بڈگام کے ضلع ترقیاتی کمشنر کا عہدہ سنبھالا ۔ اس موقعہ پر ضلع انتظامیہ کے افسروں نے اُن کا والہانہ استقبال کیا جبکہ ضلع کی سابق ترقیاتی کمشنر ڈاکٹر سید سحرش اصغر کے اعزاز میں شاندار الوداعیہ کا اہتمام کیا گیا ۔ ڈاکٹر سحرش اصغر نے اس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے اُن کے دورانیہ کے دوران افسروں اور دیگر عملے کے تعاون کی تعریف کی ۔ انہوں نے مختلف سطحوں پر اُن کے ساتھ کام کرنے والے افسروں کے کام کو اجاگر کیا ۔ طارق حسین گنائی نے ڈاکٹر سحرش کی بے لوث کاؤشوں کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ اُن کی بدولت ضلع میں ترقیاتی عمل کو دوام حاصل ہوا ۔ بعد میں طارق حسین گنائی نے ضلع افسروں کے ساتھ ایک میٹنگ کے دوران مختلف محکموں کے کام کاج کا جائیزہ لیا ۔ انہوں نے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ لوگوں کی راحت رسانی کر کے ایک عوام دوست رویہ اپنائیں تا کہ لوگوں کے مسائل کو حل کیا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ عوامی نوعیت کے کاموں میں کسی بھی تاخیر کو برداشت نہیں کیا جائے گا اور عوامی شکایات کا ترجیحی بنیادوں پر ازالہ کیا جانا چاہئیے ۔ ترقیاتی کمشنر نے سول انتظامیہ اور پولیس محکمہ کے مابین بہتر تال میل کی ضرورت پر زور دیا ۔ انہوں نے کہا کہ بہتر ورک کلچر سے مقررہ اہداف کو حاصل کیا جا سکے گا اور لوگوں کے مسائل حل بھی ہو سکیں گے ۔ 
 
 
 

ہندوارہ میں میڈیکل کالج کا قیام خوش آئند:چودھری رمضان

سرینگر//نیشنل کانفرنس نے ہندوارہ میں میڈیکل کالج کے قیام کی منظوری کا خیرمقدم کرتے ہوئے ریاستی گورنر اور میڈیکل کونسل آف انڈیا کا شکریہ ادا کیا ہے۔ پارٹی کے ریاستی سیکریٹری چودھری محمد رمضان نے ایک بیان میںکہا کہ میڈیکل کالج بننے کیلئے سب سے پہلی شرط ہسپتال کی صلاحیت 200بستروں کی ہونی چاہئے اورضلع ہسپتال ہندوارہ حکومت ہند اور ایم سی آئی کے 1999کے مقرر کردہ ضوابط اور معیار پر پورا اُترتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوارہ میں میڈیکل کالج کے قیام سے ضلع کپوارہ اور بارہمولہ کے بیشتر علاقے مستفید ہوسکتے  ہیں۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے اپیل کی کہ 200کنال اراضی کی منتقلی کے احکامات صادر کرکے میڈیکل کالج پر کام شروع کیا جائے۔ چودھری رمضان نے کہا کہ ہندوارہ میں ایک گرلز کالج کی اشد ضرورت ہے اوراس سلسلے میں سابق نیشنل کانفرنس حکومت نے 50کنال اراضی کی نشاندہی بھی کی تھی اور رقومات بھی واگذار کئے تھے لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا کر سابق حکومت نے اس کالج پر کام شروع نہیں کیا۔ 
 
 
 
 
 

لنگیٹ میں غیر قانونی عمارتی لکڑی ضبط

لنگیٹ//محکمہ جنگلات اور فارسٹ پروٹیکشن فورس نے شمالی کشمیرکے سنزی پورہ لنگیٹ میںمشترکہ کارروائی کے دوران غیر قانونی عمارتی لکڑی  ضبط کی۔ ادھر محکمہ کے ایک ذمہ دار نے بتایا کہ سمگلروں کو تلاش کرنے کے لئے بڑے پیمانے پر کاروائی جاری ہے ۔انہوں نے بتایا کہ غیر قانونی کام میں ملوث کسی بھی شخص کو نہیں بحشا جائے گا۔
 
 
 

محکمہ اطلاعات کی ملازمین یونین ڈائریکٹر انفارمیشن سے ملاقی 

سرینگر //محکمہ اطلاعات کے ملازمین کی یونین کے ایک وفد نے ڈائریکٹر انفارمیشن ڈاکٹر سید سحرش اصغر کا دفتر میں استقبال کیا ۔ موصوفہ نے یونین کے ممبران سے بات چیت کے دوران انہیں مکمل تعاون کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ وہ ملازمین کے مسائل سُننے کیلئے ہر وقت دستیاب رہیں گی ۔ ملازمین یونین کے صدر شبیر احمد ، جنرل سیکریٹری عبدالرشید وانی ، سیکریٹری حمید اللہ ، پبلسٹی سیکرٹری گگن جموال اور خزانچی لطیف احمد نے ڈائریکٹر کا استقبال کیا ۔ ملازمین یونین نے ڈائریکٹر استقبال کرتے ہوئے ملازمین کی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایا اور کہا کہ وہ محکمہ کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کیلئے لگن اور تندہی کے ساتھ کام کرتے رہیں گے ۔ 
 
 
 

اسلامک پولٹیکل پارٹی حریت کی بنیادی رکنیت سے خارج

سرینگر//حریت(گ)نے اسلامک پولٹیکل پارٹی کو فورم کی بنیادی رکنیت سے خارج کردیا ہے۔موصولہ بیان کے مطابق چند روز قبل حریت کا ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں فورم کی ایک اکائی اسلامک پولیٹکل پارٹی سے متعلق شکایات کو زیرِ بحث لایا گیا۔ اجلاس میں تمام شواہد، رپورٹوں اور چند حریت اکائیوں کے سربراہوں کی گواہی کی روشنی میں اس پارٹی کو حریت کی بنیادی رُکنیت سے خارج کر دیا گیا، جس کی اطلاع اسلامک پولیٹکل پارٹی کے سربراہ کو تحریراً دی گئی۔ 
 
 
 

جسمانی طور خاص افراد سراپا احتجاج

 سرینگر//جموں کشمیر ہینڈ ی کیپڈ ایسوسی ایشن نے کہاہے کہ اگر 20 اگست تک ان کے مطالبات کو حل نہیں کیا گیا تو وہ پریس کالونی سے راج کی طرف مارچ کریں گے اورتمام ضلع صدر مقامات سے احتجاجی ریلیاں نکالی جائیں گی۔ ایسوسی ایشن کے بیان کے مطابق ایسوسی ایشن کے ریاستی صدر عبدالرشید بٹ کی ہدایت پر اننت ناگ میں ایک احتجاجی ریلی برآمد ہوئی ۔ بٹ نے کہا کہ محکمہ سماجی بہبودنے انہیں نظر انداز کردیا ہے۔
 
 
 
 

آنگن واڑی ورکروں کاوفدمیر سے ملاقی

رکی پڑی تنخواہیں واگزار کرنے کا مطالبہ

سرینگر//ریاستی کانگریس کے صدر غلام احمد میر گورنر انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ عید الاضحی سے قبل آنگن واڑی ورکروں اورکیجول ملازمین کے تنخواہیں واگذارکرنے کیساتھ ساتھ ان کے جائز مانگوں کو پورا کیا جائے۔ کے این ایس کے مطابق پردیش کانگریس صدر غلام احمد میر نے گورنر ستیہ پال ملک کی قیادت والی انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ عید الاضحی سے قبل آنگن واڑی ورکروں اور کیجول ملازمین کی تنخواہیں واگزار کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی دیرینہ مانگوں کو بھی پورا کیا جائے۔انہوں نے گورنر سے مطالبہ کیا کہ آنگن واڑی ورکراور دیگرکیجول ملازمین کئی برسوں سے جائز مطالبات کو پورا کرنے کیلئے احتجاج کررہے ہیں لہٰذا عید سے قبل ان کی تمام جائز مانگوں کو پورا کیا جائے۔کانگریس صدر کے ساتھ جمعرات کو آنگن واڑی ورکروں کا ایک وفد ملاقی ہوا جنہوں نے کئی مہینوں سے رکی پڑی تنخواہوں کو واگذار کرانے کیلئے کانگریس صدر کی توجہ اس جانب مبذول کرائی۔اس موقع پر غلام احمد میر نے تشویش کا اظہار کیااورگورنر ستیہ پال ملک پر زوردیا کہ وہ عید سے قبل آنگن واڑی ورکروں اورکیجول ملازمین کی مہینوں سے بند پڑی تنخواہوں کو واگذار کریں۔