تازہ ترین

منشیات کے پھیلائو کا خاتمہ وقت کی اہم ضرورت

پریس کالونی میں احتجاج،سمگلروں کے خلاف کارروائی کی مانگ

19 جولائی 2019 (28 : 11 PM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر//منشیات کے پھیلائو کے خلاف غیر سرکاری انجمن نے سرینگر میں احتجاج کرتے ہوئے والدین کو مشورہ دیا کہ وہ اپنی اور بچوں کے درمیان خلیج کو ختم کرتے ہوئے گھر میں ہی انہیں اس زہر سے باز رہنے کیلئے مائل کریں۔پریس کالونی میں جمعہ کو غیر سرکاری رضاکار انجمن’’ کشمیر یوتھ پاور‘‘ سے وابستہ رضاکاروں نے وادی میں منشیات کی تباہ کاریوں کو اجاگر کرنے کیلئے پرامن احتجاج کیا۔احتجاج کا مقصد نوجوانوں کی طرف سے منشیات کے استعمال میں اضافے سے قیمتی جانوں کے زیاں ہونے سے بیدار کرنا تھا۔ احتجاجی نوجوانوں میں شامل مد ثر عزیز نامی ایک نوجوان نے کہا’’ ہم تمام والدین سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ خود اور اپنے بچوں کے درمیان خلیج کو ختم کریں،اور اپنے بچوں کی گھروں میں ہی کونسلنگ کریں،کیونکہ والدین کے بغیر اپنے بچوں کی کونسلنگ کوئی بھی شخص بہترین انداز سے نہیں کرسکتا۔‘‘ انہوں نے منشیات کی وبائو میں پھیلائو کیلئے سرکار کو بھی مورود الزام ٹھراتے ہوئے کہا کہ کافی نوجوان بے روزگاری کی وجہ سے بھی منشیات کا استعمال کرتے ہیں۔ احتجاجی مظاہرین نے پولیس کی طرف سے نوجوانوں کو منشیات سے دور رکھنے کی کاوشوں کو سراہا،تاہم انہیں مزید کرنے کا بھی مشورہ دیا۔ احتجاجی مظاہرین نے کہا’’ ہم ریاست میں منشیات کے پھیلائو کا خاتمہ چاہتے ہیں،جبکہ منشیات کی لت میں مبتلا نوجوانون کو انسداد منشیات مراکز میں علاج کرکے اس زہر سے پاک رکھنے کیلئے انہیں مائل کیا جائے۔ احتجاجی نوجوانوں نے ریاستی گورنر ایس پی ملک سے بھی گزارش کی کہ وہ منشیات کی سمگلنگ اوراس کو فروغ دینے میں ملوث افراد کے خلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں لانے کی ہدایات جاری کریں۔