تازہ ترین

کٹھوعہ معاملہ

ملوثین کی سزا بڑھانے کیلئے درخواست دائر، نوٹس جاری

19 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
کٹھوعہ //کٹھوعہ عصمت دری و قتل کیس میں مجرموں کو عدالت کی طرف سے مقرر کی گئی سزا میں اضافے کو لے کر پنجاب کی عدالت عالیہ نے جموںو کشمیر سرکار اور 6مجرمین کو نوٹس جاری کی ہیں۔ یہ نوٹسیںمجرموں کی سزا بڑھانے کے حق میں دائر ایک عرضی کی بعد جاری کی گئیں۔ خیال رہے گزشتہ ماہ پٹھانکوٹ کی عدالت نے واقعے میں مجرم قرار دئے گئے سانجی رام، دیپک کھجوریہ اور پرویش کمار کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ عدالت نے انہیں رنبیر پینل کورڈ کے کئی دفعات جن میں مجرمانہ منصوبہ بندی، قتل، اغوا، اجتماعی عصمت دری، ثبوتوں کو ضائع کرنا، متاثرہ بچی کو نشیلی ادویات دینے کے نتیجے میں مجرم قرار دیتے ہوئے سزا سنائی تھی۔اس موقعے پر پٹھانکوٹ کی نچلی عدالت نے سانجی رام کے بیٹے وشال جنگوترا کو بری کرتے ہوئے دیگر تین افراد جن میں انند دتا، تلک راج اور سریندر ورما کو پانچ پانچ سال کی سزا سنائی تھی۔پنجاب اور ہریانہ کی عدالت عالیہ میںمقتول بچی کے والد نے دائر عرضی میں مجرموں کو نچلی عدالت کی جانب سے دی جاچکی سزا کو پھانسی اور عمر قید کی سزا میں تبدیل کرنے کی اپیل کرنے کے علاوہ عدالت کی جانب سے بری قرار دئے گئے ایک ملزم سے متعلق عدالتی فیصلے کو بھی چیلنج کیا ہے۔  درخواست گذار نے عرضی میں کہا ہے کہ واقعے کے منصوبہ ساز سانجی رام، اسپیشل پولیس افسر دیپک کھجوریہ اور پرویش کمار کی عمر قید کو پھانسی کی سزا میں تبدیل کیا جانا چاہیے۔درخواست گذار کا مزید کہنا ہے کہ اسپیشل پولیس افسر سریندر ورما، ہیڈ کانسٹیبل تلک راج اور سب انسپکٹر آنند دتا کی پانچ سالہ سزا کو عمر قید میں تبدیل کیا جانا چاہیے۔کیس کی اگلی سماعت 7اگست کو مقرر کی گئی ہے۔