تازہ ترین

گنڈ براٹھ سوپور میں تصادم، جنگجو جاں بحق

بارہمولہ میں پُر تشدد مظاہرے،4گاڑیوں کو نقصان ، 4زخمی، سوپور میں تعلیمی ادارے بند، انٹر نیٹ سروس معطل

18 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

غلام محمد+فیاض بخاری
 سوپور +بارہمولہ //شمالی کشمیر کے گنڈ براتھ سوپور گائوں میں خونریز معرکہ آرائی میں بارہمولہ کا ایک جنگجو جاں بحق ہوا۔واقعہ کے ساتھ ہی سوپور میں تعلیمی ادارے بند کئے گئے اور انٹر نیٹ سروس بھی معطل رکھی گئی۔

تصادم آرائی

گنڈ براٹھ سوپور گائوں کا بدھ علی الصبح 22آر آر، جموں کشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ اور سی آر پی ایف کی مشترکہ جمعیت نے محاصرہ عمل میں لاکر گھر گھر تلاشی کا سلسلہ شروع کیا۔ پولیس کے مطابق علاقے میں تلاشی کارروائی کا سلسلہ ابھی جاری ہی تھا کہ اسی اثنا میں نزدیکی مکان میں پناہ لئے ہوئے جنگجوئوں نے فورسز پر شدید فائرنگ کی اور یہاں سے فرار ہونے کی کوشش کی۔ایس ایس پی سوپور جاوید اقبال نے بتایا کہ مصدقہ اطلا ع ملنے کے بعد محاصرہ عمل میں لایا گیا ، جس دوران فورسز اور جنگجوئوں کے مابین گولیوں کا مختصر تبادلہ ہوا ۔ جس کے بعدمقام جھڑپ سے فورسز نے ایک جنگجو کی لاش ہتھیاروں سمیت برآمد کرلی ۔مہلوک جنگجو کی شناخت 20سالہ اولڈ ٹائون بارہمولہ کے رہنے والے عدنان چنا ولد علی محمدکے طور پرکی گئی۔بتایا جاتا ہے کہ وہ  2019 کے اوائل میں جنگجوئوں کی صف میں شامل ہوا تھا۔ 

ہڑتال

سوپور میںجھڑپ شروع ہونے کے ساتھ ہی انتظامیہ نے افواہ بازی پر روک لگانے کی خاطر موبائل انٹرنیٹ سروس معطل رکھنے کاحکم نامہ صادر کیا۔ انتظامیہ نے ممکنہ احتجاجی مظاہروں پر قابو پانے کی خاطر قصبہ سوپور کے تحت آنے والے تعلیمی اداروں میں بھی درس و تدریس کا عمل بند رکھنے کے احکامات صادر کئے۔ اس دوران جھڑپ کے دوران علاقے میں نوجوانوں کی مختلف ٹولیوں نے سڑکوں پر نکلنے کی کوشش کرتے ہوئے اسلام و آزادی کے حق میں نعرے لگائے۔ مظاہرین نے اس موقعے پر فورسز کارروائی میں رخنہ ڈالنے کیلئے جائے جھڑپ کی جانب پیش قدمی کرنے کی کوشش کی جسے یہاں موجود اہلکاروں نے ناکام بنایا۔ادھرگنڈ براٹھ سوپور میں جنگجو کی ہلاکت کی خبر جونہی ملحقہ علاقوں میں پھیل گئی تو یہاںآناً فاناً دوکانات اور تجارتی ادارے بند ہونے کے ساتھ ساتھ ٹریفک کی نقل و حمل بھی متاثر ہوئی۔اس دوران بارہمولہ میں فوری طور پر ہڑتال ہوئی۔ سیمنٹ پُل اور آزاد گنج پل پر مظاہرین جمع ہوئے جنہوں نے فورسز پر پتھرائو شروع کیا۔ جس کے بعد یہاں پُرتشدد جھڑپیں شروع ہوئیں۔ مظاہرین نے سی آر پی ایف کی 4گاڑیوں کو شدید نقصان پہنچایا جبکہ جوابی کارروائی میں4مظاہرین کو چوٹیں آئیں۔ 

 نمازجنازہ 

عدنان کی لاش سہ پہر کو اسکے لواحقین کے حوالے کی گئی جس کے دوران یہاں ہزاروں لوگ جمع ہوئے تھے اور نعرے بازی کرنے لگے۔قریب 5بجے اسکی نماز جنازہ ادا کی گئی اور بعد میں انہیں عید گاہ قدیم میں قائم مزار شہداء میں سپرد خاک کیا گیا۔انکی نماز جنازہ میں ہزاروں لوگوں نے شرکت کی اور اولڈ ٹائون بارہمولہ میں کافی عرصہ بعد اتنے لوگ ایک ساتھ جمع ہوئے تھے۔

پولیس بیان

پولیس ریکارڈ کے مطابق مذکورہ شدت پسند بارہ مولہ اور سوپور علاقوں میں سرگرم تھا اور وہ سیکورٹی فورسز پر حملوں کی منصوبہ بندی کرنے اور اُنہیں پایہ تکمیل تک پہنچانے میں براہ راست ملوث تھا جبکہ اُس کے خلاف متعدد ایف آئی آر بھی درج کئے جاچکے تھے۔مارچ 2019میں مذکورہ شدت پسند نے بارہ مولہ میں عام شہری ارجمند مجید بٹ کا قتل کیا اس سلسلے میں ایف آئی آر زیر نمبر 41/2019کے تحت مقدمہ درج ہے ۔مئی 2019میں مہلوک نے عام شہری فیروز احمد گوجری ساکن زلورہ سوپور پر فائرنگ کی پولیس نے اس ضمن میں ایف آئی آر زیر نمبر 33/2019کے تحت کیس درج کیا ہے۔ مذکورہ شدت پسند مقامی نوجوانوں کو دہشت گرد تنظیم میں شمولیت اختیار کرنے پر آمادہ کیا کرتا تھا۔