تازہ ترین

یاتریوں کیلئے لنگر چلانے والوں کا احتجاج

یاتراگاڑیوںکو نہ رکنے دینے کا الزام، حکام کی مداخلت سے معاملہ حل

13 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

محمد تسکین
بانہال// بانہال کے شیطان نالہ علاقے میں ملک کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی طرف سے سالانہ امرناتھ یاتریوں کیلئے قائم کئے گئے کھانے پینے کے مفت لنگروں پر سیکورٹی فورسز انتظامیہ کی طرف سے امرناتھ یاتریوں کی گاڑیوں کو رکنے نہ دینے کے خلاف لنگر والوں نے فورسز کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے اور لنگروں کو بند کرکے ہڑتال پر بیٹھ گئے تاہم بعد میں پولیس اور انتظامیہ کے اعلیٰ افسران موقع پر پہنچے گئے اور لنگر والوں کے بعض مطالبات کو فوری طور حل کرنے کی یقین دہانی کے بعدہڑتال ختم کردی گئی ۔ تاہم سالانہ شری  امرناتھ یاترا یاترا قافلہ بارہویں روز سے خوش اسلوبی کے ساتھ آگے بڑھتا رہا۔ بانہال سے قریب دس کلومیٹر دور اور جواہر ٹنل سے چار کلومیٹر پہلے شیطان نالہ کے علاقے میں ہر سال کی طرح اس سال بھی امرناتھ یاتریوں کیلئے مختلف ہندو مذہبی انجمنوں ، رضاکاروں  نے کھانے پینے سے لیکر سونے تک کی تمام تر قسم کی سہولیات سے آراستہ مفت لنگر قائم کر رکھے ہیں اور اس کیلئے صوبائی انتظامیہ نے بھی تمام تر مدد اور سہولیات میسر رکھی ہیں لیکن اس سال سالانہ امرناتھ یاترا قدرے سخت سیکورٹی بندوبست کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے اورامرناتھ گپھا کی طرف آنے جانے والے یاتریوں کو سیکورٹی اقدامات کے پیش نظر ان لنگروں پر رکنے نہیں دیا جارہاجس کی وجہ سے لنگر والوں کی طرف سے روزانہ تیار کی جانے والی لاکھوں روپے مالیت کی کھانے پینے کی چیزیں ،مٹھائیاں اور چائے کافی وغیرہ ضائع ہورہی ہیں۔لنگروں سے وابستہ لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ روزانہ امرناتھ یاتریوں کیلئے طرح طرح کے پکوان ، مٹھائیاں اور کھانے پینے کی پکائی اور پیک اشیاء تیار رکھتے ہیں لیکن امرناتھ یاتریوں خاص کر رجسٹرڈ یاتریوں کو یہاں رکنے نہیں دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے لاکھوں روپے کا سامان ضائع ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ طریقہ کار بالکل غلط اور اس کی طرف توجہ دینا ضروری ہے۔ انہوں نے صحت وصفائی کے حوالے سے بھی کئی معاملے اٹھائے۔ اس دھرنے کی خبر ملتے ہی ایس ڈی ایم بانہال ضمیر احمد ، تحصیلدار بانہال جاوید احمد ، ایڈیشنل ایس پی رام بن سنجے ، سب ڈویژنل پولیس افسر بانہال سجاد سرور ، ایس ایچ او بانہال سید عابد بخاری اور دیگر ایجنسیوں سے وابستہ اہلکار موقعہ پر پہنچ گئے۔ انہوں نے لنگر انداز مفت لنگر والوں کے تمام مطالبات سننے کے بعد اعلیٰ حکام کی نوٹس میں سارا معاملہ لایا ۔ اس کے بعد ایس ایس پی رام بن انیتا شرما کے حکم پر امرناتھ یاترا سے واپس جموں کی طرف جانے والی امرناتھ یاترا کی گاڑیوں کو شیطان نالہ کے مقام رکنے کی اجازت دی گئی اور سب ضلع انتظامیہ نے صفائی ستھرائی کے معاملے موقعہ پی ہی حل کرانے کے حکم دیئے ۔ اس کے بعد احتجاجی ہڑتال پر بیٹھے لنگر والوں نے بند لنگر دوبارہ کھول دیئے اور معمول کا کام شروع کیا۔ اس دوران وادی سے جموں کی طرف یاترا گاڑیوں کو شیطان نالہ کے لنگروں پر رکنے کی اجازت دی گئی تاہم جموں سے وادی کشمیر کی طرف امرناتھ یاتریوں کو حفاظتی اقدامات کی وجہ سے کسی بھی جگہ رکنے کی اجازت نہیں ہے اور انہیں فورسز اور پولیس کے قافلوں میں لیا اور لایا جارہا ہے۔یاترا کی وجہ سے شاہراہ پر ٹریفک کی نقل وحرکت اور ریل پر یاترا چلنے کے اوقات میں بندش ہے اور اس سے ہزاروں مسافروں ، ناشری اور جواہر ٹنل کے مقامی لوگوں خاص کر پھل اور مال بردار گاڑیوں کو سخت مشکلات اور نقصانات کا سامنا ہے اور معمول کی زندگی اس سرکاری حکم سے اثر انداز ہے۔