تازہ ترین

سنگیوٹ میں پینے کے صاف پانی کی شدیدقلت ،ملازمین پر 3ٹرکوں کے ذریعہ پاپئیں غائب کرنے کا الزام

13 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

جاوید اقبال
مینڈھر//بلاک بالا کوٹ کی سنگیوٹ پنچایت میں عوام کو پینے کے صاف پانی کی قلت کا سامنا ہے لیکن متعلقہ محکمہ کی طرف سے عوام کو پانی فراہم کرنے کیلئے کوئی موثر اقدامات نہیں کئے گئے ہیں ۔مقامی لوگوں نے متعلقہ محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ انتظامیہ کی جانب سے سنگیوٹ کی عوام کو پانی فراہم کرنے کیلئے ایک اسکیم تیارکی گئی تھی جس پر ایک کروڑ سے زائد رقم بھی خرچ کی گئی ہے لیکن محکمہ کی طرف سے لوگوں کو مذکورہ اسکیم کا فائدہ نہیں پہنچایا جارہاہے ۔انہوں نے کہا کہ مذکورہ اسکیم کو پوری طرح سے مکمل کئے ہوئے ایک سال کا عرصہ گزر چکا ہے لیکن متعلقہ محکمہ کی جانب سے نا معلوم وجوہات کی بنیاد پر ابھی تک پانی جمع کرنے اور سپلائی کرنے کا عمل شروع نہیں کیا گیا ۔مقامی سرپنچ مختیار خان نے  محکمہ صحت عامہ اور ضلع انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سنگیوٹ علاقہ کی عوام کو نظر انداز کیا جارہاہے ۔ انہوں نے متعلقہ جو نیئر انجینئر اور علا قہ میں تعینات ملازمین پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ انہوں نے مبینہ طورپر حکومت کی جانب سے بھیجی گئی 3ٹرک پاپئیںغائب کردی ہیں لیکن عوام کو پانی سپلائی کرنے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔انہوں نے ریاستی انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ پاپئیں غائب ہونے کے عمل کی تحقیقات کی جائے تاکہ اس میں ملوث ملازمین کیخلاف کارروائی عمل میں لائی جاسکے ۔ انہوں نے گورنرر انتظامیہ اور ڈی سی پونچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ جلداز جلد سنگیوٹ علاقہ کے اندر ایک ویجی لینس ٹیم بھیجی جائے جوکہ علاقہ میں پہنچ کر فوری طور حالات کا جائزہ لینے کے بعد متعلقہ محکمہ کے ملازمین کے خلاف کاروائی عمل میں لائیں۔اس سلسلہ میںمحکمہ کے اسسٹنٹ ایگز یکٹو انجینئر مینڈھر نے بتایا کہ مذکورہ اسکیم کافی عرصہ سے مکمل ہے البتہ پانی کی عدم سپلائی اور پاپئیں کے معاملہ کی تحقیقات کی جائے گی ۔