مزید خبرں

12 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

کانگریس کا بی جے پی پر ’’اپوزیشن مکت ‘‘ بھارت کی چاہت کا الزام 

جموں //کانگریس نے بی جے پی پر ’’اپوزیشن مُکت‘‘ بھارت کی خواہش کا الزم لگایا ہے،جو کہ جمہوریت کے بنیادی ضروریات کے منافی ہے کیونکہ اپوزیشن کی آواز کے بغیر لوگ ہی آخر کار گھاٹے میں آتے ہیں۔ان باتوں کا اظہا رپارٹی کے ریاستی ترجمان رویندر شرما نے ایک پریس بیان میں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے اگلے پانچ سال کیلئے بھاری منڈیٹ حاصل کرنے کے بعد ملک کے متعدد حصوں میں اپوزیشن کو ختم کرنے کا کام شروع کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی یہ فلاسفی جمہوری ڈھانچہ کے بنیادی اصولوں کے خلاف ہے،جس سے آخر کار لوگوں کو ہی پریشانیاں ہوتی ہیں۔انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی سنگل پارٹی جمہوریت چاہتی ہے اور اسکے لئے وہ ہر کوئی حربہ استعمال کرکے اپوزیشن پارٹیوں کو کمزور بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ تجربہ جمہوریت کیلئے خطر ناک ہے اور لوگوں کے پاس اپنے مفاد کے مدعوں کیلئئے چلینج کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ پانچ برسوں کے دوران بی جے پی نے متعدد ریاستی حکومتوں کو غیر مستحکم بنا دیا اور دل بدلی کرکے اور استعفیٰ دلا کر اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کیا، یہاں تک کہ عدالت اعظمیٰ کے فیصلہ بھی انکو مطعلق النان فیصلوں کو واپس لینے میں بھی کام نہیں آیا۔تاہم ، بھارت کی عوام بی جے پی کی جمہوریت مخالف پالسیوں کو جان چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ کانگریس بی جے پی کی ان کاوشوں کی مذمت کرے گی اور اسکی پالسیوں کے خلاف رائے عامہ منظم کرے گی ۔انہوں نے ان کوششوں کو جمہوریت پر ایک دھبہ قرار دیا۔
 
 

 اساتذہ کیلئے واضح ٹرانسفر پالیسی کا مطالبہ  

جموں //آل جموں و کشمیر لداخ ٹیچرس فیڈریشن کے ریاستی صد ردیو راج ٹھاکور نے ریاستی سرکار پر ریاست جموں و کشمیر میں اساتذہ کے ٹرانسفر  اور ڈی پی ایس کے نظر ثانی پر ایک واضع پالیسی لاگو کرنے کا مطالبہ کیا۔جمعرات کے روز اساتذہ سے خطاب کرتے ہوئیٹھاکور نے کہا کہ سرکاری سکولوں کی ٹرانسفر کیلئے واضع پالیسی نہ ہونے کی وجہ سے سرکاری سکولوں کے اساتذہ کو غیر ضروری پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ملازمین میں اساتذہ ہی سب سے بڑا گروپ ہے۔تاہم ، وقت کی سرکاریں ایک واضع ٹرانسفر پالیسی لاگو کرنے میں ناکام رہی ہے۔انہوں نے بہتر تعلیمی معیار کیلئے بین زونل سطحی ٹرانسفر پر زور دیا۔انہوں نے کہا کہ سرکار اساتذہ کیلئے بین زونل سطحی ٹرانسفر پرکوئی دھیان نہیں دے رہی ہے۔انہوں نے سرکار سے اساتذہ، اہلکاروں اور ماہرین کے ساتھ صلاح و مشورہ رکرکے اس سلسلہ میں پہل کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ کٹھوعہ، پونچھ، جموں ، راجوری اور سانبہ کے اساتذہ مو اقف مقامات پر تبدیلی کرنے کے لئے سرکار کے غیر سنجیدہ رویہ پر برہمی کا اظہار کیا۔انہوں نے سرکار سے اسااتذہ کے عرصہ دراز میں پڑے مطالبات حل کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ واضع ٹرانسفر پالیسی نہ ہونے کی وجہ سے اساتذہ کو کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ متعدد  جنرل لائن اساتذہ اور ماسٹرس ریاست کے دور افتادہ علاقوں میں کافی وقت سے تعینات ہیں لیکن بار ہا استدعا کرنے کے باوجود سرکار نے اس سلسلہ میں کچھ نہیں کیا ہے۔انہوں نے سی ای او پونچھ اور کٹھوعہ سے ٹیچنگ کیمونٹی کے شکایا ت بغیر مزید تاخیر کے حل کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے ایم ڈی ایم پنچایتوں کو سونپنے کی بھی سراہنا کی،جس سے اساتذہ کو تھوڑی سی راحت ملی ہے۔
 
 

سدھ مہادیو میں نیشنل کانفرنس کااجلاس

 مادر مہربان کو بھرپور خراج عقیدت کے بعد متعدد قراردادیں پاس

ادھم پور// سدھ مہادیوں کے مقام پر حلقہ کمیٹی نیشنل کانفرنس کااجلاس زیر صدارت حاجی شمیر حسین منعقد ہوا جس کا اہتمام ترلوک چند بلاک صدر کسان سیل نے کیا اور صوبائی سکریٹری لال چند مسافر نے شمولیت کی اور میٹنگ کو خطاب کیا ۔ سب سے پہلے مادر مہربان بیگم اکبر جہاں کو بھرپور الفاظ اورپھول مالاؤں سے شردھانجلی دی گئی ان کے تمام عظیم کارناموں کو مقررین نے بالتفصیل بیان کیا ۔ بعد میں عوامی مسائل اور مشکلات کے لئے متعدد قرار دادیں پاس کی گئیں اور حکومت سے ان کے حل کرنے پر زور دیا گیا جو حسب ذیل ہیں۔ کارکنان نے زور دار الفاظ میں یک آواز مطالبہ کیا کہ مرکز کی طرف سے کسانوں کو مل رہی 6000روپے کے سالانہ امداد کی پہلی قسط بھی تا حال سدھ مہادیو کے کسانوں کو نہیں مل پائی ہے جبکہ بہت سی جگہوں پر دو دو قسطیں بھی مل چکی ہیں۔ علاقہ سدھ مہادیو  کے اولڈایز اور بیواؤں کو پچھلے چھ ماہ سے ملنے والی پنشن بند ہوگی ہے ، بزرگ عورتیں ، بیوائیں، معذور مہنگائی کے زمانے میں سخت پریشان ہیں۔ مطالبہ کیا گیا کہ ان لوگوں کی پنشن جلد از جلد ریلز کی جائیں۔گوری کنڈ کے موہڑہ بگاں میں ۱۳۔۱۴ گھروں کاچلتا پانی بوجہ بدلنے پائپ لائیں عرصہ سے بند ہوگیا ہے لوگ پانی کے لئے ترس رہے ہیںدوبارہ پائپ لائن بچھائی جائے اورپانی کی سپلائی بحال کی جائے ۔ ہائر سکنڈری سکول سدھ مہادیو میں عرصہ سے نہ پرنسپل ہے اورنہ ہی لیکرار سٹاف ہے نصف سال گذر جانے سے بچوں کی تعلیم متاثر ہورہی ہے ۔ فورا سٹاف مہیا کروایا جائے ۔ جو غریب کسان خالصہ سرکار رقبہ پر عرصہ سے قابض ہیں کاستکار ہیں ان کو مرکز کی طرف سے دی جارہی امداد سے محروم رکھا گیا ہے وہ بھی ویسے ہی مستحق کسان ہیں جیسے دوسرے کے  لہٰذا ان کے حق میں بھی امداد اجراء کی جائے ۔ دوسروں کے علاوہ ودیادیوی۔ شانیت دیوی ، درشناں دیوی، اننت رام، شنکرداس ، بھگت رام ۔ حکم چند  ، ترلوک چند، محمد یاسین، چونی لعل وغیرہ حاضر تھے ۔
 
 

جموں کشمیر رہبر تعلیم ٹیچرز فورم کا گونر انتظامیہ کے تئیں اظہار تشکر

جموں// جموں کشمیر رہبر تعلیم ٹیچرز فورم نے سیک (SAC)میٹنگ میں 7643 انڈرگریجویٹ رہبر تعلیم ٹیچرز کوپرنسپل سیکریٹری فائنانس کی سربراہی میں تشکیل کردہ کمیٹی کی سفارشات کو منظوری دے کر انہیں گریڈ سوم میں تبدیل کرنے پر گونر انتطامیہ کا شکریہ ادا کیا ہے – یہاں جاری ایک پریس بیان کے مطابق فورم کے ریاستی چیرمین فاروق احمد تانترے نے کہا ہے کہ گونر انتظامیہ کے اس فیصلے نے ریاست کے ہزاروں اساتذہ اور ان کے اہل خانہ کی پریشانیوں کو دور کر دیا ہے -انہوں نے کہا ہے کہ فورم اس کے لئے ریاست کے گونر ستیہ پال ملک، مشیر خورشید احمد گنائی، چیف سیکرٹری اور سیکرٹری کا شکریہ ادا کرتی ہے- انہوں نے کہا ہے کہ یہ گونر انتظامیہ کا ایک تاریخی فیصلہ ہے جسے جس کی رہبر تعلیم ٹیچرز فورم سراہنا کرتی ہے اور امید کرتی ہے کہ گونر انتظامیہ اساتذہ کو درپیش دیگر مشکلات کو بھی ترجحی بنیادوں پر حل کریگی-
 
 
   

ایم وی انٹرنیشنل سکول نے اساتذہ کیلئے پانچ روزہ سمر کیمپ کا اہتمام کیا

جموں //ایم وی انٹرنیشنل سکول نے اساتذہ کیلئے پانچ روزہ سمر کیمپ کا اہتمام کیا۔ ایک بیان کے مطابق سمر کیمپ کے دوران اساتذہ کیلئے تربیت منعقد کی گئی۔ اس سلسلہ میں منعقدہ ایک تقریب پر کہا گیا کہ اساتذہ کی پڑھائی ایک جاری عمل ہے ،جس سے اساتذہ کو تربیتی ہنر ،نئی جانکاری میں اضافہ، نئی مہارت حاصل ہوگی ،جس سے طلاب کی پڑھائی میں سدھار لانے میں مدد ملے گی۔ان نشستوں کے دوران طلاب ، اساتذہ اور ریسورس پرسن میں تبادلہ خیال ہوا۔ اساتذہ کو سکولوں کے منتظمین کے متعدد نئے طریقے متعارف کئے گئے۔کیمپ کے پہلے رز انٹر نیشنل ٹرینر کنال سکری نے ہمارے ورک پلیس میں ’Conflict Management‘  اور ’Emotional Intelligence‘ کے فروغ پر مباحثہ ہوا،۔کیمپ کے دوسرے روز پرنسپل سمترا دیوی آریہ سینئر سیکنڈری سکول دینا نگر اوپما مہاجن نے پڑھائی کی مہارت میں بہتری کیلئے موثر کیمونکیشن اور مثبت جذباتی ماحول بنانے پر زور دیا۔ماہر ریاضی سمن جیت کور نے پرائمری سکول کے اساتذہ کو خطاب کیا۔ انہوں نے اساتذہ کے ساتھ اذنی ذاتی مہارت بانٹی اور مثبت نظریہ سے انتثار کو دور کرنے پر زور دیا۔کیمپ کے چوتھے روز تصدیق شدہ کئیوسٹ ٹرینر ارا سہگل نے اساتذہ کے ساتھ  'Multiple Intelligence' پر ایک اعلیٰ تبادلہ خیال کی نشست منعقد کی ۔سیشن کا اہتمام بین ثقافتی مہارت حاصل کرنے کیلئے کیا گیا تھا ،جس دوران حسا س موضوعات پر مباحثہ کیا گیا۔
 
 
  

ڈپٹی مئیر کا وارڈ نمبر 01 میں محکمہ صحت عامہ کی کاموں کا معائینہ کیا

جموں//جے ایم سی کی ڈپٹی مئیر ایڈوکیٹ پورنما شرما نے جمعرات کے روز وارڈ نمبر 01 میںدھونتلی ڈھکی میں بلرام جی مندر کے پاس منعقد ہونے والے  18 ویںبھنڈارہ کا جائزہ لینے کے لئے متعلقہ علاقہ کا معاینہ کیا ۔چیف ٹرانسپورٹ افسر طلعت محمود خان ، سینٹری سپپروائزروں گلشن ، ارون نائیر ،کاکا بھی معائینہ کے دوران انکے ہمراہ تھے۔معاینہ کے دوران پایا گیا کہ صفا ئی ستھرائی کی تیاریاں پہلے ہی شروع کی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ آنے والے بھنڈارہ کیلئے نالے کی مناسب صفائی ضروری ہے،جس پر انہوں نے چیف ٹرانسپورٹ افسر کو ہدایت دی کہ وہ اس نالہ کو صاف کرنے کیلئے نالہ گینگ کو روانہ کرے۔انہوں نے اسٹریٹ لائٹوں کا بھی معائینہ کیا اور پایا گیا کہ تمام لائٹیں اچھی طرح سے کام کر رہی ہیںجبکہ کئی لائٹیں بے کا ر ہیں۔انہوں نے بھنڈارہ کے منتظمین کو یقین دلایا کہ بھنڈارہ کے دوران صفائی وستھرائی اور لائٹوں کی کوئی پریشانی نہیںہوگی۔انہوں نے ہیلتھ افسر کو بھنڈارہ کی جگہ پر کوڑے دان نصب کرنے کی ہدایت دی اور مقامی لوگوں سے کوڑا کرکٹ نالیوں،گلیوں اور نالوں میں پھینکنے کے بجائے کوڈے دان میں اکٹھا کرنے کے لئے کہا ،تاکہ شہر کو صاف و ستھرا رکھا جا سکے۔ڈپٹی مئیر نے ایگزیکٹو انجینئر (ای) ، ایگزیکٹو انجینئر (سی) ،اے ایا ای (سی) ،اے ای ای (ای) اور انفارمیٹکس افسر جے ایم سی کے ساتھ بھی اجلاس منعقد کیا ،جس میں متعدد ترقیاتی کاموںپر مباحثہ کیا۔
 
 

ست شرما سے متعدد وفود ملاقی 

جموں //جموں ویسٹ کے سابقہ ممبر اسمبلی و بی جے پی کے سینئر رہنما ست شرما سے جمعرات کے روز متعدد وفود ملاقی ہوئے اور انہیں اپنے مشکلات اور مطالبات پیش کئے۔اس موقعہ پر ست شرما نے حلقہ میں جاری ترقیاتی کاموں کا جائزہ بھی لیا۔ایک پریس بیان کے مطابق حلقہ کے مختلف علاقوں سے متعدد وفود نے انکے دفتر میں آکر اپنی شکایات پیش کیں اور انکا زالہ طلب کیا۔وارڈ نمبر 24 اور 29  سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے ان سے اپنے مسائل پیش کئے جن میں کم وولٹئیج اور لگاتار بجلی کٹوتی بھی شامل ہیں۔انہوں نے ست شرما سے اس مسلہ میں  فوری طورمداخلت کرکے انکا ازالہ کرنے کا مطالبہ کیا۔مکینوں نے گرین اینکلیو میں اضافی بجلی ٹرانسفارمر نصب کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔دیگ روارڈوں کے لوگوں نے بھی ان سے ملاقات کی اور انہیں اپنے اپنے مسائل سے واقف کیا۔اس موقعہ پر اپنے خطاب میں بی جے پی لیڈر نے کہا کہ وفود کے ساتھ ایک تعمیری مباحثہ کیا گیا اور متعدد نئی باتیں زیر بحث لائی گئی۔ جہاں پروفود نے علاقہ میں کافی اہمیت کی حامل کاموں کو پورا کرنے کا مطالبہ کیا وہیں انہوں نے ان کاموں کو مقرر ہ مدت کے دوران تکمیل دینے کی مانگ کی۔شرما نے پی ڈی ڈی کے متعلقہ ایگزیکٹو انجینئر کو طلب کرکے انہیں لوگوں کی شکایت سونپی،جنھوں نے یقین دلایا کہ علاقہ میں جلد ہی ایک نیا بجلی ٹرانسفارمر نصب کیا جائے گا۔انہوں نے متعلقہ اہلکاروں سے فوری طر سے اسکے لئے تخمینہ تیار کرنے کی ہدایت دی اور حلقہ کے وارڈ نمبر 26 میں دیگر کاموں کو شروع کرنے کیلئے کہا، تاکہ لوگوں کو سہولیات ہوں ۔  شرما نے محکمہ صحت عامہ کے متعلقہ انجینئروں سے حلقہ کے وارڈ نمبر 26 میںبغیر کسی خلل کے پانی کی سپلائی مہیا کرنے کو کہا ۔