روسی لوک کتھائوں کے کشمیر ی ترجمہ ’’ پو￿ز تہ￿ اپُز‘‘ کی رسم اجرائی

ادیبوں اورقلمکاروں کی سرینگر میں آرٹ گیلری کے قیام کی تجویز

10 جولائی 2019 (25 : 11 PM)   
(      )

نیو ڈسک
سر ی نگر//جموںوکشمیر کلچرل کونسل نے محکمہ اطلاعات کے اشتراک سے کل یہاں نظامت اطلاعات کے آڈیٹوریم میں روسی تحریروں کے کشمیری ترجمے پر مشتمل ایک کتاب کی رسم رونمائی انجام دی۔ترجمہ نگار مہاراج کرشن ماوا مسرور ؔؔ کی تصنیف ’’ پو￿ز تہ￿ اپُز‘‘ روسی لوک اور جدید کہانیوں کے ترجمے پر مشتمل ہے ۔تقریب کے مہمان خصوصی ناظم اطلاعات گلزار احمد شبنم نے ماواکو اُن کی کتاب کی رسم اجرائی پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ٹالسٹائی کی تحریروں کا کشمیری ترجمہ ماوا کے لئے عزت افزائی کا باعث ہے ۔اُنہوں نے مزید کہا کہ اپنی زبان اور تہذیب کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے جذبے کا ہونا لازمی ہے اور اس بات کو نئی نسل میں منتقل کیا جانا چاہیئے۔گلزار احمد شبنم نے کہا کہ کسی اور کے ادب کا کشمیری میں ترجمہ ادب کے لئے ایک قابل قدر اضافہ ہے۔اُنہوں نے کہا کہ ترجمہ نگاری سے مختلف لسانی قوموں کے مابین خلیج کو کم کیا جاسکتا ہے۔ناظم اطلاعات نے کہاکہ محکمہ مختلف زبانوں میں اپنی اشاعتوں کو دوبارہ شروع کررہا ہے ۔تقریب میں قلمکاروں ، شعرأ ،براڈ کاسٹروں اور دانشوروں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ اس موقعہ پر جے کے کلچرل کونسل صدر جی آر حسرت گڈا ، جی ایم عاجر ، ستیش ومل ، پیارے ہتاش ،آفتاب احمد ، بشیر عارف ، ذی شان فاضل اور نثار نسیم بھی موجود تھے۔مقررین نے سری نگر میں آرٹ گیلری کے قیام کی بھی تجویز دی۔ماوا ایک معروف قلمکار ہیں جنہوں نے اب تک تین تصانیف بشمول’’ بخشن ہار تہ￿ س￿رگ￿ک￿ وتہ￿ پ￿د‘‘ ،‘‘جوہا￿ر￿ کاینات‘‘ اور’’ دیسی دوا تہ￿ دیسی یلاج ‘‘شائع کی ہیں۔
 

تازہ ترین